وجود

... loading ...

وجود

”ان فضاؤں سے آگے“، تاریخ کے 9 تیز ترین ہوائی جہاز

پیر 21 ستمبر 2015 ”ان فضاؤں سے آگے“، تاریخ کے 9 تیز ترین ہوائی جہاز

“ہے جستجو کہ خوب سے ہے خوب تر کہاں، ” ہمیشہ اسی لگن نے انسان کو نئے کارناموں پر آمادہ کیا ہے۔ بیسویں صدی کے اوائل میں فضاء میں اڑان بھرنے کی خواہش کیا مکمل ہوئی، چند ہی دہائیوں میں آواز سے بھی کئی گنا زیادہ رفتار سے چلنے والے جہاز تک آ گئے۔ اس میدان میں، بلکہ فضاء میں، انسان نے بہت تیزی سے ترقی کی ہے۔ برق رفتار طیارے انجینئرنگ کا شاہکار بھی ہیں اور ا س رفتار پر قابو پاتے ہوئے پائلٹوں کے فن کے عکاس بھی۔

تاریخ کے تیز ترین طیاروں میں سے بیشتر اب ریٹائر ہو چکے ہیں اور عجائب گھروں کی زینت بنے ہوئے ہیں لیکن اب بھی انہیں سب سے زیادہ رفتار کے ساتھ اڑائے جانے والے طیاروں میں شمار کیا جاتا ہے۔ آئیے، تاریخ کے 9 تیز ترین طیاروں پر نظر ڈالتے ہیں۔

ایف-4 فینٹم II

F-4-Phantom-II

زیادہ سے زیادہ رفتار: 1472 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 27 مئی 1958ء

امریکا کا ایف-4 فینٹم II جیٹ طیارہ دراصل صرف امریکی بحریہ کے لیے تیار کیا گیا تھا۔ 1960ء میں اپنی خدمات پیش کرنے کے بعد اسی کی دہائی کے وسط تک یہ امریکی فضائیہ اور میرین کور میں بھی شامل ہوگیا۔ ایف-4 اٹھارہ ہزار پونڈ سے زیادہ وزنی ہتھیار لے جانے کی صلاحیت رکھتا تھا۔ ان میں فضاء سے فضاء اور فضاء سے زمین پر مار کرنے والے میزائل اور متعدد اقسام کے بم بھی شامل تھے۔ ایف-4 نے ویت نام جنگ میں اہم ترین لڑاکا طیارے کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ بعد میں آہستہ آہستہ اس کی جگہ ایف-15 اور ایف-18 نے لے لی۔

کونویئر ایف-106 ڈیلٹا ڈارٹ

Convair-F-106-Delta-Dart

زیادہ سے زیادہ رفتار: 1525 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 25 دسمبر 1956ء

1959ء میں عملی میدان میں اترنے والا کونویئر ایف-106 سرد جنگ کے دوران روسی بمبار طیاروں کو راستے میں گھیرنے اور تباہ کرنے کے لیے تیار کیا گیا تھا۔ ایف-106 واحد انجن کا حامل اب تک کا تیز رفتار ترین طیارہ ہے۔ اس نے 1525 میل فی گھنٹے کی رفتار سے پرواز کرکے جو ریکارڈ قائم کیا تھا،وہ واحد انجن کے طیاروں کے لیے آج بھی برقرار ہے۔

مکویان مگ-31 فوکس ہاؤنڈ

Mikoyan-MiG-31-Foxhound

زیادہ سے زیادہ رفتار: 1860 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز:16 ستمبر 1975ء

6 مئی 1981ء کو پہلی بار فوجی خدمات کے لیے پیش کیا گیا سوویت یونین کا مگ-31 طیارہ اب بھی تیز ترین لڑاکا طیاروں میں سے ایک ہے۔ یہ آج بھی روسی اور قازقستان کی فضائیہ کا حصہ ہے۔اتنا زیادہ عرصہ خدمات انجام دینے کے بعد روس اسے 2030ء تک فضائیہ میں شامل رکھنا چاہتا ہے۔

مکویان یی-152

Mikoyan-Ye-152

زیادہ سے زیادہ رفتار: 1883 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 10 جولائی 1959ء

یی-152 پہلی بار 1959ء میں متعارف کروایا گیا تھا۔ یہ یی-150 کی جدید شکل تھی اور اس کی خاص بات یہ تھی کہ اس نے مکویان-گوریوِچ میگ-25 کی راہ ہموار کی۔

ایکس بی-70 والکیری

XB-70-Valkyrie

زیادہ سے زیادہ رفتار: 2056 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 21 ستمبر 1964ء

امریکا نے جوہری ہتھیار لے جانے کے قابل بی-70 طیارے بنانے کے لیے تجرباتی طور پر ایکس بی-70 طیارے بنائے تھے۔ یہ بمبار طیارہ آواز سے تین گنا زیادہ رفتار کے ساتھ اڑتے ہوئے انتہائی بلندی سے اہداف پر بمباری کرنے کی صلاحیت رکھتا تھا۔ لیکن سوویت میزائل دفاع میں بہتری اور بین البراعظمی بیلسٹک میزائل سسٹم کے بڑھتے ہوئے کردار نے اس طیارے کی ضرورت ہی ختم کردی۔ یوں باضابطہ پیداوار سے قبل ہی اس منصوبے کا خاتمہ کردیا گیا۔ اس طرز کے صرف دو تجرباتی ایکس بی-70 پروٹوٹائپ مکمل ہوپائے تھے۔ جنہیں تیز رفتار پروازوں کے لیے جانچ کے طور پر استعمال کیا جاتا رہا۔

بیل ایکس-2 “اسٹار بسٹر”

Bell-X-2-Starbuster

زیادہ سے زیادہ رفتار: 2094 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 18 ستمبر 1955ء

انتہائی تیز رفتار، آواز کی رفتار سے 3 گنا زیادہ تیزی سے سفر کرنے والا ایکس-2، نومبر 1955ء سے لے کر ستمبر 1956ء تک مختصر عرصے دوران پرواز رہا۔ یہ طیارہ 27 ستمبر 1956ء کو اپنی زیادہ سے زیادہ رفتار 2094 کلومیٹر تک پہنچا۔ لیکن کچھ ہی دیر بعد تباہ ہوگیا جس میں پائلٹ ملبرن ایپٹ بھی مارے گئے۔ ملبرن آواز کی رفتار سے تین گنا زیادہ تیزی سے، یعنی ماک 3 سے، پرواز کرنے والے پہلے انسان بنے اور کچھ ہی دیر میں لقمہ اجل بھی بن گئے۔

مکویان-گوریوچ مگ-25 فوکس بیٹ

Mikoyan-Gurevich-MiG-25-Foxbat

زیادہ سے زیادہ رفتار: 2170 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 6 مارچ 1964ء

سوویت مگ-25 پہلی بار 1970ء میں متعارف کروائے گئے تھے، جو سپر سونک لڑاکا اور جاسوس طیارے تھے۔ زیادہ وزن کی وجہ سے اس کے پر پھیلے ہوئے اور بڑے تھے اور اس کی زیادہ سے زیادہ رفتار ماک 3.2 تھی لیکن انجن کو نقصان پہنچائے بغیر یہ رفتار برقرار رکھنا مشکل تھا۔ اس کی زیادہ سے زیادہ رفتار، جس پر نقصان نہ پہنچے، 1920 میل فی گھنٹہ یعنی ماک 2.83 تھی۔

ایس آر-71 بلیک برڈ

SR-71-Blackbird

زیادہ سے زیادہ رفتار: 2200 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 22 دسمبر 1964ء

عملی، موثر اور بہت ہی تیز رفتار، لاک ہیڈ مارٹن کے ایس آر-71 سے زیادہ شاید ہی کسی طیارے نے شہرت پائی ہو۔ یہ طیارہ ایک عجوبہ ہے۔ 80 ہزار فٹ سے زیادہ بلندی پر 2 ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے بھی تیزی سے اڑنے والا یہ طیارہ 30 سال تک محو پرواز رہا۔ بسا اوقات تو یہ خود پر داغے گئے طیارہ شکن میزائلوں کو بھی پیچھے چھوڑ دیتا تھا۔

جب آخری پرواز کے لیے اسے امریکا کے مغربی ساحل پر واقع لاس اینجلس سے مشرقی ساحل کے قریب دارالحکومت واشنگٹن ڈی سی جانا پڑا تو اس نے تقریباً 3700 کلومیٹر کا فیصلہ صرف 67 منٹوں میں طے کیا۔

ایکس-15

X-15

زیادہ سے زیادہ رفتار: 4520 میل فی گھنٹہ

پہلی پرواز: 8 جون 1959ء

کسی بھی پائلٹ کا اڑایا گیا دنیا کا تیز ترین طیارہ راکٹ کی طاقت سے چلنے والا ایکس-15 تھا۔ ایکس-15 پہلی بار 8 جون 1959ء کو اڑایا گیا تھا جب اسے 45 ہزار فٹ کی بلندی سے ایک اور طیارے سے چھوڑا گیا۔ چند سال بعد 3 اکتوبر 1967ء کو ایکس-15 نے 4520 میل فی گھنٹہ یعنی ماک 6.72 کی رفتار سے پرواز کرکے اگلے پچھلے تمام ریکارڈ توڑ دیے۔ ایکس-15 نے کل 199 پروازیں کیں، جس کے بعد 300 ملین ڈالرز کے اس منصوبے کا خاتمہ کردیا گیا۔


متعلقہ خبریں


دیوہیکل سیارچہ زمین کی طرف بڑھ رہا ہے، ناسا وجود - هفته 14 مئی 2022

امریکی خلائی ادارے ناسا نے خبردار کیا ہے کہ ایک دیوہیکل سیارچہ زمین کی طرف بڑھ رہا ہے۔ناسا کے سائنسدانوں کے مطابق، دیوہیکل سیارچہ 388945 (2008 TZ3) 16مئی کو 2 بجکر 48 منٹ پر ہمارے سیارے کے بہت قریب ہوگا، اس سیارچیکی چوڑائی 1,608 فٹ ہے۔ناسا نے یہ بھی بتایا کہ اگر کوئی سیارچہ زمین ...

دیوہیکل سیارچہ زمین کی طرف بڑھ رہا ہے، ناسا

روسی خلائی ایجنسی کا ناسا سے تعاون معطل کرنے کا اعلان وجود - اتوار 03 اپریل 2022

روسی خلائی ایجنسی روسکوسموس کے سربراہ ڈمتری روگوزین نے کہا ہے کہ روس بین الاقوامی خلائی اسٹیشن میں اپنا تعاون معطل کر رہا ہے۔عالمی میڈیا کے مطابق روگوزین نے کہا کہ روس ناسا، یورپی اسپیس ایجنسی (ای ایس اے)اور کینیڈین اسپیس ایجنسی (سی ایس اے)کے ساتھ اپنی شراکت کو بھی معطل کردے گا۔ر...

روسی خلائی ایجنسی کا ناسا سے تعاون معطل کرنے کا اعلان

دنیا کی مہنگی ترین دوربین نے ستاروں کی پہلی تصویر کھینچ لی وجود - اتوار 13 فروری 2022

امریکی خلائی تحقیقی ادارے ناسا نے جیمس ویب اسپیس ٹیلی اسکوپ کی کھینچی ہوئی پہلی آزمائشی تصویر جاری کردی۔ میڈیارپورٹس کے مطابق یہ تصویر شمالی آسمان کے مشہور جھرمٹ دب اکبر (بڑے ریچھ)کے ستاروں کی ہے جن میں سے اہم ستارہ ایچ ڈی 84406 ہے جو ہماری زمین سے 258 نوری سال دور ہے۔ (یعنی اس س...

دنیا کی مہنگی ترین دوربین نے ستاروں کی پہلی تصویر کھینچ لی

خلائی مخلوق سے ممکنہ ملاقات، ناسا نے مذہبی پیشواؤں کی خدمات حاصل کرلیں وجود - پیر 03 جنوری 2022

امریکی خلائی تحقیقی ادارے ناسا نے ایک نئے پروگرام کے تحت 24 مذہبی پیشواؤں کی خدمات حاصل کرلی ہیں جن میں مسلمانوں، عیسائیوں اور یہودیوں کے علاوہ دیگر مذاہب کے پیشوا بھی شامل ہیں۔ تقریبا ایک سال تک جاری رہنے والے اس پروگرام کا مقصد خلائی مخلوق سے رابطے کی صورت میں مذہبی نقطہ نگاہ ک...

خلائی مخلوق سے ممکنہ ملاقات، ناسا نے مذہبی پیشواؤں کی خدمات حاصل کرلیں

رواں سال کا آخری چاند گرہن 19 نومبر کو ہوگا وجود - منگل 09 نومبر 2021

رواں سال کا آخری جزوی چاند گرہن 19 نومبر کو ہوگا۔ امریکی ادارے ناسا کے مطابق جزوی چاند گرہن 3 گھنٹے 28منٹ تک جاری رہے گا اور شمالی، جنوبی امریکا، مشرقی ایشیا، آسٹریلیا، پیسیفک ریجن میں دیکھا جاسکے گا۔ چاند گرہن اس صدی کا طویل ترین جزوی چاند گرہن ہوگا۔

رواں سال کا آخری چاند گرہن 19 نومبر کو ہوگا

12 ہزار فضائی حملوں میں صرف 41 شہری مرے، امریکا کا انوکھا اعتراف وجود - هفته 23 اپریل 2016

امریکا نے اعتراف کیا ہے کہ گزشتہ پانچ ماہ کے دوران عراق و شام میں داعش کے خلاف فضائی کارروائیوں میں 20 شہری مارے گئے ہیں، جس سے امریکی حملے میں ہلاک ہونے والے عام شہریوں کی تعداد 41 تک پہنچ گئی ہے۔ لیکن مبصرین نے اسے مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ درحقیقت یہ تعداد کہیں زیادہ ہے۔ کیونک...

12 ہزار فضائی حملوں میں صرف 41 شہری مرے، امریکا کا انوکھا اعتراف

امریکی فضائیہ کو عام شہری آبادیوں پر حملے کی کھلی اجازت مل گئی وجود - جمعرات 21 اپریل 2016

امریکا داعش کے خلاف فضائی حملوں میں شہریوں کی ہلاکت کی ہمیشہ تردید کرتا رہا ہے لیکن تازہ ترین کارروائیوں میں تو انہیں یہ اجازت تک مل چکی ہے کہ وہ ہر حملے میں زیادہ سے زیادہ کتنے شہریوں کو مار سکتے ہیں۔ جی، یہ خاص اجازت پینٹاگون کی جانب سے دی گئی ہے اور حملے کے لیے اختیار بھی اعلی...

امریکی فضائیہ کو عام شہری آبادیوں پر حملے کی کھلی اجازت مل گئی

شام میں امریکی حملہ، متعدد القاعدہ رہنما مارے گئے وجود - جمعرات 07 اپریل 2016

امریکا نے ایک غیر معمولی قدم اٹھاتے ہوئے شام میں القاعدہ سے منسلک رہنماؤں پر فضائی حملہ کیا ہے جس میں ایک اطلاع کے مطابق تنظیم کی شامی شاخ کے ترجمان سمیت متعدد عہدیدار مارے گئے ہیں۔ پینٹاگون کے ترجمان میتھیو ایلن نے کہا ہے کہ میں تصدیق کر سکتا ہے کہ امریکا نے ایک ایسی گاڑی پر...

شام میں امریکی حملہ، متعدد القاعدہ رہنما مارے گئے

جدید تہذیب کا خاتمہ یقینی ہوچکا ہے، سائنسی تحقیق وجود - منگل 29 مارچ 2016

ایک نئی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ جدید تہذیب کے پاس محض چند دہائیاں ہی بچی ہیں جس میں وہ اپنی بقا کے لیے کچھ کر سکتی ہے، بصورت دیگر ہمارے پاس جو کچھ ہے، اور جو بھی ہمیں معلوم ہے، بکھرنا شروع ہو جائے گا اور بالآخر جدید تہذیب کا ہی خاتمہ ہو جائے گا۔ یہ رپورٹ یونیورسٹی آف میری لین...

جدید تہذیب کا خاتمہ یقینی ہوچکا ہے، سائنسی تحقیق

ماتحت خاتون افسر سے "غیر پیشہ ورانہ تعلق"، امریکی فضائیہ کے جرنیل کی چھٹی وجود - هفته 19 مارچ 2016

امریکی فضائیہ نے اعلان کیا ہے کہ اس نے اسسٹنٹ وائس چیف آف اسٹاف لیفٹیننٹ جنرل جان ہسٹرمین کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا ہے کیونکہ تحقیق میں پایا گیا تھا کہ وہ پانچ سال سے فضائیہ کی ایک شادی شدہ خاتون اعلان کے ساتھ غیر پیشہ ورانہ تعلقات رکھتے تھے۔ ہسٹرمین نے،جو ماضی میں امریکی مرکز...

ماتحت خاتون افسر سے

بمباری کے حامی مزید بمبار طیاروں کے حق میں وجود - بدھ 25 نومبر 2015

امریکی فضائیہ کے لیے 100 نئے بمبار جہاز بنانے کے لیے نارتھروپ گرومن کے ساتھ ہونے والے معاہدے کی ابھی سیاہی خشک نہ ہوئی ہوگی کہ "شوقین" لابی جہازوں کی تعداد کو دوگنا کرنے پر زورلگاتی دکھائی دے رہی ہے۔ اس ڈرامائی اضافے کی سفارش مچل انسٹیٹیوٹ آف ایرو اسپیس اسٹڈیز کی تحقیق میں سامنے ...

بمباری کے حامی مزید بمبار طیاروں  کے حق میں

امریکا کا نیا بمبار بنانے کا فیصلہ، خودکار بھی ہوگا وجود - جمعه 30 اکتوبر 2015

[caption id="attachment_31628" align="aligncenter" width="1000"] نیا بمبار بی-2 طیاروں کی جگہ لے گا [/caption] امریکا نے اپنے بی-2 طیاروں کی جگہ نئے بمبار جہازوں کی شمولیت کا حتمی فیصلہ کرلیا ہے اور اس کا ٹھیکہ نارتھروپ گرومین کارپوریشن کو دیا گیا ہے۔ انتہائی خفیہ 80 بلین ...

امریکا کا نیا بمبار بنانے کا فیصلہ، خودکار بھی ہوگا

مضامین
بلوچستان، مزید بارشیں، تباہ کاریاں، خراب حکمرانی وجود جمعه 19 اگست 2022
بلوچستان، مزید بارشیں، تباہ کاریاں، خراب حکمرانی

ڈیپ فیک وجود جمعه 19 اگست 2022
ڈیپ فیک

ملعون سلمان رشدی ، ایک غازی کے نشانے پر وجود جمعرات 18 اگست 2022
ملعون سلمان رشدی ، ایک غازی کے نشانے پر

سور۔یلا۔۔ وجود بدھ 17 اگست 2022
سور۔یلا۔۔

سوشل میڈیا ایک بہت بڑا دھوکاہے وجود بدھ 17 اگست 2022
سوشل میڈیا ایک بہت بڑا دھوکاہے

میثاقِ معیشت کی تجویز وجود بدھ 17 اگست 2022
میثاقِ معیشت کی تجویز

اشتہار

تہذیبی جنگ
ملعون سلمان رشدی پر حملہ کرنے والے ملزم ہادی مطر کی ایران سے تعلق کی تردید وجود جمعرات 18 اگست 2022
ملعون سلمان رشدی پر حملہ کرنے والے ملزم ہادی مطر کی ایران سے تعلق کی تردید

یورپین سول سوسائٹی کی تنظیموں کا اسلاموفوبیا سے نبرد آزما ہونے کے لیے اتحاد کا فیصلہ وجود جمعرات 16 جون 2022
یورپین سول سوسائٹی کی تنظیموں کا اسلاموفوبیا سے نبرد آزما ہونے کے لیے اتحاد کا فیصلہ

گستاخانہ بیانات:چین بھی ہندو انتہا پسند بھارتی حکومت پر برہم ہو گیا وجود منگل 14 جون 2022
گستاخانہ بیانات:چین بھی ہندو انتہا پسند بھارتی حکومت پر برہم ہو گیا

بی جے پی کا ایک اور گستاخ، پیغمبرِ اسلامۖ کے خلاف توہین آمیز ٹوئٹس پر گرفتار وجود بدھ 08 جون 2022
بی جے پی کا ایک اور گستاخ، پیغمبرِ اسلامۖ کے خلاف توہین آمیز ٹوئٹس پر گرفتار

گستاخانہ بیان پر انڈونیشیا، ملائیشیا کا بھارت سے احتجاج وجود بدھ 08 جون 2022
گستاخانہ بیان پر انڈونیشیا، ملائیشیا کا بھارت سے احتجاج

بھارتی سیاست دانوں کا رویہ دہشت گردی پر مبنی ہے، مصری درسگاہ جامعہ الازہر وجود منگل 07 جون 2022
بھارتی سیاست دانوں کا رویہ دہشت گردی پر مبنی ہے، مصری درسگاہ جامعہ الازہر

اشتہار

بھارت
اگنی پتھ اسکیم نے بھارت میں آگ لگادی ،مظاہروں میں شدت وجود اتوار 19 جون 2022
اگنی پتھ اسکیم نے بھارت میں آگ لگادی ،مظاہروں میں شدت

سکھوں کا بھارتی پنجاب کی علیحدگی کے لیے ریفرنڈم کا اعلان، خالصتان کا نقشہ جاری وجود جمعرات 09 جون 2022
سکھوں کا بھارتی پنجاب کی علیحدگی کے لیے ریفرنڈم کا اعلان، خالصتان کا نقشہ جاری

بی جے پی کا ایک اور گستاخ، پیغمبرِ اسلامۖ کے خلاف توہین آمیز ٹوئٹس پر گرفتار وجود بدھ 08 جون 2022
بی جے پی کا ایک اور گستاخ، پیغمبرِ اسلامۖ کے خلاف توہین آمیز ٹوئٹس پر گرفتار

گستاخانہ بیان پر انڈونیشیا، ملائیشیا کا بھارت سے احتجاج وجود بدھ 08 جون 2022
گستاخانہ بیان پر انڈونیشیا، ملائیشیا کا بھارت سے احتجاج
افغانستان
طالبان کا متحدہ عرب امارات سے ائیرپورٹس چلانے کا معاہدہ کرنے کا اعلان وجود بدھ 25 مئی 2022
طالبان کا متحدہ عرب امارات سے ائیرپورٹس چلانے کا معاہدہ کرنے کا اعلان

خواتین براڈ کاسٹرز پر برقع مسلط نہیں کرتے، چہرہ ڈھانپنے کا کہا ہے،طالبان وجود پیر 23 مئی 2022
خواتین براڈ کاسٹرز پر برقع مسلط نہیں کرتے، چہرہ ڈھانپنے کا کہا ہے،طالبان

سقوطِ کابل کے بعد بہت سے افغان فوجی پاکستان فرار ہوئے، امریکا وجود پیر 23 مئی 2022
سقوطِ کابل کے بعد بہت سے افغان فوجی پاکستان فرار ہوئے، امریکا

بھارت کی افغانستان میں سفارتخانہ کھولنے کے لیے طالبان سے بات چیت وجود بدھ 18 مئی 2022
بھارت کی افغانستان میں سفارتخانہ کھولنے کے لیے طالبان سے بات چیت
ادبیات
مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع کردار پرنئی کتاب شائع وجود هفته 23 اپریل 2022
مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع  کردار پرنئی کتاب شائع

مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار وجود بدھ 06 اپریل 2022
مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار

پاکستانی اور سعودی علما کی کئی سالہ کاوشوں سے تاریخی لغت کی تالیف مکمل وجود منگل 04 جنوری 2022
پاکستانی اور سعودی علما کی کئی سالہ کاوشوں سے تاریخی لغت کی تالیف مکمل

پنجابی بولتا ہوں، پنجابی میوزک سنتاہوں اور پنجابی ہوں، ویرات کوہلی وجود جمعرات 23 دسمبر 2021
پنجابی بولتا ہوں، پنجابی میوزک سنتاہوں اور پنجابی ہوں، ویرات کوہلی
شخصیات
عامر لیاقت کی تدفین کردی گئی، نماز جنازہ بیٹے نے پڑھائی وجود جمعه 10 جون 2022
عامر لیاقت کی تدفین کردی گئی، نماز جنازہ بیٹے نے پڑھائی

تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین انتقال کر گئے وجود جمعرات 09 جون 2022
تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین انتقال کر گئے

چیف جسٹس عمر عطا بندیال ٹائم میگزین کے سال کے 100 بااثر ترین افراد میں شامل وجود منگل 24 مئی 2022
چیف جسٹس عمر عطا بندیال ٹائم میگزین کے سال کے 100 بااثر ترین افراد میں شامل

گوگل کا ڈوڈل گاما پہلوان کے نام وجود اتوار 22 مئی 2022
گوگل کا ڈوڈل گاما پہلوان کے نام