وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar
عوام کے آئیڈیل وجود - هفته 25 ستمبر 2021

پاکستان کی تنزلی کا سبب سوچنے بیٹھیں تو اس مملکت ِ خداداد کے ہرشعبہ میں مافیاز کاراج ہے سیاسی پارٹیاں مسلک بن چکی ہے اورتو اور عام آدمی کسی شریف امیدوارکو ووٹ دینا پسندنہیں کرتا یہاں تو عوام کا کوئی معیارنہیں کرپٹ ،فرعون صفت اور اخلاقی طورپر دیوالیہ ہونے والے عناصر قوم کے ہیرو بن گئے ہیں اور بدقسمتی سے یہ عناصر عوام کے لیے آئیڈیل بن گئے ملک بھرمیں ایک پائو خالص دودھ ملنا محال ہے ،بیشتردکانوںپر الحمداللہ،ماشاء اللہ ،بسم اللہ،داتا ،ہجویری، مدنی، مکہ ،مدینہ کے نیون سائن بورڈ ج...

عوام کے آئیڈیل

کھیل پر سیاست وجود - هفته 25 ستمبر 2021

کھیل کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں مگر اب نہ صرف تعلق بن رہا ہے بلکہ کھیل پر سیاست حاوی ہونے لگی ہے اٹھارہ برس کے وقفے کے بعد نیوزی لینڈ کی کرکٹ ٹیم پاکستان کے دورے پرآئی ابتدا میں تو کھیل بالادست رہا لیکن راولپنڈی میچ سے چند لمحے قبل کھیل کو شکست اور سیاست کو برتری مل گئی جس کے نتیجے میں ٹاس سے قبل نیوزی لینڈ نے سیکورٹی وجوہات کی بنا پر سیریز کی منسوخی کا غیر معمولی فیصلہ سنا دیا فیصلے پر کرکٹ شائقین ابھی تک حیرت زدہ اور غم زدہ ہیں یہ کھیل پر سیاست کا ایسا کاری وار تھا کہ عمرا...

کھیل پر سیاست

سائنس بھی بھارتی سیاست کی بھینٹ چڑھنے لگی وجود - هفته 25 ستمبر 2021

(مہمان کالم) کرن دیپ سنگھ بھارتی حکومت کی تسلیم شدہ اور حساب کتاب پر مبنی پیشگوئی بری طرح غلط ثابت ہوگئی۔ ستمبر 2020ء میں کووڈ کی دوسری مہلک لہر آنے سے 8 مہینے قبل‘ حکومت کے مقرر کردہ سائنسدانوں نے کہا تھاکہ کورونا وائرس کے دوبارہ پھیلنے کا زیادہ امکان نہیں ہے۔ سائنس دانوں نے ایک سٹڈی میں لکھا تھا کہ فوری لاک ڈائون کی وجہ سے پہلی لہر کا انفیکشن اور وائرس کا پھیلائو بہت کم ہو گیا ہے۔ گزشتہ سال جب یہ سٹڈی جاری کی گئی تو بھارتی نیوز میڈیا نے اس کی بھرپور کوریج کی تھی۔ ان ...

سائنس بھی بھارتی سیاست کی بھینٹ چڑھنے لگی

کفن کی جیب وجود - جمعه 24 ستمبر 2021

ایک انتہائی مالدار کنجوس بستر ِ مرگ پر تھا مرض بڑھتا گیا جوں جو ںدواکی کے مصداق اس کی دن بہ دن حالت بگڑتی جارہی تھی عیادت کو آتے جاتے لوگ اسے مشورے پہ مشورہ دیئے جارہے تھے تمہارا آخری وقت آگیاہے اللہ کے نام پر کچھ تو دیتے جائو وہ سنی ان سنی کردیتا۔۔ایک روز وہ لگتا تھا کہ گھڑی پل کا مہمان ہے عزیز و اقارب، دوست احباب اور محلے دار مالدار کنجوس کی چارپائی کے گرد جمع تھے کہ حالت سنبھل گئی اتنے میں مولوی صاحب تشریف لائے انہوںنے تلقین کے انداز میں کہا حضرت!وقت قریب ہے اللہ کے نام...

کفن کی جیب

چھوٹے قد،بڑھتے مسلمان۔۔ وجود - جمعه 24 ستمبر 2021

دوستو،بھارت میں مذہبی اعتبار سے آبادی کے تناسب میں تبدیلی آرہی ہے۔ ہندوؤں کی نسبت مسلمانوں کی آبادی میں اضافہ ہورہا ہے۔بی بی سی پر شائع ہونے والے تحقیق کے مطابق بھارت میں تمام مذہبی گروہوں میں شرح پیدائش میں واضح کمی آئی ہے، تاہم اس کے باوجود مسلمان خواتین میں شرح پیدائش دوسرے مذاہب کی نسبت زیادہ ہے۔تازہ تحقیق کے مطابق بھارت کی 1 ارب 20 کروڑ آبادی میں بڑا حصہ (94 فیصد) ہندوؤں اور مسلمانوں پر مشتمل ہے، جب کہ عیسائی، سکھ، بدھ مت اور جین مذہب کے ماننے والے بھارت کی آبادی ک...

چھوٹے قد،بڑھتے مسلمان۔۔

ٹرمپ، جنرل مارک ملی اور چین وجود - جمعه 24 ستمبر 2021

(مہمان کالم) مائیکل شمٹ واشنگٹن پوسٹ کے رپورٹرز‘ باب وڈ ورڈ اور رابرٹ کوسٹا کی نئی آنے والی کتاب ’’Peril‘‘ کے مطابق صدر ٹرمپ کے آخری دنوں میں چیئرمین جوائنٹ چیفس آف ا سٹاف جنرل مارک ملی نے اپنے چینی ہم منصب کو یہ یقین دہانی کرانے کے لیے دو مرتبہ فون کال کی کہ صدر ٹرمپ اقتدار میں رہنے کے لیے چین پر حملہ کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتے اور امریکا جنگ کی طرف نہیں جا رہا۔ جنرل ملی نے اپنی دوسری فون کال میں چینی جنرل لی زوچنگ کو بتایا ’’جنرل لی! معاملات کسی حد تک عدم استحکا...

ٹرمپ، جنرل مارک ملی اور چین

کھیل کے ساتھ کھلواڑ کاعالمی تماشہ وجود - جمعرات 23 ستمبر 2021

نیوزی لینڈ کی حکومت کی جانب سے پاکستان میں سکیورٹی خدشات کو بنیاد پر بنا کر کیوی کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان ختم کرنے کے اعلان کے بعد دنیائے کرکٹ سخت صدمے کی حالت میں ہے۔ ایسا نہیں ہے کہ یہ کسی بھی کرکٹ ٹیم کا اپنا طے شدہ دورہ ملتوی کرنے کا کوئی انوکھا واقعہ ہواہے ۔ بلاشبہ کرکٹ کی تاریخ میں سیکورٹی کے علاوہ اور بھی بے شمار چھوٹی ،بڑی یا سنگین و رنگین وجوہات کی بنیاد پر کرکٹ بورڈز کا اپنی ٹیموں کے طے شدہ دورے ملتوی کرنا ایک عام سی بات رہی ہے۔خود نیوزی لینڈ کی کرکٹ ٹیم ،غیر ملکی د...

کھیل کے ساتھ کھلواڑ کاعالمی تماشہ

حیدرآباد دکن کا ہولو کاسٹ! وجود - جمعرات 23 ستمبر 2021

  کیپٹن ایل پانڈو رنگاریڈی بھارت میں عمومی طور پر بیان کی جانے والی یہ ایک فرضی کہانی ہے کہ 17 ستمبر 1948ء کو آصف جاہی سلطنت کا اختتام ہوا اور پھر حیدرآباد دکن کا انڈین یونین میں انضمام عمل میں آیا۔ اس طرح حیدرآباد دکن میں جمہوریت کا آغاز ہوا۔ حقیقت میں ایسا کچھ نہیں ہوا۔ یہ ایک سچائی ہے کہ 17 ستمبر نہ صرف تلنگانہ کی تاریخ میں ایک اہم تاریخ ہے بلکہ فرانس کی تاریخ میں بھی یہ دن بہت زیادہ اہمیت رکھتا ہے۔ ستمبر 1793ء میں انقلابِ فرانس کے بعد وہاں دہشت کی ایک خوفن...

حیدرآباد دکن کا ہولو کاسٹ!

خطہ پنجاب تاریخ کے آئینے میں وجود - بدھ 22 ستمبر 2021

  پانچ دریائوںکی سرمین خطہ ٔ پنجاب کے تہذیب و تمدن کا برِ صغیرپاک وبنگلہ ہند پر گہرے سیاسی ،سماجی،معاشرتی،معاشی اورلسانی اثرات کی آج تک گہری چھاپ ہے یہ خطہ انتہائی ذرخیزہونے کے بعد بیرونی جارحیت کا ہمیشہ محوررہاہے جس بادشاہ نے اس علاقہ کوفتح کیا اس نے مقامی آبادی پر بہت ظلم و تشدد کیا پنجاب انسانی آبادی کے لحاظ سے دنیا کا نہایت ہی قدیم خطہ ہے۔ لفظ پنجاب علاقے کے نام کے طور پر مسلمانوں کی آمد کے بعد رائج ہوا۔ یہاں پر لاکھوں سال پہلے قدیم پتھر کے زمانے کا انسان آبا...

خطہ پنجاب تاریخ کے آئینے میں

ایشیا کا میدان وجود - بدھ 22 ستمبر 2021

ہرامریکی صدر اقتدار سنبھالنے کے بعد ایسے دوست ممالک کے سربراہان سے رابطہ کرتا ہے جن سے واشنگٹن کا مفاد وابستہ ہو جوبائیڈن نے بھی بطور صدر کئی ملکوں کے سربراہوں سے رابطہ کیا اور مستقبل کی پالیسیوں کے حوالے سے اعتماد میں لیا مگر پاکستان جسے نان نیٹو اتحادی کا درجہ حاصل ہے کونظر انداز کر رکھا ہے اور ایسا دانستہ طور پر کیا گیا ہے اِس کی وجہ محض طالبان ہیں؟نہیں ایک اور وجہ اسلحہ کی تجارت میں حصہ دار بننا ہے مگر ایک طرف امریکی صدر پاکستانی قیادت سے اگر بات کرنے سے گریزاں ہیںتو روس ...

ایشیا کا میدان

قانون کا ڈنڈا وجود - بدھ 22 ستمبر 2021

دوستو،جنوبی کوریا رقبے میں ہمارے پنجاب سے آدھا ہے آبادی پنجاب کی آدھی سے بھی کم ہے۔ افرادی قوت زیرو ہے۔ کوریا میں تیل گیس لوہا سمیت کسی قسم کی معدنیات پیدا نہیں ہوتیں حتی کہ اپنی ضرورت کی سبزی اور پھل بھی باہر سے منگواتاہے اور انتظام ایسا اعلی ہے کہ تیل گیس بجلی پھل سبزی آج تک کبھی ختم ہوئے ہیں نہ کبھی کم ہوئے ہیں نہ کبھی اچانک مہنگے ہوئے ہیں۔ ہر چیز ہر وقت عام دستیاب اور امیر غریب کی پہنچ میں ہوتی ہے۔ کسی قسم کی معدنیات نہ ہونے اور افرادی قوت بھی کم ہونے کے باوجود کوریا ...

قانون کا ڈنڈا

اپوزیشن کے بغیر طاقتور احتجاج وجود - بدھ 22 ستمبر 2021

برکھادت اس سے قطع نظر کہ آپ کسانوں کے متعلق نئے قوانین پر کیا رائے رکھتے ہیں، کسانوں کا احتجاج چند غلطیوں یا بے ترتیبی کے باوجود انتہائی منظم ہے، یہ کامیاب ہو یا ناکم اس سے قطع نظر اس قدر منظم کہ وہ اپنے اعصاب و حواس پر قابو رکھے ہوئے ہیں۔ حکومت کے خلاف اتنا منظم احتجاج شہریت قانون میں تبدیلی کے خلاف ’’مہذب‘‘ سول سوسائٹی کا بھی نہ تھا۔ اس سے ہندوستان میں جمہوریت کے حوالے سے کی گئی ایک سازش بھی آشکار ہوتی ہے۔ اس میں ایک مثبت پہلو بھی ہے کہ اگر لوگوں کی ایک بڑی تعداد ایسا...

اپوزیشن کے بغیر طاقتور احتجاج

امریکا کو خطرہ اندر سے ہے وجود - منگل 21 ستمبر 2021

(مہمان کالم) پال کرگمین شاید یہ بات نیوز میڈیا سمیت اکثر لوگوں کواچھی نہ لگے کہ وہ نائن الیون حملوں کے حوالے سے ابھی تک ماضی میں پھنسے ہوئے ہیں‘ کچھ لوگ تو اس قومی وحدت اور یگانگت کے حوالے سے پریشان ہیں جو ان حملوں کے بعد ہمیں نظر آئی تھی۔ زیادہ گہرائی میں سوچیں تو میرا احساس یہ ہے کہ زیادہ تر لوگ ان دنوں کو یاد کرتے ہیں جب ہمیں اپنے سیاسی شدت پسندوں سے زیادہ غیر ملکی انتہا پسندوں سے خطرہ محسوس ہوتا تھا مگر اس طرح کی قومی وحدت کے دن ہم نے کبھی نہیں دیکھے۔ یہ محض ایک اف...

امریکا کو خطرہ اندر سے ہے

چین کے سپنے ، طالبان کے خواب وجود - پیر 20 ستمبر 2021

مغربی تجزیہ کاروں کی اس بات میں کافی وزن ہے کہ ’’کمیونسٹ چین لادین ملک ہے،جس کا بنیادی منشور ،دین و مذہب سے بالاتر ہوکر فقط سماجی استحکام اور اقتصادی ترقی کے لیئے کام کرنا ہے۔ جبکہ طالبان مکمل مذہبی ہیں ۔جن کے نزدیک اپنی مذہبی اقدار کا احیاء ہی ترجیح اوّل ہے۔ چونکہ چین اور طالبان کے نظریات مذہبی بنیادوں پر ایک دوسرے سے سخت متصادم ہیں ۔اس لیئے ددنوں کا زیادہ دیر تک ایک دوسرے کے ساتھ چلنا مشکل نظر آتا ہے‘‘۔ اس وزنی دلیل کے جواب بس، اتنا ہی عرض کیا جاسکتاہے کہ اگر کمیونسٹ چین ا...

چین کے سپنے ، طالبان کے خواب

ظلم کے خلا ف آواز اٹھانے والوں پر عتاب وجود - پیر 20 ستمبر 2021

مہمان کالم ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ معصوم مراد آبادی انسانی حقوق کے ممتاز کارکن ہرش مندر کے ٹھکانوں پر گزشتہ جمعرات کوای ڈی نے چھاپہ مار کارروائی انجام دی۔جس وقت یہ کارروائی انجام دی گئی ، ہرش مندر دہلی میں موجودنہیں تھے ۔نہ صرف یہ کہ ان کی غیر حاضری میں ان کے گھر پرچھاپہ مارا گیا بلکہ ان کی رضا کار تنظیموں پر بھی نشانہ سادھا گیا۔سبھی جانتے ہیں کہ ہرش مندر حکومت کے ناقدین کی صف اوّل میں شامل ہیں اور انھوں نے مظلوموں کی دادرسی کے لیے جو عملی اقدامات کئے ہیں ، وہ کم ہی لوگوں کے حصے میں ...

ظلم کے خلا ف آواز اٹھانے والوں پر عتاب

شاعری چھوڑو وجود - اتوار 19 ستمبر 2021

دوستو، ہمارے وزیراعظم نے بیرون ملک دورے کے دوران ایک عوامی اجتماع میں شاعری کرنے والے ایک صاحب کو شعر کہنے سے روکتے ہوئے کہا۔۔ شعروشاعری بعد میں کریں گے ابھی بزنس کی باتیں کریں۔۔ کپتان کا یہ کلپ سوشل میڈیا پر کافی وائرل ہوا، دل جلوں اور پٹواریوں نے تو کپتان کے خوب لتے لیے۔۔ لیکن ہمارے خیال میں ملک کو ایک پریکٹیکل وزیراعظم کی ضرورت ہے ، جو خوابوں اور خیالوں کی دنیا سے باہر آکر اپنی قوم ، اپنے ملک کے لیے عملی اقدامات کرے تاکہ عوام کو ذہنی سکون میسر آسکے۔۔ کپتان چونکہ ہمارے ہم...

شاعری چھوڑو

گرہن وجود - اتوار 19 ستمبر 2021

سڈپرکنز قدیم گرہن بتاتے ہیں کہ زمین کی محوری حرکت کم ہو رہی ہے۔ اکثر سننے کو ملتا ہے کہ اجرام فلکی گھڑی کی طرح حرکت کرتے ہیں۔ ماہرین فلکیات آسانی سے گرہن کی پیش گوئی کر سکتے ہیں اور وقت سے پہلے یہ بھی بتا سکتے ہیں کہ سکینڈ کے کس حصے میں چاند کسی دور دراز کے ستارے کے سامنے سے گزرے گا۔ وہ وقت کی سوئیاں موڑ سکتے ہیں اور بتا سکتے ہیں کہ ماضی میں کس وقت اور کہاں گرہن لگا تھا۔ مگر سیکڑوں گرہنوں جن میں بعض 8ویں صدی قبل مسیح کے ہیں، کا نیا تاریخی سروے بتاتا ہے کہ سائنسدانوں کی سوچ ...

گرہن

ریاستِ مدینہ کابھرم بھی کہاں ٹوٹنا تھا!! وجود - هفته 18 ستمبر 2021

وزیراعظم عمران خان وہاں داخل ہوگئے۔ انگریزی محاورہ جس کی موزوں وضاحت کرتا ہے۔ fools rush in where angels fear to tread (بے وقوف وہاں جاگھستے ہیں جہاں فرشتے بھی گریزاں رہتے ہیں) وزیراعظم عمران خان اسلام کو نوازلیگ یا پیپلزپارٹی کے بدعنوان ٹولے جیسا معاملہ سمجھتے ہیں۔ سیاست میں ''طاقت ور حلقوں'' کی ''مدد'' سے وہ حریفوں پر قابو پاسکتے ہیں ،اس دنیا کی حقیر ترین چیزوں میں شامل اقتدار کی غلام گردشوں کا مزہ لے سکتے ہیں، جو ،نہیں خود کو وہ بھی دکھا سکتے ہیں، جھوٹ کو سچ اور سچ کو ج...

ریاستِ مدینہ کابھرم بھی کہاں ٹوٹنا تھا!!

اپنی دنیاآپ پیداکر وجود - هفته 18 ستمبر 2021

کوٹھی،کارسمیت دنیا کی ہر آسائش اس کی دسترس میں تھی، اپنی بیشتر خواہشیں پوری کرنے پرقادر ،اسے لفظوںسے کھیلنے،دلچسپ باتیں کر نے کا ہنر بھی آتا تھا،ہومیو پیتھی کی طرح بے ضرر ،لوگ اس کی عزت بھی کرتے تھے احباب کا حلقہ بھی وسیع ۔نہ جانے کیا بات تھی اس کے باوجودوہ اپنی زندگی سے مطمئن نہ تھا ۔۔میرا بہترین دوست۔۔میرا ہمزاد۔ واجد ڈار (اللہ اسے کروٹ کروٹ سکون عطا فرمائے )میں اکثر اس سے سبب دریافت کرتا وہ ہنس کر ٹال جاتا ایک دن کہنے لگا مسکراتے چہروںکے پیچھے کئی اتنے اداس ہوتے ہیں کہ ا...

اپنی دنیاآپ پیداکر

افغانستان سے امریکی پسپائی وجود - هفته 18 ستمبر 2021

(مہمان کالم) مشیل گولڈ برگ مجھے یہ بات ہمیشہ یا درہے گی کہ نائن الیون حملے شام کے وقت ہوئے تھے۔اس دن میں شمالی بھارت کے ایک قصبے میں تھی کہ میں نے ٹی وی پر ٹوئن ٹاورز کو گرتے ہوئے دیکھا۔چونکہ میں وطن سے کوسوں دور تھی اس لیے نہیں جانتی کہ اس دن نیویارک اور واشنگٹن کے باسیوں کا خوف اور دہشت سے کیا حال تھا۔ان پر مزید حملوں کا خو ف طاری تھا۔یوں لگ رہا تھا کہ 1990ء کی دہائی کی ہولناک موویز حقیقت کا روپ دھار کر آگئی ہوں مگر مجھے پورا یقین ہے کہ ان تباہ کن لمحات کے دوران عوام...

افغانستان سے امریکی پسپائی

خلیفہ کے آنسو وجود - جمعه 17 ستمبر 2021

غورکریں تو دل کو دھچکا سالگتاہے کہ قیامت خیز ترقی کے باوجود ہم کتنے تہی دست ہیں ہمارے دامن میں ماضی کی درخشاں روایات کے علاوہ کچھ بھی تونہیں ہم اپنے حال کے سامنے شرمندہ شرمندہ ہیں ،مستقبل بھی خدا نہ کرے روحانی لحاظ سے بانجھ نہ ہو جائے ہرچیزپر مادیت غالب آجائے تو معاشرے کا یہی حال ہوتاہے اللہ کے آخری نبی حضرت محمد ﷺ ؐچچا سیدنا عباس رضی اللہ عنہ کا گھر مسجد نبوی کے ساتھ احاطہ میں تھا سال ہاسال سے مکان کی یہی ترتیب تھی حضورپاک ﷺ کے دور ہی سے اس مکان کا پرنالہ مسجد کی طرف تھا ج...

خلیفہ کے آنسو

کراچی میں غائب ، حیدرآباد میں حاضر وجود - جمعه 17 ستمبر 2021

ہمیشہ جمہوری اور پارلیمانی نظام میں انتخابات چاہے وہ کسی بھی نوعیت یا چھوٹے ،بڑے درجے کے ہوں، عوامی رائے کو جانچنے اور پرکھنے کا اہم ترین پیمانہ سمجھے جاتے ہیں ۔ خاص طور پر اگر ضمنی یا بلدیاتی انتخابات کا انعقاد ایک ایسے نازک وقت میں ہورہا ہو ،جب قومی انتخابات کی منزل صر ف سال یا ڈیڑھ سال کی دوری پر صاف دکھائی دے رہی ہو تو پھر انتخابات کے اختتام پر حاصل ہونے والے نتائج کی اہمیت اور بھی زیادہ دو چند ہوجاتی ہے۔ حالیہ دنوں ملک بھر میں کنٹونمنٹ اداروں میں جماعتی بنیادوں پر انتخاب...

کراچی میں غائب ، حیدرآباد میں حاضر

عالمی ضمیرکاامتحان وجود - جمعرات 16 ستمبر 2021

کشمیرکی مقبوضہ وادی میںبھارتی ظلم، استحصال اور ریاستی جبرکے 2 سال گذرگئے 5اگست2019ء کو جب مودی سرکارنے صدارتی حکم نامے کے ذریعے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا اعلان کیاتو دنیا بھر میں اس کے خلاف صدائے احتجاج بلند ہوئی کیونکہ ا س بھارتی کالے قانون کے تحت مقبوضہ جموں و کشمیر بھارتی یونین کا علاقہ تصور ہو گا۔ لداخ کو مقبوضہ کشمیر سے الگ کر دیا گیا۔ یہ قدم اسرائیلی طرز پر کشمیریوں کو اقلیت میں بدلنے کے لیے اٹھایا گیا بلاشبہ بھارت نے مقبوضہ وادی میں انسانی تاریخ کا سب سے ...

عالمی ضمیرکاامتحان

بھارت میں نفرت کے سوداگروں کا اوور ٹائم وجود - جمعرات 16 ستمبر 2021

(مہمان کالم) رام پنیانی ہندوستان کی متنوع تہذیب اور یہاں پائے جانے والے ’’کثرت میں وحدت‘‘ کا جو نظریہ ہے، وہ حیرت انگیز ہے۔ اس سرزمین پر مختلف تہذیبوں کی نمائندگی کرنے والے، مختلف مذاہب کے ماننے والے ، مختلف زبانوں کے بولنے اور مختلف نسلوں سے تعلق رکھنے والے رہتے ہیں۔ اہم بات یہ ہے کہ پچھلی کئی صدیوں سے بھکتی‘ صوفی سَنت اور تحریک آزادی نے اس سرزمین پر رہنے والی مختلف برادریوں کے درمیان تعلقات کو مضبوط کیا ہے، لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ پچھلے چند دہوں سے اور خاص طور پر چند ...

بھارت میں نفرت کے سوداگروں کا اوور ٹائم

مضامین
عوام کے آئیڈیل وجود هفته 25 ستمبر 2021
عوام کے آئیڈیل

کھیل پر سیاست وجود هفته 25 ستمبر 2021
کھیل پر سیاست

سائنس بھی بھارتی سیاست کی بھینٹ چڑھنے لگی وجود هفته 25 ستمبر 2021
سائنس بھی بھارتی سیاست کی بھینٹ چڑھنے لگی

کفن کی جیب وجود جمعه 24 ستمبر 2021
کفن کی جیب

چھوٹے قد،بڑھتے مسلمان۔۔ وجود جمعه 24 ستمبر 2021
چھوٹے قد،بڑھتے مسلمان۔۔

ٹرمپ، جنرل مارک ملی اور چین وجود جمعه 24 ستمبر 2021
ٹرمپ، جنرل مارک ملی اور چین

کھیل کے ساتھ کھلواڑ کاعالمی تماشہ وجود جمعرات 23 ستمبر 2021
کھیل کے ساتھ کھلواڑ کاعالمی تماشہ

حیدرآباد دکن کا ہولو کاسٹ! وجود جمعرات 23 ستمبر 2021
حیدرآباد دکن کا ہولو کاسٹ!

خطہ پنجاب تاریخ کے آئینے میں وجود بدھ 22 ستمبر 2021
خطہ پنجاب تاریخ کے آئینے میں

ایشیا کا میدان وجود بدھ 22 ستمبر 2021
ایشیا کا میدان

قانون کا ڈنڈا وجود بدھ 22 ستمبر 2021
قانون کا ڈنڈا

اپوزیشن کے بغیر طاقتور احتجاج وجود بدھ 22 ستمبر 2021
اپوزیشن کے بغیر طاقتور احتجاج

اشتہار

افغانستان
طالبان حکومت کے بعد پاکستان کی افغانستان کیلئے برآمدات دگنی ہوگئیں وجود جمعه 17 ستمبر 2021
طالبان حکومت کے بعد پاکستان کی افغانستان کیلئے برآمدات دگنی ہوگئیں

امریکا کا نیا کھیل شروع، القاعدہ آئندہ چند سالوں میں ایک اور حملے کی صلاحیت حاصل کر لے گی،ڈپٹی ڈائریکٹر سی آئی اے وجود بدھ 15 ستمبر 2021
امریکا کا نیا کھیل شروع،  القاعدہ آئندہ چند سالوں میں ایک اور حملے کی صلاحیت حاصل کر لے گی،ڈپٹی ڈائریکٹر سی آئی اے

طالبان دہشت گرد ہیں تو پھر نہرو،گاندھی بھی دہشت گرد تھے، مہتمم دارالعلوم دیوبند کا بھارت میں کلمہ حق وجود بدھ 15 ستمبر 2021
طالبان دہشت گرد ہیں تو پھر نہرو،گاندھی بھی دہشت گرد تھے، مہتمم دارالعلوم دیوبند کا بھارت میں کلمہ حق

نئے افغان آرمی چیف نے عہدے کا چارج سنبھال لیا وجود بدھ 15 ستمبر 2021
نئے افغان آرمی چیف نے عہدے کا چارج سنبھال لیا

افغان قیادت نے مشکل کی گھڑی میں قطر کے تعاون کا شکریہ ادا کیا، سہیل شاہین وجود پیر 13 ستمبر 2021
افغان قیادت نے مشکل کی گھڑی میں قطر کے تعاون کا شکریہ ادا کیا، سہیل شاہین

اشتہار

بھارت
مودی پر منشیات اسمگلنگ کے الزامات وجود جمعه 24 ستمبر 2021
مودی پر منشیات اسمگلنگ کے الزامات

پاکستان میں بم دھماکے کرنے کے لیے بھیجا گیا تھا،سابق'' را'' ایجنٹ کا اعتراف وجود جمعرات 23 ستمبر 2021
پاکستان میں بم دھماکے کرنے کے لیے بھیجا گیا تھا،سابق'' را'' ایجنٹ کا اعتراف

سکھوں کے قتل کا الزام' امریکی عدالت نے نریندر مودی کو سمن جاری کردیا وجود جمعرات 23 ستمبر 2021
سکھوں کے قتل کا الزام' امریکی عدالت نے نریندر مودی کو سمن جاری کردیا

بھارت‘ مذہبی اعتبار سے آبادی کے تناسب میں تبدیلی‘مسلم آبادی میں اضافہ وجود جمعرات 23 ستمبر 2021
بھارت‘ مذہبی اعتبار سے آبادی کے تناسب میں تبدیلی‘مسلم آبادی میں اضافہ

شدت پسند ہندؤں کا نامور مسلم رہنما اسدالدین اویسی کے گھر پر حملہ وجود جمعرات 23 ستمبر 2021
شدت پسند ہندؤں کا نامور مسلم رہنما اسدالدین اویسی کے گھر پر حملہ
ادبیات
اردو کو سرکاری زبان نہ بنانے پر وفاقی حکومت سے جواب طلب وجود پیر 20 ستمبر 2021
اردو کو سرکاری زبان نہ بنانے پر وفاقی حکومت سے جواب طلب

تاجکستان بزنس کنونشن میں عمران خان پر شعری تنقید، اتنے ظالم نہ بنو،کچھ تو مروت سیکھو! وجود جمعه 17 ستمبر 2021
تاجکستان بزنس کنونشن میں عمران خان پر شعری تنقید، اتنے ظالم نہ بنو،کچھ تو مروت سیکھو!

طالبان کا ’بھگوان والمیکی‘ سے موازنے پر منور رانا کے خلاف ایک اور مقدمہ وجود منگل 24 اگست 2021
طالبان کا ’بھگوان والمیکی‘ سے موازنے پر منور رانا کے خلاف ایک اور مقدمہ

عظیم ثنا ء خواں،شاعر اورنغمہ نگار مظفر وارثی کی دسویں برسی منائی گئی وجود جمعرات 28 جنوری 2021
عظیم ثنا ء خواں،شاعر اورنغمہ نگار مظفر وارثی کی دسویں برسی منائی گئی

لارنس آف عربیا، بچپن کیسے گزرا؟ وجود منگل 20 اکتوبر 2020
لارنس آف عربیا، بچپن کیسے گزرا؟
شخصیات
سینئرصحافی و افغان امورکے ماہر رحیم اللہ یوسف زئی انتقال کر گئے وجود جمعه 10 ستمبر 2021
سینئرصحافی و افغان امورکے ماہر رحیم اللہ یوسف زئی انتقال کر گئے

بلوچستان کے قوم پرست رہنما ، سردار عطااللہ مینگل کراچی میں انتقال کرگئے وجود جمعه 03 ستمبر 2021
بلوچستان کے قوم پرست رہنما ، سردار عطااللہ مینگل کراچی میں انتقال کرگئے

سچے پاکستانی، سینئر کشمیری حریت رہنما سید علی گیلانی انتقال کرگئے وجود جمعرات 02 ستمبر 2021
سچے پاکستانی، سینئر کشمیری حریت رہنما سید علی گیلانی انتقال کرگئے

پاکستان کے امجد ثاقب ایشیا کا سب سے بڑا ایوارڈ جیتنے میں کامیاب وجود بدھ 01 ستمبر 2021
پاکستان کے امجد ثاقب ایشیا کا سب سے بڑا ایوارڈ جیتنے میں کامیاب

ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی طبیعت بگڑ گئی وجود بدھ 01 ستمبر 2021
ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی طبیعت بگڑ گئی