وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

قندوز، ہسپتال پر امریکی حملے کی تصاویر

پیر 05 اکتوبر 2015 قندوز، ہسپتال پر امریکی حملے کی تصاویر

معالجین کی بین الاقوامی انجمن ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈرز کا کہنا ہے کہ قندوز میں امریکا کی بمباری سے ان کے کلینک میں عملے کے 9 اراکین سمیت 16 افراد مارے گئے ہیں۔ اس کلینک میں 100 مریضوں کا علاج کیا جا رہا تھا جب آدھی رات کو 2 بجے حملہ کیا گیا۔ آزاد ذرائع ابھی تو تصدیق نہیں کررہے کہ وہاں طالبان موجود تھے یا نہیں لیکن 30 افراد اب تک لاپتہ ضرور ہیں۔ ہلاک شدگان میں 3 بچے بھی شامل ہیں۔

واقعے کی چند تازہ تصاویر ذیل میں دیکھی جاسکتی ہیں:

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا ہسپتال شعلوں کی زد میں۔ امریکا کے فضائی حملے میں عملے کے 9 اراکین سمیت 16 افراد کی ہلاکت کے علاوہ 30 افراد اب تک لاپتہ بھی ہیں

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا ہسپتال شعلوں کی زد میں۔ امریکا کے فضائی حملے میں عملے کے 9 اراکین سمیت 16 افراد کی ہلاکت کے علاوہ 30 افراد اب تک لاپتہ بھی ہیں

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کے کلینک پر حملے کے بعد عملے کے چند زخمی اراکین زمین پر بیٹھے ہوئے ہیں۔ واقعے میں عملے کے 9 اراکین جاں بحق ہوئے

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کے کلینک پر حملے کے بعد عملے کے چند زخمی اراکین زمین پر بیٹھے ہوئے ہیں۔ واقعے میں عملے کے 9 اراکین جاں بحق ہوئے

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا کلینک امریکی فضائی حملے کے بعد شعلوں کی زد میں

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا کلینک امریکی فضائی حملے کے بعد شعلوں کی زد میں

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا کلینک امریکی فضائی حملے کے بعد شعلوں کی زد میں

قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا کلینک امریکی فضائی حملے کے بعد شعلوں کی زد میں

شمالی افغانستان کے شہر قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کے کلینک پر امریکی فضائی حملے سے زخمی ہونے والا ایک لڑکا مقامی ہسپتال میں زیر علاج

شمالی افغانستان کے شہر قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کے کلینک پر امریکی فضائی حملے سے زخمی ہونے والا ایک لڑکا مقامی ہسپتال میں زیر علاج

افغان سیکورٹی اہلکار ایک زخمی کو ہسپتال منتقل کررہے ہیں، جس کے بارے میں ان کا کہنا ہے کہ وہ طالبان کے حملے میں زخمی ہوا

افغان سیکورٹی اہلکار ایک زخمی کو ہسپتال منتقل کررہے ہیں، جس کے بارے میں ان کا کہنا ہے کہ وہ طالبان کے حملے میں زخمی ہوا

افغان شہر قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا تباہ حال کلینک جو رات گئے امریکی فضائیہ کے حملے میں خاکستر ہوگیا۔ حملے میں ہسپتال کے عملے کے 9 مقامی اراکین سمیت 16 افراد جان سے گئے جبکہ 30 ابھی تک لاپتہ ہیں۔

افغان شہر قندوز میں ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈر کا تباہ حال کلینک جو رات گئے امریکی فضائیہ کے حملے میں خاکستر ہوگیا۔ حملے میں ہسپتال کے عملے کے 9 مقامی اراکین سمیت 16 افراد جان سے گئے جبکہ 30 ابھی تک لاپتہ ہیں۔


متعلقہ خبریں


کالعدم تحریک طالبان کے امیر ملا فضل اللہ کے افغانستان میں واقع گھر پر ڈرون حملہ: ہلاکت کی تصدیق نہیں ہوسکی! وجود - منگل 26 جنوری 2016

افغانستان کے صونے ننگر ہار میں ایک امریکی جاسوس طیارے سے تحریک طالبان پاکستان کے امیر ملا فضل اللہ کے گھر کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق ڈرون حملے میں ملا فضل اللہ کے بیٹے اور ایک خاتون سمیت پانچ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ حملے میں کسی بھی جگہ سے تاحال ملافضل اللہ کی ہلاکت کی کوئی تصدیق نہیں ہو سکی۔ ایک افغان ذریعے کے مطابق حملے کے وقت ملافضل اللہ گھر پر موجود نہیں تھے۔تاہم خلیجی اخبار گلف نیوز نے دعویٰ کیا ہے کہ مذکورہ حملے میں ملا فضل اللہ کی ہلاکت ہو چکی ہے۔ پاکست...

کالعدم تحریک طالبان کے امیر ملا فضل اللہ کے افغانستان میں واقع گھر پر ڈرون حملہ: ہلاکت کی تصدیق نہیں ہوسکی!

طالبان کے جارحانہ رویئے کے اسباب کیا ہیں؟ محمد انیس الرحمٰن - هفته 26 دسمبر 2015

جس وقت اسلام آباد میں ’’ہارٹ آف ایشیا‘‘ کانفرنس جاری تھی ٹھیک اسی وقت افغان طالبان قندھار میں افغانستان کے سب سے بڑے ائیر پورٹ کا محاصرہ کئے ہوئے تھے اور شدید جنگ جاری تھی۔ یہ وہ مقام ہے جہاں پر امریکا کا سب سے بڑا فوجی اڈہ ہے اور سی آئی اے کے آپریٹر یہاں بھی موجود ہیں۔اس لئے اسے امریکا اور نیٹو کے حوالے حساس ترین علاقہ کہا جاسکتا ہے۔ اس حوالے سے اسلام آباد اور افغانستان میں ان واقعات کی ٹائمنگ بہت اہم ہے۔ بہرحال اطلاعات کے مطابق افغان طالبان نے دو سو کے قریب فوجیوں کو ...

طالبان کے جارحانہ رویئے کے اسباب کیا ہیں؟

طالبان کے روس کے ساتھ بات چیت کے خفیہ اشارے وجود - پیر 23 نومبر 2015

(گزشتہ دنوں العربیہ نیوز چینل کے نامہ نگار وں نے افغان دارالحکومت کابل کا دورہ کیا جہاں انہوں نے ایک ٹی وی کے پروگرام کے لیے کچھ اہم شخصیات کے انٹرویو کیے اور دو دستاویزی فلمیں بھی تیار کیں۔ انہوں نے اپنے دورہ کابل میں وہاں موجود طالبان قیادت سے ملاقات بھی کی۔ محمود الورواری نے دو سال قبل فوت ہونے والے طالبان لیڈر ملا محمد عمر کی زندگی کے بارے میں کئی ایسی باتیں بھی معلوم کی ہیں جو آج تک پردہ راز میں تھیں۔یہ ایک اہم ترین کاوش ہے جس میں افغانستان کے موجودہ حالات کی ایک جھلک بھ...

طالبان کے روس کے ساتھ بات چیت کے خفیہ اشارے

قطر سیاسی دفتر پھرفعال کر دیا: طالبان کی جانب سے مذاکرات کے اشارے ملنے لگے وجود - اتوار 22 نومبر 2015

طالبان کی جانب سے ایک مرتبہ پھر قطر کے سیاسی دفتر کو فعال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق یہ فیصلہ 17 نومبر کو طالبان امیرملااختر منصور کے حکم کے مطابق کیا گیا ہے۔ فیصلے کے مطابق قطر کے سیاسی دفتر کے سربراہ ملا شیر محمد عباس استانکزئی ہوں گے جب کہ اُن کے نائب کے طور پر مولوی عبدالسلام حنفی فرائض ادا کریں گے۔ طیب آغا نے 4 اگست کو اپنے استعفے کی وجوہات بیان کرتے ہوئے کہا تھا کہ "ملاعمر کے انتقال کی خبر کو دوسال تک چھپانا ایک تاریخی غلطی تھی طالبان کا قطر می...

قطر سیاسی دفتر پھرفعال کر دیا: طالبان کی جانب سے مذاکرات کے اشارے ملنے لگے

افغانستان، امریکی ایف-16 طالبان حملے کی زد میں آ گیا وجود - منگل 20 اکتوبر 2015

مشرقی افغانستان میں امریکا کا ایف-16 طیارہ حملے میں بال بال بچ گیا ہے لیکن واقعے میں اسے شدید نقصان پہنچا۔ اتنا زیادہ کہ ایندھن کی ٹنکیاں اور گولا بارود پھینکنا پڑا تاکہ بحفاظت قریبی بیس تک پہنچ سکے۔ یہ واقعہ مشرقی صوبہ پکتیا کے طالبان کے زیر اثر ضلع سید کرم میں گزشتہ منگل کو پیش آیا تھا، لیکن امریکا نے اس کی تصدیق اب جاکر کی ہے۔ طالبان نے ٹوئٹر پر جاری ہونے والے ایک پیغام میں دعویٰ کیا تھا کہ اس نے ایف-16 طیارہ مار گرایا ہے لیکن امریکی عسکری حکام سے اس دعوے کی تصدیق نہیں...

افغانستان، امریکی ایف-16 طالبان حملے کی زد میں آ گیا

وزیر اعظم نوازشریف کا چار روزہ دورہ امریکا : پاکستان نے اپنا مقدمہ تیار کر لیا، امریکا دباؤ بڑھائےگا وجود - پیر 19 اکتوبر 2015

وزیر اعظم نوازشریف چار روزہ سرکاری دورے پر امریکا روانہ ہو گیے ہیں۔جہاں اُن کی امریکی صدر براک اوباما سمیت اعلیٰ امریکی عہدیداروں سے ملاقاتیں ہونگیں۔ وزیراعظم نوازشریف امریکی صدر برا ک اوباماسے 22 اکتوبر کو ملاقات کریں گے۔ جس میں افغانستان اور بھارت کے حوالے سے مختلف امور زیر غور آئیں گے۔ واضح رہے کہ امریکی صدرنے15 اکتوبر بروز جمعرات وہائٹ ہاؤس میں افغانستان سے اپنے فوجیوں کی واپسی کے منصوبے سے انحراف کرتے ہوئے اِسے 2017تک مزید آگے بڑھانے کا اعلان کیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی ام...

وزیر اعظم نوازشریف کا چار روزہ دورہ امریکا : پاکستان نے اپنا مقدمہ تیار کر لیا، امریکا دباؤ بڑھائےگا

طالبا ن نے سنجیدہ مذاکرات کے لیے قابض افواج کی واپسی کی شرط لگادی وجود - جمعه 16 اکتوبر 2015

امریکی صدر اوباما کی جانب سےافغانستان کے لیے اپنا منصوبہ تبدیل کیے جانے کے بعد طالبان نے بھی اپنے موقف کا اظہار کردیا ہے۔ طالبان نے اپنے تازہ موقف میں اپنی پرانی حکمت عملی کو نئے الفاظ میں دُہراتے ہوئے کہا ہے کہ طالبان بامعنی مذکرات شروع کرنے کے لیے تیار ہیں مگر اس سے پہلے مکمل افہام وتفہیم کے ساتھ ایک اسلامی حکومت کا قیام اور افغانستان سے قابض افواج کی واپسی یقینی بنائی جائے۔ طالبان نے اسلامی حکومت کی شرط لگا کر بنیادی طور پر اُس افغان حکومت کے خاتمے کا مطالبہ کر دی...

طالبا ن نے سنجیدہ مذاکرات کے لیے قابض افواج کی واپسی کی شرط لگادی

طالبان کی حالیہ پیش قدمی، افغانستان میں نیا کھیل شروع ۔۔۔؟ محمد انیس الرحمٰن - هفته 10 اکتوبر 2015

گزشتہ دنوں خبر آئی تھی کہ چین میں متعدد دھماکے ہوئے ہیں۔اس کے بعد افغانستان کی صورتحال میں ڈرامائی تبدیلی اس وقت آنے لگی جب طالبان نے اپنی نئی پیش قدمی کا آغاز کردیا اور پہلے مرحلے میں قندوز پر قبضہ جما لیا۔اس کے ساتھ ہی افغان صدر اشرف غنی نے کرزئی کی زبان میں پاکستان سے متعلق بات شروع کردی اور اپنے ایک انٹرویومیں پاکستان کو دوست ملک کے بجائے ہمسایہ ملک کہہ ڈالا۔اس سے پہلے پاکستان کی پوری کوشش تھی کہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان بات چیت کروا کر انہیں کسی قابل عمل منصوبے پ...

طالبان کی حالیہ پیش قدمی، افغانستان میں نیا کھیل شروع ۔۔۔؟

قندوز معاملہ، سنوڈین نے فوری اور موثر حل پیش کردیا وجود - هفته 10 اکتوبر 2015

قندوز میں ہسپتال پر امریکی طیاروں کی بمباری کے بعد ڈاکٹرز وِدآؤٹ بارڈرز (ایم ایس ایف) کی تنقید میں مزید شدت آ چکی ہے اور اب یہ معاملہ ٹھنڈا ہوتا نہیں دکھائی دیتا۔ ادارہ پہلے ہی امریکا کی حرکت کو "جنگی جرائم" قرار دے چکا ہے اور آج اس نے ایک آزاد بین الاقوامی تحقیقاتی کمیشن کے قیام کا مطالبہ کیا ہے۔ برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق یہ مجوزہ کمیشن تحقیقات کے بعد مطالبہ کرے گا جس کی بنیاد پر فیصلہ ہوگا کہ فوجداری مقدمہ چلایا جائے یا نہیں۔ گو کہ ابھی یہ واضح نہیں کہ یہ مقدمہ کس...

قندوز معاملہ، سنوڈین نے فوری اور موثر حل پیش کردیا

پاکستان میں داعش کو ایک خطرے کے طور پر تسلیم کر لیا گیا وجود - اتوار 04 اکتوبر 2015

پاک فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے داعش کو القاعدہ سے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام آباد میں ایسے لوگ موجود ہیں جو داعش سے وابستگی ظاہر کرنا چاہتے ہیں۔ یہ ایک خطرناک رجحان ہے مگرپاکستان پر اس کا سایہ بھی پڑنے نہیں دیا جائے گا۔ برطانیا کے رائل یونائیٹڈ سروسز انسٹیٹیوٹ فار ڈیفنس اینڈ سیکیورٹی اسٹڈیز لندن میں خطاب کے دوران جنرل راحیل شریف کا کہنا تھا کہ القاعدہ کے مقابلے میں داعش سے نمٹنا بڑا چیلنج بن سکتا ہے۔ شدت پسند تنظیم داعش کے حوالے سے جنرل راحیل شریف نے مزید ک...

پاکستان میں داعش کو ایک خطرے کے طور پر تسلیم کر لیا گیا

پاک افغان تعلقات پر شکوک کے سائے گہرے ہونے لگے وجود - منگل 29 ستمبر 2015

پہلے سے ہی پستی کے شکار پاک افغان تعلقات میں گزشتہ دوروز میں مزید زوال آیا ہے۔ اور دونوں ممالک کی حکومتوں کی طرف سے ماضی میں ظاہر کی گئی خوش گمانیاں تیزی سے تحلیل ہو رہی ہیں۔ جس کا واضح اظہار اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں افغانستان کے چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ کی طرف سے خطاب میں ہوا۔ افغانستان کے چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ نے 29 ستمبر بروز منگل اپنے خطاب میں کہا کہ " ہم پاکستان سے اُن اقدامات پر عملدرآمد کرنے کا کہہ رہے ہیں جن کا ہم سے چند ماہ قبل وعدہ کیا گیا تھ...

پاک افغان تعلقات پر شکوک کے سائے گہرے ہونے لگے

طالبان نے پانچویں بڑے صوبے قندوز پر قبضہ کر لیا، افغان فوج مکمل ناکام وجود - منگل 29 ستمبر 2015

طالبان نے افغان شہر قندوز پر قبضہ کرلیا ہے۔ صوبہ قندوز کادارالحکومت قندوز شمالی افغانستان کا ایک انتہائی اہم شہر سمجھاجاتا ہے۔ یہ علاقہ تزویراتی اعتبار سے انتہائی اہمیت رکھتاہے۔صرف قندوز شہر کی آبادی تین لاکھ چار ہزار چھ سو ہے۔ جو افغانستان کا کابل، قندھار، ہرات اور مزار شریف کے بعد بلحاظِ آبادی پانچواں بڑا شہر ہے۔ تفصیلات کے مطابق طالبان اورافغان فورسز کے درمیان گھمسان کی جھڑپ کے بعد طالبان نے شہر پر قبضہ کرلیا جب کہ جھڑپوں میں درجنوں افراد کے ہلاکتوں کی بھی اطلاعات ہیں...

طالبان نے پانچویں بڑے صوبے قندوز پر قبضہ کر لیا، افغان فوج مکمل ناکام