وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

امرت سر

جمعرات 15 اکتوبر 2015 امرت سر

urdu words

محترم عمران خان نیا پاکستان بنانے یا اسی کو نیا کرنے کی جستجو میں لگے ہوئے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے ایک نیا محاورہ بھی عنایت کردیا ہے۔10 اگست کو ہری پور میں خطاب کرتے ہوئے سانحہ قصور کے حوالے سے انہوں نے پُرجوش انداز میں کہا ’’میرا سر شرم سے ڈوب گیا‘‘۔ انہوں نے دو محاوروں کو یکجا کردیا۔ دیکھا جائے تو کوئی شخص اُس وقت تک پوری طرح نہیں ڈوبتا جب تک اس کا سر نہ ڈوبے۔ چُلّو بھر پانی میں ڈوبنا محاورہ تو ہے لیکن عملاً ممکن نہیں۔ ممکن ہے خان صاحب کو یہ کہنا اچھا نہ لگا ہو کہ ’’سر شرم سے جھک گیا‘‘۔ بہرحال‘ اخبارات میں جملے کی تصحیح ہوگئی۔

امرتسر میں ایک مخبوط الحواس کشمیری کو پکڑ کر بھارتی پولیس نے اُسے پاکستان کا جاسوس قرار دے دیا۔ ہمارے ایک ٹی وی چینل پر لطیفہ یہ ہوا کہ جو صاحب اس کی خبر دے رہے تھے انہوں نے’’ امرت سر‘‘ کے ٹکڑے بڑی بے دردی سے کردیے اور اسے ’’امر۔تسر‘‘ بنادیا۔ بھئی، جب امرتسر لکھا جائے گا تو ہمارے معصوم صحافی اسے امر۔ تسر ہی کہیں گے۔ اصل غلطی تو اُن کی ہے جو ملا کر لکھتے ہیں۔ یہ الگ بات کہ’ امرت سر‘ اب بھی پاکستان میں معروف ہے اور کئی لوگ یہ نسبت استعمال کرتے ہیں۔ امرت معنوی اعتبار سے اردو میں بھی مستعمل ہے۔ امرت دھارا پہلے ہر گھر میں ہوتا تھا، اب بھی بازار میں دستیاب ہے اور محاورے میں شامل ہوچکا ہے۔ امرت دھارا بہت سی بیماریوں میں مختلف بدرقات کے ساتھ استعمال ہوتا ہے۔ چنانچہ جو شخص مختلف مسائل میں کام آئے اُسے بھی امرت دھارا کہہ دیتے ہیں۔ عربی اور فارسی میں یہ تریاق ہے۔ امرت: آب حیات، اکسیر، بہت لذیذ، شیریں وغیرہ۔ اور ’’سر‘‘ کا مطلب ہے: دیوتا۔ تو امرت سر کا مطلب ہوا: ’’امرت کا دیوتا۔‘‘ ہم نے کہیں پڑھا تھا کہ ’’سر‘‘ ہندی میں ندی کو بھی کہتے ہیں۔ بہرحال امر۔تسر نہیں ہے۔ اب اگر اسی خبر کی پٹی میں یہ چل رہا تھا کہ کوئی ’’صبوت‘‘ نہیں ملا تو اس میں رپورٹر کی کوئی غلطی نہیں ہے۔

چلیے، ایک رپورٹر نے تو امرت سر کے ٹکڑے کردیے، لیکن جامعہ کراچی کی ایک استاد اکثر ٹی وی چینلز پر اپنا تجزیہ پیش کرتی رہتی ہیں۔ ان کے سر پر ہما کا سایہ ہے۔ وہ افغانستان کے معروف صوبے کنڑ کو ’’کن ٹر‘‘ کہہ رہی تھیں۔ لاہور سے جناب افتخار مجاز نے اطلاع دی ہے کہ گزشتہ پیر کے دن‘ ایک ٹی وی چینل پر 7 سالہ بچے کی لاش گندے نالے سے ملنے کی خبر دی جارہی تھی اور اس کے ساتھ جو پٹی چل رہی تھی اُس میں 7 سالہ بچے کو ’’نومولود ‘‘ قرار دیا جارہا تھا۔ یہ پٹی صبح سے شام تک یونہی چلتی رہی مگر کسی نے تصحیح نہیں کروائی۔ یہ تو واضح ہے کہ اس چینل میں کسی کو نومولود کا مطلب نہیں معلوم ہوگا۔ ایک اخبار میں 3 years old girl کا ترجمہ تین سالہ بوڑھی لڑکی چھپا۔ معلوم کرنے پر جواب ملا کہ OLD کا ترجمہ بوڑھی‘ پرانی نہیں ہوتا؟ اس میں غلط کیا ہے؟

ہم نے سطورِ بالا میں تریاق کا ذکر کیا ہے۔ اس کے بارے میں سعدی شیرازی کا یہ قول بہت مشہور ہے: تاتریاق از عراق آوردہ شود۔ بادگزیدہ مروہ شود۔

تریاق کے بارے میں ایک تحقیق یہ ہے کہ یہ یونان سے درآمدکیا گیا ہے۔ یونانی زبان میں اسے ’’شیر‘‘ کہتے ہیں جس کا مطلب ہے: درندہ، جنگلی جانور، زہریلا جانور۔ اسی سے مشتق اسم صفت ’’شیریاکے‘‘ ہے یعنی زہریلے جانور سے متعلق۔ بعد میں اس کا اطلاق اُس دوا پر بھی ہونے لگا جو زہریلے جانور کے کاٹے کے علاج کے لیے دی جائے۔ یہی یونانی لفظ عربی میں تریاق کی صورت میں داخل ہوا۔ اسی سے انگریزی میں THERIAC بنا جس کے معنی بھی تریاق کے ہیں۔ لیکن یہ اب متروک ہوچکا ہے۔ اسی لفظ کی ایک اور صورت TREACLE ہے۔ یہ پہلے تریاق کے معنی میں بولا جاتا تھا لیکن آج کل اس لفظ سے وہ شیرہ مراد ہے جو شکر کی تلچھٹ سے نکلتا ہے۔ اسے راب بھی کہتے ہیں۔ الفاظ نے اسی طرح سفر کیا ہے اور یہ بڑا دلچسپ سفر ہے۔

تریاق کے بارے میں ایک تحقیق یہ ہے کہ یہ یونان سے درآمدکیا گیا ہے۔ یونانی زبان میں اسے ’’شیر‘‘ کہتے ہیں جس کا مطلب ہے: درندہ، جنگلی جانور، زہریلا جانور۔

ایک مزے کی بات جو ہر اخبار میں نظر آتی ہے، وہ ہے ’’صوبائی وزیراعلیٰ‘‘۔ کیا وفاقی یا مرکزی وزیراعلیٰ بھی ہوتا ہے؟ صرف وزیراعلیٰ لکھنے سے تسلی نہیں ہوتی۔ ہمارے خیال میں تو وزیراعلیٰ صوبے ہی کا ہوتا ہے۔ ایک اخبار کے اداریے میں ایک جملہ ہے ’’سپریم کورٹ نے ہر پہلوؤں کا جائزہ لیا‘‘۔ ہم نے شاید پہلے بھی لکھا ہے کہ ’’ہر‘‘ اور ’’کسی‘‘ کے ساتھ واحد آنا چاہیے یعنی ’’ہر پہلو کا جائزہ‘‘ لکھنا کافی ہے۔ ایک بڑے عالم فاضل اور ایک دینی جماعت کے سربراہ کے مضمون میں ایک جملہ ہے ’’خطِ تنسیخ پھیر دی گئی‘‘۔ اور بھی کئی لوگ مذکر‘ مونث کا تعین دوسرے لفظ سے کرتے ہیں۔ تنسیخ چونکہ مونث ہے‘ اس لیے مضمون نگار نے ’’پھیر دی گئی‘‘ لکھا۔ جب کہ اس کا تعلق’’خط‘‘ سے ہے اور خط مذکر ہے۔

ادارہ یادگارِ غالب‘ کراچی ’’غالب‘‘ کے نام سے ایک مؤقر جریدہ شائع کرتا ہے جس میں اردو کے بڑے معتبر ادیبوں کی تخلیقات شامل ہوتی ہیں۔ تازہ ترین شمارہ نمبر 23 محترم ملک نواز احمد اعوان کے توسط سے ملا ہے۔ اس میں یوں تو سارے ہی مقالے اور مضامین پڑھنے کے قابل ہیں لیکن خالد حسن قادری کا سلسلۂ مضمون ’’الفاظ کا طلسم‘‘ خاصے کی چیز ہے۔ اس کا ذکر پہلے بھی آیا ہے۔ زیرنظر شمارے میں اس طلسم کو مزید آگے پھیلایا گیا ہے۔

خالد حسن قادری لکھتے ہیں کہ اردو کا مزاج بنیادی طور پر شہری ہے۔ یہ شہری مزاج ہونا اس کی خوبی بھی ہوسکتی ہے اور خامی بھی۔ الفاظ کا طلسم میں خالد حسن قادری نے کئی تقریباً متروک الفاظ کو زندہ بھی کیا ہے مثلاً ’’جھوجھرے پڑنا‘‘۔ سند میں میر تقی میرؔ کا شعر:

وہ دن کہاں کہ مست سر انداز خُم میں تھے
سراب تو جھوجھرا ہے شکستہ سبو کی طرح

سچی بات ہے کہ ہم نے پہلے کہیں یہ لفظ سنا نہ پڑھا۔ مطلب ہے ’’بال پڑے ہوئے برتن کی سی آواز‘ ٹھس آواز‘ کپڑے سینے میں اگر سلائی میں زیادہ جھول رہ جائے تو اس موقع پر بھی جھوجھرے پڑنا کہتے ہیں۔ اب خدا جانے میر صاحب کے سر میں کیا جھول رہ گیا یا بال پڑ گیا۔ بال پڑنا تو معلوم ہی ہے کہ چینی یا مٹی کے برتن میں بے احتیاطی کے سبب باریک سی لکیر پڑ جاتی ہے، اس سے وہ برتن ناقابلِ استعمال سمجھا جاتا ہے۔ قدیم اردو کا لفظ جھوجھرا یا جھوجھڑا انہی معنی میں ہے یعنی ٹوٹا ہوا‘ بال پڑا ہوا برتن۔ بجاکر دیکھیں تو کھنکھناتی ہوئی آواز نہ نکلے۔ یہ بال دل میں بھی پڑ جاتا ہے اور تعلقات میں بھی بال آجاتا ہے۔ بال آنکھ میں بھی پڑ جاتا ہے لیکن سور کا بال نہیں ہونا چاہیے۔

اور کئی ایسے الفاظ جو بھلائے جاچکے ہیں‘ خالد حسن نے ان کو زندہ کیا ہے۔ مثلاً چیت‘ اچیت‘ دوال‘ دوالی‘ چھیجنا (چھی جُنا) وغیرہ۔ دلچسپ مضمون ہے۔ گاہے گاہے اس سے استفادہ ہوتا رہے گا، اس میں کوئی اَڑچن بھی نہیں۔


متعلقہ خبریں


تحریک انصاف دھرنا ..مسلم لیگ نون نے نفسیاتی جنگ شروع کردی! نجم انوار - جمعرات 20 اکتوبر 2016

اخبارات میں مختلف خبروں اور تجزیوں کے ذریعے دھرنے کے شرکاکیخلاف سخت کارروائی کے اشارے دیے جائیں گے عمران خان کے لیے یہ"مارو یا مرجاؤ" مشن بنتا جارہا ہے، دھرنے میں اْن کے لیے ناکامی کا کوئی آپشن باقی نہیں رہا مسلم لیگ نون کی حکومت نے تحریک انصاف کے دھرنے کے خلاف ایک طرح سے نفسیاتی محا ذ کھولنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ گزشتہ دھرنے کے بالکل برعکس مسلم لیگ نون کے حلقوں میں بھی یہ سوچ پروان چڑھ رہی ہے کہ اگر عمران خان دھرنے کے حوالے سے عوامی ہلچل پیدا کرنے میں کامیاب ہوگئے اور اْنہوں ...

تحریک انصاف دھرنا ..مسلم لیگ نون نے نفسیاتی جنگ شروع کردی!

سیاسی قائدین کا اجلاس‘ عمران خان اور اسفند یار کی عدم شرکت سے کیا پیغام گیا؟ عارف عزیز پنہور - منگل 04 اکتوبر 2016

پارلیمان میں نمائندگی رکھنے والی سیاسی جماعتوں کے قائدین کے ساتھ وزیراعظم نواز شریف کے اہم مشاورتی اجلاس میں پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، جمعیت العلمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن، جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق، متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی اور نیشنل پارٹی کے صدر میر حاصل بزنجو شریک ہوئے، تاہم پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور عوامی نیشنل پارٹی کے صد...

سیاسی قائدین کا اجلاس‘ عمران خان اور اسفند یار کی عدم شرکت سے کیا پیغام گیا؟

عمران خان نے تنہا میدان مار لیا، محرم بعد اسلام آباد بند، عمران خان کا اعلان وجود - هفته 01 اکتوبر 2016

تحریک انصاف اندرونی انتشار اوربیرونی دباؤ کے باوجود عمران خان کی قیادت میں رائیونڈ میں نہ صرف ایک بڑا جلسہ کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے بلکہ رائیونڈ سے حکومت چلانے والے شریف برادران کے لیے خطرے کی گھنٹی بھی بجانے میں کامیاب ہو گئی ہے۔ کسی بھی ابہام کے بغیر یہ ایک تسلیم شدہ حقیقت ہے کہ عمران خان پاکستان کے واحد رہنما ہے جو اب بڑے عوامی جلسوں کے کامیاب انعقاد کی کشش رکھتے ہیں۔ ایک ایسے وقت میں جب عمران خان نے انصاف یوتھ ونگ کو معطل کردیا تھا۔ جسٹس وجیہہ الدین نے تحریک انصاف سے عل...

عمران خان نے تنہا میدان مار لیا، محرم بعد اسلام آباد بند، عمران خان کا اعلان

عمران خان کو سیاست آگئی، شیخ رشید کے مشورے سنتے ہیں مانتے نہیں انوار حسین حقی - منگل 20 ستمبر 2016

تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے جیسے ہی رائے ونڈ مارچ کیلئے 30 ستمبر کی تاریخ کا اعلان کیا ہے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے رائے وانڈ مارچ کے دوران عمران خان کے شانہ بشانہ رہنے کا اعلان کردیا، شیخ رشید احمد 2013ء کے عام انتخابات کے بعد سے ماضی کی رنجشیں بھُلا عمران خان کا اُسی بھرپور انداز میں ساتھ دے رہے ہیں جس طرح وہ ’’سید پرویز مشرف‘‘ کی ہمنوائی بلکہ تابعداری کیا کرتے تھے۔ اس سارے عرصہ میں شیخ رشید احمد شریف برادران کی اُسی طرح مخالفت کرتے چلے آئے ہیں جس ط...

عمران خان کو سیاست آگئی، شیخ رشید کے مشورے سنتے ہیں مانتے نہیں

عمران خان نیازی کا سیف اللہ نیازی انوار حسین حقی - پیر 19 ستمبر 2016

عمران خان اپنی ذاتی دیانت کی وجہ سے ناقابلِ تسخیر ہیں۔ فرانس کے چارلس ڈیگال کی طرح ان کے کارکن ان کے سیاسی نظریات کے بجائے ان کی ذات سے زیادہ متاثر ہیں۔ امریکی صدر رچرڈ نکسن نے چارلس ڈیگال کے حوالے سے لکھا ہے کہ ’’انہیں اچھی طرح احساس تھا کہ لیڈر کو اکیلے سوچنے کی خاطر وقت نکالنا نہایت ضروری ہے۔ تمام اُمور میں بڑے فیصلے ڈیگال خودکرتے۔ کسی خاص مسئلہ کے بارے میں پہلے وہ تمام اخبارات اور مواد منگواتے اور مسئلہ کی تمام تفاصیل جہاں کہیں سے بن پڑتا جانتے تب وہ اپنے وزراء سے مطالعہ ...

عمران خان نیازی کا سیف اللہ نیازی

عمران خان کا 24 ستمبر کو رائیونڈ مارچ کا اعلان وجود - بدھ 07 ستمبر 2016

تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کراچی کے نشتر پارک میں ایک عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وہ پورے ملک سے عوام کو لے کر 24 ستمبر کو رائیونڈ جائیں گے۔ اُنہوں نے واضح الفاظ میں کہا کہ پوری قوم کو مل کر وزیراعظم نواز شریف سے کرپشن پر جواب لینا ہوگا ۔ عمران خان کا یہ بھی کہنا تھا کہ کرپشن ٹھیک کرنے کیلئے پہلے اداروں کو ٹھیک کرنا ہوگا۔ عمران خان نے کراچی میں اچانک جلسہ منعقد کرنے کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ اُنہوں نے متحدہ کے بانی الطاف حسین کی اشتعال انگیزگفتگو کے ب...

عمران خان کا 24 ستمبر کو رائیونڈ مارچ کا اعلان

عید کے بعد رائیونڈ جائیں گے، ایف بی آر تحقیقات نہیں کررہا: عمران خان وجود - اتوار 04 ستمبر 2016

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے پاناما لیکس پر حزب اختلاف کے ضوابط کار ( ٹی او آر ) کاجواب نہ دینے پر عید کے بعد رائیونڈ جانے کا اعلان کردیا ہے۔ عمران خان کی سربراہی میں لاہور کے علاقے شاہدرہ سے تحریک انصاف کا احتساب مارچ چیئرنگ کراس پہنچا، راستے میں احتساب مارچ میں تحریک انصاف کے کارکنان بڑی تعداد میں شرکت کرتے رہے۔ جن سے عمران خان نے مختلف مقامات پر مختصر خطاب کیے۔ عمران خان کے ہمراہ کنٹینر پر جہانگیر ترین، شاہ محمود قریشی اور چوہدری سرور سمیت دیگر رہنما بھی مو...

عید کے بعد رائیونڈ جائیں گے، ایف بی آر تحقیقات نہیں کررہا: عمران خان

عمران خان کا پاناما لیکس پر عدالت عظمیٰ جانے کا اعلان وجود - بدھ 17 اگست 2016

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے پاناما لیکس کے معاملے پر سپریم کورٹ جانے اور 3 ستمبر سے پاکستان مارچ کا اعلان کردیاہے۔ عمران خان نے بنی گالہ میں ذرائع ابلاغ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ نوازشریف نے کرپشن کا پیسہ بیرونِ ملک بھیجا جس کے خلا ف ہم الیکشن کمیشن میں جاچکے ہیں اور اب عدالت عظمیٰ میں منی لانڈرنگ کے ثبوت لے کرجارہے ہیں جس کے لیے پٹیشن تیار کرلی گئی ہے، کل پاناما لیکس کے ضوابط کار (ٹی اور آرز ) کی میٹنگ کے بعد سپریم کورٹ جائیں گے۔ انہوں نے عوامی سطح پر احتجاج کی حکمت ...

عمران خان کا پاناما لیکس پر عدالت عظمیٰ جانے کا اعلان

تحریک انصاف کی تحریک احتساب: خدشات، امکانات باسط علی - پیر 08 اگست 2016

تحریک انصاف نے 7 اگست کو زبردست جوش وخروش سے تحریک احتساب کا آغاز کردیا ہے۔ پاناما لیکس کے تناظر میں وزیراعظم نوازشریف کے احتساب کے بنیادی مطالبے سے شروع ہونے والی اس تحریک کو عوام اور فعال طبقات میں دراصل نوازشریف کی رخصتی کی تحریک سمجھا جارہا ہے۔ جس کے مستقبل اور نتیجہ خیزی کو عمران خان کے ماضی کے دھرنے کے انجام سے منسلک کرکے دیکھا جارہا ہے۔ جب عمران خان نے 17 دسمبر 2014 کو 126 روز (تقریباً چار ماہ) کادھرنا آرمی پبلک اسکول کے سانحے کے باعث پُرنم آنکھوں سے ختم کرنے کا اعلان ...

تحریک انصاف کی تحریک احتساب: خدشات، امکانات

نیب کا امتحان: تحریک انصاف نے نوازشریف اور اُن کے اہل خانہ کے خلاف ریفرنس دائر کردیا! وجود - منگل 26 جولائی 2016

پاکستان تحریک انصاف نے وزیراعظم نواز شریف اور ان کے اہل خانہ کے خلاف قومی احتساب بیورو (نیب) میں مبینہ کرپشن الزامات کے تحت ریفرنس دائر کردیاہے۔ اس طرح تحریک انصاف نے مختلف قومی اداروں کے ذریعے ایک حکمت عملی کے تحت شریف خاندان کا تعاقب شروع کردیا ہے۔تحریک انصاف کے دائر کردہ ریفرنس میں پاناما لیکس اور تحریک انصاف کے فراہم کردہ حقائق کی روشنی میں نیب سے تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ تحریک انصاف کے ترجمان نعیم الحق اور سیف اللہ نیازی نے دارالحکومت اسلام آباد میں نیب کے صدر د...

نیب کا امتحان: تحریک انصاف نے نوازشریف اور اُن کے اہل خانہ کے خلاف ریفرنس دائر کردیا!

تحریک انصاف کا حکومت کے خلاف ملک گیر تحریک شروع کرنے کااعلان وجود - جمعرات 21 جولائی 2016

تحریک انصاف نے بآلاخر مسلم لیگ نون کے خلاف ملک گیر تحریک 7 اگست سے شروع کرنے کا اعلان کردیا۔ اس سے قبل تحریک انصاف 25 جولائی کو نیب کے خلاف بھی بھرپوراحتجاج کرے گی۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ اگر ملک میں وزیراعظم کا احتساب نہیں ہوگا ، تو پھر کسی کا نہیں ہوگا۔ حکومت حزب اختلاف کے ضوابط کار(ٹی او آرز) نہیں مانے گی، کیونکہ وہ احتساب نہیں چاہتی۔ نوازشریف ملک کے چار قوانین توڑنے کے مرتکب ہوئے ہیں، اس لیے وہ احتساب سے خوف زدہ...

تحریک انصاف کا حکومت کے خلاف ملک گیر تحریک شروع کرنے کااعلان

عمران خان کی ہمشیرہ کی گاڑی کی ٹکر کا معاملہ: حکمران اشرافیہ مکمل ننگی ہوگئی! وجود - هفته 02 جولائی 2016

عمران خان کی ہمشیرہ نے آج ذرائع ابلاغ کے سامنے یہ دعویٰ کیا کہ میں بچوں کے ہمراہ گلبرگ سے گزر رہی تھی اس دوران میں ایک وی آئی پی شخصیت کے اسکواڈ میں شامل پولیس وین نے سامنے سے ان کی گاڑی کو ٹکر ماری جس پر میں گاڑی سے اتری تو ہمیں سڑک سے ایک طرف ہٹا دیا گیا اور مسلح اہلکاروں نے مجھ پر اور بچوں پر بندوقیں تان لیں۔ انہوں نے کہا کہ پروٹوکول میں شامل دوسری گاڑی ہمارے قریب آکر رکی جس میں سوار اہلکاروں نے ہمیں ہراساں کرنے کی کوشش کی۔ عمران خان کی ہمشیرہ نے خود پروٹوکول والوں سے است...

عمران خان کی ہمشیرہ کی گاڑی کی ٹکر کا معاملہ: حکمران اشرافیہ مکمل ننگی ہوگئی!