وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar
پراٹھہ۔کول۔۔ وجود - بدھ 05 مئی 2021

دوستو، پروٹوکول کی اپنی جگہ اہمیت ہے لیکن جب ’’پراٹھا۔کول‘‘ یعنی (پراٹھا نزدیک) ہوتو انسان کھانے کے دوران سارے پروٹوکول بھول جاتا ہے۔۔ گزشتہ دنوں کپتان کے پروٹوکول کے بغیر اسلام آباد کی مارکیٹ کے دورے کا بڑا چرچا ہوا، اور اس چرچے کو ’’وائرل‘‘ کرنے میں سنا ہے بہت خرچا بھی ہوا۔۔ ہمارے ایک معزز دوست نے ہمیں اس حوالے سے ایک دلچسپ روداد بھیجی ہے، ہمیں اچھی لگی تو سوچا کیوں نہ آپ لوگوں سے شیئر کرلی جائے۔۔ ہمارے دوست لکھتے ہیں کہ ۔۔وزیر اعظم نے گوشت مارکیٹ کا دورہ کیا انتہائی صاف...

پراٹھہ۔کول۔۔

صدر جو بائیڈن کے پہلے 100دن وجود - بدھ 05 مئی 2021

(مہمان کالم) میشل کوٹل کسی بھی ملازم کی طرح صدر جو بائیڈن کو وقفے وقفے سے اپنی کارکردگی کے جائزے سے گزرنا پڑرہا ہے۔جمعرات کو انہیں صد ربنے ایک سو دن ہوگئے ہیں او ریہ وہ عرصہ ہوتا ہے جب دنیا ایک صدر کے اقدامات کا بغور جائزہ لیتی ہے۔ اس نے کتنے بل پا س کروائے ہیں ؟ کس کس کی تقرری کی ہے؟ کتنے ایگزیکٹو ا?رڈرز پر انہوں نے دستخط کیے ہیں؟ کون کون سا وعدہ توڑا ہے؟ وغیرہ۔جو بائیڈن نے ان غیر معمولی حالات میں اپنا منصب صدارت سنبھالا تھا جب چار سال کے دوران ہمیںمتنوع بحرانوں کا سام...

صدر جو بائیڈن کے پہلے 100دن

بھارت میں کورونا کی تباہ کاریاں وجود - منگل 04 مئی 2021

(مہمان کالم) جیفری گیٹل مین بھارت میں کورونا کی دوسری لہر ایک تباہ کن بحران میں بدل چکی ہے جہاں ہسپتال مریضوں سے بھر گئے ہیں، آکسیجن کی سپلائی تیزی سے کم ہو رہی ہے، مایوسی میں ڈوبے مریض ڈاکٹروں کا انتظار کرتے کرتے سڑکوں پر دم توڑ رہے ہیں۔ یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد سرکاری طور پر جاری کیے جانے والے اعداد و شمار سے کہیں زیادہ ہے۔ حکومت روزانہ تین لاکھ سے زائد کورونا سے متاثر ہونے والے نئے مریضوں کی رپورٹ دے رہی ہے جو ایک عالمی ریکارڈ ہے۔ اب دنیا میں سامنے آ...

بھارت میں کورونا کی تباہ کاریاں

قول وفعل کا تضاد وجود - پیر 03 مئی 2021

شہرکے ایک پوش علاقے کی بڑی جامع مسجد کے خطیب صاحب نے منبر پر بیٹھ کر "کفایت شعاری، صبر اور پرہیزگاری" پر تقریر شروع ہی کی تھی کہ معمولی کپڑے پہنے ہوئے ایک غریب آدمی نے کھڑے ہو خطیب کی بات کاٹتے ہوئے کہا: حضور والا: آپ پیجارو میں بیٹھ کر مسجد میں تشریف لا تے ہیں حالانکہ چھوٹی گاڑی سے بھی آپ کا گزاراہو سکتاہے۔ آپ نے نفیس ترین کپڑے کا لباس زیب تن کیا ہوا ہے، آپ کے لگائے ہوئے قیمتی عطر سے پوری مسجد مہک رہی ہے۔ آپ کے ہاتھ میں چار چار قیمتی انگوٹھیاں نظر آ رہی ہیں شاید آپ ...

قول وفعل کا تضاد

کورونا کی تباہ کاریاں اور حکومت کی لاچاری وجود - پیر 03 مئی 2021

کورونا کے دوسرے دور کی تباہ کاریاں اتنی خوفناک اورڈراونی ہیں کہ انھیں پوری طرح لفظوں میں بیان کرپانا مشکل ہے ۔ملک میں آکسیجن کی زبردست قلت ہے اور لوگ سڑکوں پر جان دے رہے ہیں۔ اموات کی تعداد اتنی بڑھ گئی ہے کہ شمشان گھاٹوں پرلمبی قطاریں لگی ہوئی ہیں اور قبرستانوں میں جگہ کی قلت ہے ۔حالات کی سنگینی کا اندازہ آپ اس بات سے لگاسکتے ہیں کہ گزشتہ تین دن میں یہاں دہلی کے مختلف شمشان گھاٹوں میںایک ہزار سے زیادہ چتائیں نذر آتش کی گئی ہیں اور یو میہ پچاس سے زیادہ لوگوں کو دفن کیا جار...

کورونا کی تباہ کاریاں اور حکومت کی لاچاری

پیپلزپارٹی کی جیت سے، کراچی کو کیا ملے گا؟ وجود - پیر 03 مئی 2021

کہنے کو تو یہ کراچی کے ایک چھوٹے سے حلقہ کا عام سا ضمنی انتخاب تھا، جو تحریک انصاف کے اُمیدوار فیصل واڈا کے اپنی نشست سے مستعفی ہونے کے بعد منعقد ہورہا تھا لیکن پاکستان کی تمام سیاسی جماعتوں نے حلقہ این 249 کے اِس ضمنی انتخاب میں جس قدر دلچسپی کا اظہار کیا، اُس کی وجہ سے اس ضمنی انتخاب کے نتائج کو ملک بھر میں بہت زیادہ اہمیت کی نگاہ سے دیکھا جارہاتھا۔ خاص طور پرپاکستانی الیکٹرانک میڈیا میں اِس ضمنی انتخاب کو حکومت اور اپوزیشن کے درمیان ایک فیصلہ کن معرکہ کے طور پر پیش کیا جار...

پیپلزپارٹی کی جیت سے، کراچی کو کیا ملے گا؟

توبہ کادروازہ وجود - اتوار 02 مئی 2021

عزت پر دولت کو ترجیح دینے والے ہزار عذرتراشیں ،لاکھ تاویلیں دیں ایک جھوٹ کو چھپانے کے لیے 100جھوٹ بولنا ہی پڑتے ہیں یہ الگ بات کہ کچھ منہ پر زیادہ سے بیشتر نجی محفلوں میں بڑے شرمناک تبصرے کرتے ہیں لیکن وہ کبوترکی طرح آنکھیں بندکرکے یہ سمجھ لیتے ہیں میں بلی کی نظروںسے چھپ گیا ہوں کسی کو کچھ پتہ نہیں چلا حالانکہ انہیں پتہ بھی نہیں چلتا وہ لوگوںکی نظروںسے کب گرجاتے ہیں اور نظروںسے گرنا بے حیائی سے کم نہیں۔درویش اپنے دھن میں کہے جارہا تھا اس کے چاروں اطراف لوگوںکا ہجوم تھا درویش...

توبہ کادروازہ

رمضان ’’مبارک‘‘ کیوں؟؟ وجود - اتوار 02 مئی 2021

دوستو، کورونا وائرس تو لگتا ہے رمضان المبارک میںمزید پھرتیاں دکھائے گا۔۔شرح اموات میں تیزی سے اضافہ ہوتا جارہا ہے۔۔ پڑوسی ملک کی تو حالت ہی خراب کرکے رکھ دی ہے کورونا نے۔۔ایک طرف پڑوسی ملک پہ برا وقت چل رہا ہے دوسری طرف ہمارے یہاں افطار اور سحر کے علاوہ سارا دن روزے دار بار بار گھڑیوں کی جانب دیکھ رہے ہوتے ہیں۔۔ہم بچپن میں اکثر اپنے ٹیچرز سے یہی سوال کیا کرتے تھے کہ ۔۔رمضان کو ’’مبارک‘‘ کیوں کہتے ہیں۔۔ جس پر ایک ہی جواب ملتا تھا کہ اس مہینے میں بے پناہ برکتیں، رحمتیں، نعمتیں ...

رمضان ’’مبارک‘‘ کیوں؟؟

کورونانے دنیاکوبدل کررکھ دیا وجود - هفته 01 مئی 2021

کہتے ہیں ہر مصیبت میں خیرکا کوئی نہ کوئی پہلو ضرورپوشیدہ ہوتاہے یہ ہوسکتاہے کئی لوگوںکے لیے اچنبھے کی بات ہو لیکن دنیابھرمیں خوف و ہراس اور لاکھوں ہلاکتوںکے باوجود ایک بات یقین سے کہی جاسکتی ہے کہ کوروناوائرس نے پوری دنیا کو بدل کررکھ یاہے ،یہی وجہ ہے کہ کورونا وائرس کے خاتمہ کے بعد کی دنیا ایک مختلف دنیا ہوگی یقینا کورونا ایک نئے عہد کو جنم دے رہا ہے یہ عہدکیساہوگا ،اس کے خدوخال سے متعلق یہ وثوق سے کہاجاسکتاہے کہ اب انسان کا رہن سہن، سوچ، عقیدے، معاشرت سمیت ہر چیز بدل جائے گ...

کورونانے دنیاکوبدل کررکھ دیا

بجٹ سے پہلے این آر او وجود - هفته 01 مئی 2021

عمران خان کسی کو این آر او نہ دینے کے لیے پُرعزم ہیں اوراپوزیشن قیادت سے رواسلوک سے عزم کی بخوبی عکاسی بھی ہوتی ہے لیکن آیا کیا وہ اپنی جماعت کے لیے بھی ایسے ہی خیالات رکھتے ہیں پر یقین کرنا مشکل ہے کیونکہ جہانگیرترین گروپ سے تعلق رکھنے والے اراکینِ قومی و صوبائی اسمبلی کے بظاہرمطالبات مسترد کرنے کے باوجود عزم میں تبدیلی کا اشارہ ملتا ہے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر رضوان کی تبدیلی عزم پر نظرثانی یہ بتانے کے لیے کافی ہے کہ حکومت اپنے لوگوں کے لیے نرم گوشہ رکھتی ہے او...

بجٹ سے پہلے این آر او

آئندہ الیکشن میں پیپلزپارٹی اور ٹائیگر فورس کاکردار وجود - هفته 01 مئی 2021

  پیپلزپارٹی نے سینیٹ میں اپوزیشن لیڈڑ کے لیے جوا کیوں کھیلا ؟ اس کی بہت سادہ سی وجہ ہے کہ حکومت کے سر پر آئندہ الیکشن میں اصلاحات متعارف کرانے کا’’بھوت ‘‘ سوارہے ۔ ان میں بھی سرفہرست الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے ذریعے الیکشن کروانا پہلی ترجیح ہے ۔ یہ کوئی مذاق تھوڑی ہے کہ وزیراعظم زبان ہلائیں اوریہ کام ہوجائے اس کے لیے پارلیمانی کمیٹی کاقیام ضروری ہوتاہے یعنی قومی اسمبلی اورسینیٹ کے ارکان پرمشتمل پارلیمانی کمیٹی کو یہ بل منظورکرکے بھجواناہے پھریہ بل دونوں ایوانوں میں بحث ...

آئندہ الیکشن میں پیپلزپارٹی اور ٹائیگر فورس کاکردار

ایتھوپیا میں جنم لیتا انسانی المیہ وجود - هفته 01 مئی 2021

(مہمان کالم) نکولس کرسٹوف وہ ایک عالمی ڈاکٹر ہے اور پچھلے کئی مہینوں سے کورونا جیسی مہلک عالمی وبا کے خلاف نبرد آزما ہے جبکہ نجی زندگی میں وہ ایک شدید اذیت سے گزر رہا ہے۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ٹیڈراس اپنا ذاتی دکھ خفیہ رکھے ہوئے ہیں اور عوام کے سامنے اپنی اذیت کا اظہار کرنے سے گریز کرتے ہیں مگرجب میں نے انہیں تھوڑا سا کریدا تو وہ پھوٹ پھوٹ کر رو دیے۔ڈاکٹر ٹیڈراس کا تعلق ایتھوپیا کے علاقے ٹیگرے سے ہے‘ یہ وہی علاقہ ہے جہاں نومبر سے ایتھوپیا اور ار...

ایتھوپیا میں جنم لیتا انسانی المیہ

جمعہ،جمعہ کا روزہ۔۔ وجود - جمعه 30 اپریل 2021

دوستو، رمضان المبارک کا ماہ مقدس اپنی تمام تر رحمتوں،برکتوں، فضیلتوں کے ہمراہ جاری و ساری ہے۔۔رمضان المبارک کا دوسرا عشرہ تیزی سے اختتام پزیر ہورہا ہے۔۔ روزوں کی کئی اقسام بھی ہمارے معاشرے میں مقبول عام ہیں، جیسے بچوں کے لیے ـ’’ چڑی‘‘ روزہ ہوتا ہے، اسی طرح کچھ لوگ جمعہ کے جمعہ روزے کو ترجیح دیتے ہیں، جیسے نماز ویسے تو پانچ وقت کی روزانہ فرض ہے لیکن پاکستانیوں کی اکثریت صرف جمعہ کے روز نماز پڑھ کر پورے ہفتے کی نماز بخشوا لیتے ہیں۔۔دفاتر میں کام کرنے والوں کی چونکہ اتوار کے روز...

جمعہ،جمعہ کا روزہ۔۔

پکوڑے نامہ وجود - جمعه 30 اپریل 2021

رمضان میں پکوڑے کس سن میں فرض ہوئے، اس حوالے سے ماہرین کی مختلف آرا ہیں۔ کچھ کا خیال ہے کہ امت مسلمہ پر یہ سعادت مغلوں کے دور میں نازل ہوئی۔ جنہیں نرم ، گرم اور لذیذ سوغاتوں سے دستر خوان کو آراستہ کرنے کا شوق تھا۔اس لیے یہ نیکی کا کام مغلوں کے دور میں رواج پایا ، ذائقہ منفرد اور چٹ پٹا ہونے کی بنا پر تھوڑے ہی عرصے میں یہ سوغات واجب اورپھرافطاری میں ’فرض‘ ہوگئی۔ فرض اس لیے کہا جاتا ہے کہ برصغیر کے گھروں میں افطار میں جس دن پکوڑے نہ ہوں،چاہے دنیا بھر کی سوغات ہوں،لیکن طوفان ک...

پکوڑے نامہ

امریکا کووڈ کے خاتمے میںمدد کر سکتا ہے وجود - جمعه 30 اپریل 2021

(مہمان کالم) مشیل گولڈ برگ   گزشتہ جولائی میں جوبائیڈن نے اپنی انتخابی مہم کے دوران یونیورسل ہیلتھ کیئر کے ایڈووکیٹ ایڈی برکان سے وعدہ کیا تھا کہ وہ کورونا وائرس کی ویکسین تک عالمی رسائی کے خلاف انٹلیکچوئل پراپرٹی قوانین کا استعمال کریں گے۔ برکان کا کہنا تھا ’’کووڈ کے علاج کے لیے عالمی تعاون کو فروغ دینے کی مہم میںعالمی ادارہ صحت غیر معمولی کردار ادا کر رہا ہے مگر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس کوشش میں شامل ہونے سے انکار کر دیا اور اس طرح امریکا کو باقی دنیا سے الگ تھلگ کر د...

امریکا کووڈ کے خاتمے میںمدد کر سکتا ہے

قرنطینہ مسلمانوں کی ایجادہے وجود - جمعرات 29 اپریل 2021

جب سے کورونا وائرس کا عذاب آیاہے ایک لفظ باربار سننے کو ملتاہے جسے قرنطینہ کہاجارہاہے کچھ لوگوں کو سمجھ نہیں آرہی یہ ہے کیا؟ دراصل یہ بھی ایک طرح کا طریقہ علاج ہے ،یہ اصطلاح کسی مہلک چھوت کے مرض میں،مبتلا، متاثرہ یا مشتبہ مریضوں کو سہولیات سے آراستہ ایک خاص مقام میں رکھنے کے لیے استعمال کی جاتی ہے تاکہ مرض کے پھیلائو کے خطرے کو روکنے کے لیے انتہائی احتیاط کی جائے اس میں متاثرہ یا مشتبہ مریض پرکہیں اور آنے جانے پر مکمل پابندی ہوتی ہے ،مریض کو قرنطینہ میں رکھنے کا مقصد یہ ہ...

قرنطینہ مسلمانوں کی ایجادہے

موت کی لہر وجود - جمعرات 29 اپریل 2021

  کورونا وائرس کی تیسری لہر میں کووڈ 19 بیماری کا پھیلاؤ بڑی تیزی سے جاری ہے، لیکن بدقسمتی کی بات یہ ہے کہ ہماری عوام اِس وبائی صورت حال سے نمٹنے کے لیے سنجیدگی کا مظاہرہ کرنے کے بجائے ، مسلسل مجرمانہ لاپرواہی کا مظاہرہ کررہی ہے۔ خاص طور پر ہمارا تاجر طبقہ رمضان المبارک اور عید کے سیزن میں زیادہ سے زیادہ پیسے اور منافع کمانے کے چکر میں کورونا سے متعلق اُٹھائے گئے حکومتی اقدامات اور فیصلوں کی اعلانیہ دھجیاں اُڑا نے میں مصروف ہے۔ جبکہ اگر حکومتی اہلکار کسی جگہ ایس او پ...

موت کی لہر

ملکی دفاع پر زہرافشانی ایک ایجنڈہ وجود - جمعرات 29 اپریل 2021

آج جنوبی ایشیا میں ہر چہار طرف کورونا کا بول بالا ہے، بھارت کی عدم احتیاطی و لاپرواہی کا فائدہ اٹھا کر یہ خطرناک جرثومہ اپنا خونی پنجہ نصب کرکے ہاہاکار مچانے میں کامیاب ہوگیا ہے نتیجتاً پڑوسی دیس قیامت صغریٰ کا منظر پیش کررہا ہے جسے دیکھ کر کلیجہ منہ کو آتا ہے، نفسا نفسی کا عالم ہے سب کو اپنی فکر پڑی ہے، لوگوں سے اپنوں نے منہ پھیر لیے ہیں حتیٰ خونی رشتے بھی آپس میں میل ملاپ کو تیار نہیں، کون کس حال میں ہے کسی کو کسی سے غرض نہیں، چتائیں تو اٹھ رہی ہیں لیکن ماتم و بین کرنے و...

ملکی دفاع پر زہرافشانی ایک ایجنڈہ

کوروناکی نئی اقسام کا چیلنج وجود - جمعرات 29 اپریل 2021

(مہمان کالم) ایرک ٹوپول کوروناوائر س کی ابھرتی ہوئی نئی اقسام کی خبریں جینیات سے آگہی رکھنے والے لوگوں کے لیے تشویشناک ثابت ہو سکتی ہیں۔وائرس سے متاثرہ افراد میں بھی اور جب یہ ایک فرد سے کسی دوسرے کو منتقل ہوتا ہے‘ اکثر ایسی تبدیلیاں رونما ہوتی رہتی ہیں‘اسی لیے اس قول کو (تھوڑی ترمیم کے ساتھ) یاد رکھنا بہت ضروری ہے کہ ’’کوروناکی تما م اقسام بے ضررہیں جب تک کہ وہ تباہ کن ثابت نہ ہوں‘‘۔SARS-CoV-2میں تقریباًتیس ہزار Basesیا نیوکلیوٹائڈزہوتے ہیں۔جب یہ وائرس پروان چڑھتا ہے ...

کوروناکی نئی اقسام کا چیلنج

غفلت نہیں احتیاط اور انتظامات وجود - بدھ 28 اپریل 2021

کورونا کی بے شمارنئی اقسام کی شناخت ہو چکی ہے مگر ماہرین اِس وائرس کی پانچ کے قریب اقسام کو انسانی صحت کے لیے زیادہ خطرناک اور مہلک قرار دیتے ہیں جو امیون سسٹم کو زیادہ تیزی سے متاثر کرتی ہیں کچھ اقسام کا تریاق ویکسین ایجاد ہو چکی لیکن اب بھی ایسی اقسام موجود ہیں جن کی تشخیص اور علاج میں دنیا کامیابی سے دورہے اسی لیے بیماری کا شکار ہونے والے مریضوں اور اموات کا سلسلہ بڑھتا جارہا ہے دنیا میں اموات کی شرح 2.12جبکہ ہماری کوتاہیوں کی وجہ سے پاکستان میں یہ شرح 2.16فیصد تک پہنچ چکی...

غفلت نہیں احتیاط اور انتظامات

کو ئٹہ دھماکا اور بدی کے سر چشمے وجود - بدھ 28 اپریل 2021

افغانستان جب تک امریکی تسلط، بھارتی اثر و نفوذ اور تخت کابل پر اشرف غنی اور ان جیسے دوسرے بیٹھے رہیں گے، تب تک افغانستان اور پاکستان میں امن کی صبح نمودار نہ ہوگی۔ کابل انتظامیہ کا جمہوری اور عوام کی حکمرانی کا نعرہ فریب ہے اور عوام دنیا کو ورغلانے کی ناکام کوشش ہے۔ دراصل یہ کابل کی سرزمین پر جھوٹوں، قابضین تخریب و فریب کاروں کا اکٹھ ہے۔ 29 فروری 2019ء کو دوحہ میں امریکا اور طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے پر دستخط نے انہیں کرب میں مبتلا کردیا ہے اور نئی دہلی کے حکمرانو...

کو ئٹہ دھماکا اور بدی کے سر چشمے

میرے ’’ٹڈ‘‘ میں آج کیا ہے؟ وجود - بدھ 28 اپریل 2021

دوستو، رمضان المبارک کا پہلا عشرہ تو الحمدللہ بخیروخوبی اختتام پذیر ہوچکا۔۔بلکہ جب آپ یہ تحریر پڑھ رہے ہوں گے تو آدھا رمضان پورا ہوچکا۔۔آج پندرھواں روزہ ہے۔۔ یعنی دوہفتے بعد عید ہوگی اور شیطان بھی آزاد ہوجائے گا۔۔ رمضان المبارک میں افطار اور سحر کے وقت جس طرح روزے دار سب کچھ ’’ہڑپنے‘‘ کی فکرمیں لاحق رہتے ہیں اور اس کے بعد جب پیٹ حددرجہ بھرجاتا ہے تو چلنے پھرنے سے بھی قاصر ہوجاتے ہیں۔۔ کچھ تو فوڈپوائزنگ کا شکار ہوجاتے ہیں۔۔پھر جب ڈاکٹر کے پاس جاکر کہتے ہیں۔۔میرے ’’ٹڈ‘‘(پیٹ...

میرے ’’ٹڈ‘‘ میں آج کیا ہے؟

مبارک اور خباثت وجود - منگل 27 اپریل 2021

پولیس میں کافی مثبت تبدیلیاں آرہی ہیں دیانتدار اور چھی شہرت کے مالک آفیسرز کی اہم عہدوں پر تعیناتی سے پولیس کا امیج بہتر ہورہا ہے اور لوگ اب یقین کرنے لگے ہیں کہ پولیس اسٹیشنوں میں انصاف ہوگا عام لوگوں کے دلوں میں سے پولیس کا ڈر اور خوف بھی کم ہوا ہے اسی وجہ سے لڑائی جھگڑے اور دیگر جرائم کی درخواستیں دینے میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے جو پولیس پر بڑھتے عوامی اعتماد کا مظہر ہے قبل ازیں کوئی جرم ہوتا تولوگ درخواست دینے کی بجائے یہ سوچ کر صبر وشکر کر لیتے کہ جو نقصان ہو ناتھا ...

مبارک اور خباثت

کیا بھارت میں جمہوریت کو بچایا جاسکتا ہے؟ وجود - منگل 27 اپریل 2021

(مہمان کالم) رام پنیانی مغربی بنگال کے انتخابات میں ترنمول کانگریس اور بی جے پی‘ جو بڑی دعویدار جماعتیں ہیں‘ نے انتخابی مہم میں غیرمعمولی طور پر شدت پیدا کی۔ نتیجتاً مغربی بنگال کا سیاسی درجہ حرارت بہت زیادہ بڑھ گیا۔ خاص طور پر بی جے پی نے اس ریاست میں اپنی تمام تر طاقت جھونک دی اور بقول ممتا بینرجی، بھاجپا اختیارات کے بے جا استعمال میں مصروف ہے۔ بی جے پی ہی نہیں بلکہ اس کی ملحقہ تنظیمیں اور سنگھ کے نظریات سے متفق دیگر گروپ بھی پوری طرح سرگرم دکھائی دیتے ہیں۔ ان کے مقاب...

کیا بھارت میں جمہوریت کو بچایا جاسکتا ہے؟