وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar
پاکستان کے سماجی طبقات میں تیزی سے تبدیلی ،رپورٹ وجود - پیر 05 نومبر 2018

پاکستان میں ابھرتے ہوئے خوشحال صارفین کی تقریباً دو تہائی (64فیصد) تعدادطبقاتی سطح میں اوپر کی جانب بڑھ رہی ہے ۔ ان میں سے 11فیصد سماجی طبقات میں غیرمعمولی رفتارسے تبدیلی رونما ہو رہی ہے جو نہ صرف گزشتہ نسل کے مقابلہ میں بہت زیادہ ہے بلکہ معاشرے کے دیگر طبقات میں رونما ہونے والی تبدیلی سے بھی زیادہ ہے ۔ایک رپورٹ کے مطابق خوشحال افراد، جن کے درمیان طبقاتی تبدیلی تیزی سے رونما ہوئی ہے ، ان کا تناسب 59 فیصد ہے اور ان میں سے 7 فیصد ایسے افراد ہیں جن کے درمیان طبقاتی تبدیلی غیرمعم...

پاکستان کے سماجی طبقات میں تیزی سے تبدیلی ،رپورٹ

ْافغانی اور ایرانی سیب کی وزیرستان کے راستے اسمگلنگ وجود - اتوار 28 اکتوبر 2018

افغانی اور ایرانی سیب کی وزیرستان کے راستے اسمگلنگ عروج پر پہنچ گئی ۔سیب بھی ان پھلوں میں شامل ہے جس کی درآمد پر 20%کسٹم ڈیوٹی عائد ہوتی ہے۔پاکستان میں سالانہ سیب کی پیداوار 14لاکھ35ہزار ٹن تک ہے اور سیب کی پیداوار میں پاکستان کا دسواں نمبر ہے ۔ جبکہ سیب کی عالمی تجارت کا حجم بھی ساڑھے 6 ملین ٹن سے تجاوز کر گیا ہے۔ افغانستان سے سیب کی اسمگلنگ کا رجحان تو کافی پرانا ہے لیکن گزشتہ چند سالوں سے ایران کے سیب کی بھاری مقدار بلوچستان اور افغانستان کے خفیہ راستوں سے ا سمگل ہوکر پ...

ْافغانی اور ایرانی سیب کی وزیرستان کے راستے اسمگلنگ

نیسلے پاکستان کی سخت اقتصادی حالات کے باوجود آمدنی میں اضافہ وجود - منگل 23 اکتوبر 2018

ناموافق اور سخت حالات سمیت مسابقتی دباؤ کے باوجود نیسلے پاکستان کی آمدنی میں 30 ستمبر 2018ء کے نو ماہ کے عرصے میں 1.8 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ کمپنی کی مجموعی آمدنی 1.7 بلین روپے سے بڑھ گئی اور 94.1 بلین روپے تک جاپہنچی۔ مذکورہ مالیاتی نتائج کا اعلان 23 اکتوبر 2018 ء کو نیسلے پاکستان کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اجلاس کے اختتام پر کیا گیا۔کمپنی نے 30 ستمبر، 2018ء کو ختم ہونے والے نو ماہ کے لیے 8.6 بلین روپے بعد از ٹیکس منافع کا اعلان کیا ہے ، گزشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلے میں یہ منافع ...

نیسلے پاکستان کی سخت اقتصادی حالات کے باوجود آمدنی میں اضافہ

نیب کی سالانہ ریکوری میں اضافہ،6ارب 62 کروڑ برآمد کر لیے وجود - بدھ 17 اکتوبر 2018

قومی احتساب بیورو (نیب)کی سالانہ ریکوری میں خاطرخواہ اضافہ ہوا، 2017ء کے بعد 368 فیصد، وارنٹ گرفتاریوں کی تعداد میں سالانہ 336فیصد، انکوائریاں نمٹانے میں سالانہ 62فیصد، سالانہ مکمل کی گئی تفتیش میں 23فیصد اضافہ ہوا،نیب نے 2000-16کے دوران 14ارب 15کروڑ 30 لاکھ روپے برآمد کیے اور 2017ء سے تاحال 6ارب 62کروڑ 40لاکھ روپے برآمد کیے۔ تفصیلات کے مطابق نیب لاہورکی مختلف کیسزمیں ریکورکی گئی رقم کی تفصیلات کے مطابق سالانہ ریکوری 2017ء کے بعد 4ارب 14کروڑ ہو گئی، 2016ء تک نیب کی سالانہ ری...

نیب کی سالانہ ریکوری میں اضافہ،6ارب 62 کروڑ برآمد کر لیے

پی آئی اے کو 9سال کے دوران 7ارب روپے سے زائد نقصان وجود - منگل 16 اکتوبر 2018

اکستان انٹرنیشنل ایئرلائنزکو گزشتہ 9سال کے دوران 7ارب روپے سے زائد نقصان ہوا۔ اس بات کا انکشاف پی آئی اے کی آڈٹ رپورٹ میں کیا گیا جبکہ ادارے کی تباہی کے محرکات بھی منظرعام پرآگئے ہیں۔رپورٹ میں 2008سے 2017تک پی آئی اے کے کرپٹ اورنااہل افسروں کی کارکردگی کے بارے میں بھی ہوشربا انکشافات کیے گئے ہیں۔آڈٹ رپورٹ کے مطابق ڈیلی ویجززکی بھرتی پر2409ملین اورپائلٹس کی زائدادائیگیوں پر1437ملین روپے خرچ کیے گئے ہیں ،جبکہ 457جعلی ڈگریوں والے افسر اور ملازمین کی بھرتیوں سے کروڑوں روپے کا نقص...

پی آئی اے کو 9سال کے دوران 7ارب روپے سے زائد نقصان

پی آئی اے خسارہ 10 برس میں 360 ارب روپے تک پہنچ گیا ،سپریم کورٹ میں آڈٹ رپورٹ جمع وجود - منگل 02 اکتوبر 2018

سپریم کورٹ میں پاکستان انٹرنیشنل ایئر (پی آئی اے) میں خسارے سے متعلق 10 سالہ آڈٹ رپورٹ جمع کرادی گئی جس کے مطابق قومی ائیرلائن کو دسمبر 2017 میں 360 اعشاریہ 117 ارب روپے خسارے سامنا تھا۔ منگل کو چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے قومی ائیرلائن کی نجکاری کے حوالے سے از خود نوٹس کیس کی سماعت کی جہاں ایئرلائن کی 10 سالہ خصوصی آڈٹ رپورٹ جمع کرا دی گئی۔سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی پی آئی اے کی گزشتہ 10 سالہ آڈٹ رپورٹ 500 صفحات پر مشتمل ہے جس میں شد...

پی آئی اے خسارہ 10 برس میں 360 ارب روپے تک پہنچ گیا ،سپریم کورٹ میں آڈٹ رپورٹ جمع

حکومت کا ہنڈی، حوالہ ،منی لانڈرنگ قوانین میں ترامیم کا فیصلہ وجود - پیر 01 اکتوبر 2018

وفاقی حکومت نے ہنڈی،حوالہ ،غیر ملکی کرنسی اور اینٹی منی لانڈرنگ قوانین میں اہم ترامیم کا فیصلہ کرلیاجس کے بعد ایف آئی اے کے اختیارات میں اضافے کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کی سربراہی میں اہم اجلاس وزارت خزانہ میں ہواجس میں اہم ترامیم کے حوالے فیصلہ کیا گیا ۔ذرائع کے مطابق قوانین میں ترامیم کے بعد ایف آئی اے شک کی بنیاد پر دفاتر اور گھروں پر چھاپے مارسکے گی ،جائیداد ضبطگی، مشکوک رقوم ضبط کرنے کے اختیارات بھی مل جائیں گے ۔اطلاعات کے مطابق ہنڈی ...

حکومت کا ہنڈی، حوالہ ،منی لانڈرنگ قوانین میں ترامیم کا فیصلہ

موبائل فون بینکنگ کا استعمال بڑھ گیا، 195فیصد اضافہ ریکارڈ وجود - پیر 01 اکتوبر 2018

پاکستان میں موبائل فون بینکنگ کا استعمال بڑھنے لگا، اسٹیٹ بینک کی رپورٹ کے مطابق موبائل فون بینکنگ میں195فیصداضافہ ہوا ہے اور اس کا زیادہ استعمال اکاؤنٹس سے رقوم کی منتقلی کیلئے کیا گیا ہے ، گزشتہ مالی سال کے دوران410بلین روپے کی موبائل فون بینکنگ کی گئی،اس حوالے سے 50 لاکھ ٹرانزیکشنز کی گئیں جن کا مجموعی حجم 196.4ملین روپے تھا۔2017کے مالی سال کے مقابلے میں 2018کے مالی سال میں فون بینکنگ کی تعداد میں 21فیصد جبکہ مالیت کے حساب سے 28 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

موبائل فون بینکنگ کا استعمال بڑھ گیا، 195فیصد اضافہ ریکارڈ

دنیا کی سب سے بڑی معیشت امریکا پر قرضوں کا بوجھ بڑھ گیا وجود - بدھ 26 ستمبر 2018

دنیا کی سب سے بڑی معیشت امریکاپر قرضوں کا انبار بڑھتا جارہا ہے۔ 2028میں امریکا دفاع اور صحت سے زیادہ قرضوں کی ادائیگی پر خرچ کرے گا۔معروف امریکی اخبار کے مطابق 2028تک امریکا قرضوں کی واپسی پر سالانہ 900ارب ڈالر خرچ کرے گا۔ 2019میں امریکا قرض و سود کی مد میں سالانہ 390ارب ڈالر ادا کرے گا اور یہ رقم 2017کے مقابلے میں 50فیصد زائد ہوگی ۔ماہرین کے مطابق امریکا کے بجٹ خسارے کے باعث قرضوں کا حجم بڑھ رہا ہے اور آئندہ سال دنیا کی سب سے بڑی معیشت کے سالانہ اخراجات آمدن کے مقابلے میں ہز...

دنیا کی سب سے بڑی معیشت امریکا پر قرضوں کا بوجھ بڑھ گیا

ایک ارب سے زائد افرادغربت کی لکیر سے نیچے ہیں، اقوام متحدہ وجود - هفته 22 ستمبر 2018

اقوام متحدہ نے کہاہے کہ دنیا بھر میں غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزارنے والے مجموعی افراد میں نصف تعداد بچوں کی ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یہ بات اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام کی جانب سے بتائی گئی ،رپورٹ کے مطابق 104 ممالک میں 1.3 ارب ایسے افراد ہیں جن کی درجہ بندی غربت کی لکیر سے نیچے کی گئی ہے۔ ان میں 18 برس سے کم عمر 66.2 کروڑ کم سن بچّے شامل ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزارنے والے افراد کی اکثریت 1.1 ارب افراد دیہی علاقوں میں رہتے ہیں۔ دی...

ایک ارب سے زائد افرادغربت کی لکیر سے نیچے ہیں، اقوام متحدہ

با ئیو آملہ شیمپو بنانے والی کمپنی فارول کاسمیٹکس،کاشف ضیاء ،اویس صلاح الدین، ذکاء شیخ پر300 کروڑ ٹیکس چوری کانیا اسکینڈل وجود - بدھ 12 ستمبر 2018

بائیو آملہ شیمپو بنانے والی کمپنی فارول کاسمیٹکس (تحلیل شدہ)کے شریک مالکان کاشف ضیاء ،محمد اویس صلاح الدین اور ذکاء الدین شیخ کا 300 کروڑ روپے کی ٹیکس چوری کا ایک اور نیا اسکینڈل سامنے آگیا ،کمپنی مالکان بائیو آملہ شیمپو کا ’’ٹریڈ مارک ‘‘رجسٹرڈ نہ ہونے کے باوجود نہ صرف جعلی طریقے سے شیمپو بناتے رہے بلکہ اس کی مد میں کروڑوں روپے کا سیلز ٹیکس بھی ہڑپ کرگئے ،دوسری جانب تحلیل شدہ کمپنی کی تشکیل بھی دھوکہ دہی کی بنیاد پر رکھے جانے کا انکشاف ،کمپنی کے شریک مالکان کاشف ضیاء کے والد ...

با ئیو آملہ شیمپو بنانے والی کمپنی فارول کاسمیٹکس،کاشف ضیاء ،اویس صلاح الدین، ذکاء شیخ پر300 کروڑ ٹیکس چوری کانیا اسکینڈل

گزشتہ ہفتے کے دوران مہنگائی میں 18فیصد اضافہ ہوا ‘ ادارہ شماریات وجود - اتوار 09 ستمبر 2018

ادارہ شماریات کے مطابق گزشتہ ہفتے کے دوران مہنگائی میں 18فیصد اضافہ ہوا ،آٹھ ہزار روپے آمدنی والے طبقے کیلئے مہنگائی میں .30 فیصد، بارہ ہزار روروپے آمدنی والے طبقے کیلئے .27فیصد، اٹھارہ ہزار روپے آمدنی والے طبقے کیلئے .25فیصد، پینتیس ہزار روپے آمدنی والے طبقے کیلئے .20فیصد اور اس سے زائد آمدنی والے طبقے کیلئے .08فیصد اضافہ ہوا ہے۔رپورٹ کے مطابق گزشتہ ہفتے کے دوران 18اشیا ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ اور آٹھ کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔ سب سے زیادہ ٹماٹر کی قیمت میں اوسطاًت...

گزشتہ ہفتے کے دوران مہنگائی میں 18فیصد اضافہ ہوا ‘ ادارہ شماریات

بٹ کوائن کی بنیاد ’بلاک چین ٹیکنالوجی‘ کیا ہے؟ وجود - جمعه 20 اپریل 2018

آج کل بٹ کوائن کا بہت چرچا ہے اور اس کے بارے میں تقریباً روزانہ خبریں آرہی ہیں۔ کہیں اس پر فتوے لگ رہے ہیں تو کہیں اس حوالے سے قانونی بحث جاری ہے لیکن یہ دیکھ کر بہت افسوس ہوا کہ بٹ کوائن اور اس جیسی متعدد کرپٹوکرنسیز کو وجود بخشنے والی بنیادی ٹیکنالوجی ’’بلاک چین‘‘ پر کہیں کوئی بات نہیں ہورہی۔ اس کے برعکس، سچ تو یہ ہے کہ اگر آپ سنجیدگی سے بلاک چین پر مہارت حاصل کرلیں گے تو یہ ٹیکنالوجی آنے والے وقت میں آپ کیلیے بہترین کیریئر کی ضمانت تک بن سکتی ہے۔ یہ بلاگ میں نے خاص طو...

بٹ کوائن کی بنیاد ’بلاک چین ٹیکنالوجی‘ کیا ہے؟

روپے کی بے قدری سے معاشی مشکلات میں اضافہ ہونے لگا وجود - بدھ 11 اپریل 2018

موجودہ حکومت کے ختم ہونے میں ٹھیک ایک ماہ باقی ہے ایسے میں یہ حکومت ملک کے لیے معاشی مسائل کا ایک انبار چھوڑ کر جارہی ہے۔ ملکی معیشت کی کوئی کل اٹھا کر دیکھ لیں ہر سمت معاشی مشکلات منہ کھولے کھڑی نظر آتی ہیں۔ بیرونی قرضے کا حجم دیکھیں تو یہ 90 ارب ڈالر کی حد عبور کرچکا ہے۔ عوام اور مجموعی ملکی معیشت اس کا کس طرح بوجھ اْٹھائے گی۔ اس کا پتا نہیں، زرمبادلہ کی آمدنی کا اہم ذریعہ برآمدات ہیں، وہ 22 ارب ڈالر سے آگے نہیں جاسکیں اور اس طرح تجارتی خسارہ 33 ارب ڈالر متوقع ہے، یہ خس...

روپے کی بے قدری سے معاشی مشکلات میں اضافہ ہونے لگا

ڈالرکی قیمت میں اضافے نے عوام کے ہوش اڑادیے، مہنگائی کانیاطوفان وجود - منگل 27 مارچ 2018

روپے کی قدر کم ہونے کے جو نتائج سامنے آ رہے ہیں‘ غیر متوقع نہیں۔ ماہرینِ معاشیات پہلے ہی خبردار کر رہے تھے کہ کرنسی کی ویلیو کم ہونے سے اشیائے خورو نوش سمیت تمام چیزوں کی قیمتیں بڑھ جائیں گی اور ان اشیا کی قیمتوں میں چڑھائو بالواسطہ طور پر بھی مہنگائی میں مزید اضافے کا باعث بنے گا۔ مثلاً ابھی دو دن پہلے یہ خبر سامنے آئی کہ روپے کی قدر میں کمی کی وجہ سے پٹرولیم مصنوعات کے نرخ ماہِ رواں کے آخر میں ایک بار پھر بڑھنے کا اندیشہ ہے اور اس حقیقت سے کون ناواقف ہو گا کہ صرف پٹرولیم...

ڈالرکی قیمت میں اضافے نے عوام کے ہوش اڑادیے، مہنگائی کانیاطوفان

حکومت کے معیشت کے استحکام کے دعوے فریب آئی ایم ایف کی تازہ رپورٹ نوشتہ دیوار وجود - جمعرات 22 مارچ 2018

پاکستان کے متعلق انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ(آئی ایم ایف)کی حالیہ رپورٹ کے مطابق ملکی قومی پیداوار، تجارتی، مالی خسارے میں اضافہ ہوا جبکہ غیرملکی ادائیگیوں کوخطرات لاحق ہوگئے اور سیاسی حالات مزید خرابی کا باعث بنے۔ اسی طرح زرمبادلہ کے ذخائر 18.5 ارب ڈالرز سے کم ہو کر 12.8ارب ڈالر زرہ گئے۔ یہ سلسلہ یونہی جاری رہا تو یہ ذخائر اتنے کم رہ جائیں گے کہ ایک ماہ کی درآمدات کے لیے بھی ناکافی ہوں گے۔آئی ایم ایف کی یہ رپورٹ اْن حکومتی دعوئوں کی چغلی کھارہی ہے جو ملکی معیشت کے استحکام اور ب...

حکومت کے معیشت کے استحکام کے دعوے فریب آئی ایم ایف کی تازہ رپورٹ نوشتہ دیوار

بٹ کوائن سے خطرہ وجود - بدھ 07 مارچ 2018

بٹ کوئن ایک ڈیجیٹل کرنسی ہے۔ بٹ کوئن کمانے یا حاصل کرنے میں کسی شخص یا کسی بینک کا کوئی اختیار نہیں۔ یہ مکمل آزاد کر نسی ہے، جس کو ہم اپنے کمپیوٹر کی مدد سے بھی خود بنا سکتے ہیں۔ بٹ کوئن کرنسی کا دیگر رائج کرنسیوں مثلاً ڈالر اور یورو سے موازنہ کیا جاسکتا ہے، لیکن رائج کرنسیوں اور بٹ کوئن میں کچھ فرق ہے۔ سب سے اہم فرق یہ ہے کہ بٹ کوئن مکمل طور پر ایک ڈیجیٹل کرنسی ہے جس کا وجود محض انٹرنیٹ تک محدود ہے، خارجی طور پر اس کا کوئی جسمانی وجود نہیں۔ اسی طرح بٹ کوئن کرنسی کے پیچھے کو...

بٹ کوائن سے خطرہ

روپے کی قدر میں کمی ملکی مفاد میں نہیں ہے ایچ اے نقوی - بدھ 08 نومبر 2017

ملک کی معیشت کی دگرگوں صورت حال قرضوں کے بڑھتے ہوئے بوجھ، کرنٹ اکائونٹ میں بڑھتے ہوئے خسارے اوربرآمدات میں مستقل اورمسلسل کمی کے باوجود وزارت خزانہ کی جانب صورت حال کی بہتری کے لیے کوئی قدم نہ اٹھائے جانے کی وجہ سے مختلف حلقوں کی جانب سے تشویش کااظہار ایک سمجھ میں آنے والی بات ہے،لیکن معیشت کی اس خراب صورت حال کی آڑ میں مفاد پرست طبقہ جس میں برآمدی تجارت سے وابستہ تاجروں کاایک گروپ سرفہرست ہے حکومت کوروپے کی قدر میں کمی کرنے پر مجبور کرنے کے لیے مسلسل دبائو ڈالنے کی کوشش ...

روپے کی قدر میں کمی ملکی مفاد میں نہیں ہے

روپے کی قدر میں کمی دولت مندوں نے ڈالر جمع کرنا شروع کردیے ایچ اے نقوی - هفته 28 اکتوبر 2017

ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کاسلسلہ مسلسل جاری ہے، جبکہ غیر سرکاری ذرائع کے مطابق گزشتہ چند ماہ کے دوران افراط زر کی شرح میں بھی غیر محسوس طریقے سے اضافہ ہوتا جارہا ہے ،روپے کی قدر میں غیر سرکاری سطح پر غیر محسوس طریقے سے کمی نے مہنگائی میں اضافے میں نمایاں کردار ادا کیاہے جس کی وجہ سے عام آدمی کی مشکلات میں مسلسل اضافہ ہورہاہے،دوسری جانب بینکوں کی جانب سے ڈیپازٹ پر منافع کی شرح میں کوئی اضافہ نہ ہونے بلکہ ،ڈیپازٹس پر منافع کی شرح میں پہلے کے مقابلے میں کمی ہونے ک...

روپے کی قدر میں کمی دولت مندوں نے ڈالر جمع کرنا شروع کردیے

بینکوں کے کھاتے داروں کو ٹیکس نیٹ میں جکڑنے کافیصلہ،، بینکوں کی مزاحمت ایچ اے نقوی - جمعرات 26 اکتوبر 2017

کمرشل بینکوں نے ایف بی آر کو کھا تے داروں کا ڈیٹا دینے سے انکار کردیاہے جس کے بعد اب حکومت نے بینکوں کے گرد گھیرا تنگ کرنے کافیصلہ کرلیاہے اور اس مقصد کے لیے جلد ہی وزارت خزانہ کی جانب سے کوئی نوٹی فیکشن جاری کئے جانے کے امکان کو رد نہیں کیاجاسکتا۔ وزارت خزانے کے ذرائع کے مطابق ایف بی آر ٹیکس کا دائرہ وسیع کرنے کے لیے بینکوں میں رقوم جمع کرانے والے کھاتے داروں کی تفصیلات طلب کی تھیں تاکہ ان کی بنیادپر زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ٹیکس کے دائرے میں لاکر ٹیکسوں کی وصولی میں اضافہ...

بینکوں کے کھاتے داروں کو ٹیکس نیٹ میں جکڑنے کافیصلہ،، بینکوں کی مزاحمت

چین سے درآمد شدہ اشیاء ملک کی صنعتوں کیلئے مصیبت بن گئیں ایچ اے نقوی - اتوار 22 اکتوبر 2017

پاکستان کی چھوٹی اور درمیانی صنعتوں میں وافر مقدار میں تیار ہونے والی گھریلو اور صنعتی استعمال کی اشیا کی چین سے بے تحاشہ درآمد نے ملک کی صنعتوں کے لیے خطرے کی گھنٹی بجادی ہے،چین سے درآمد کی جانے والی ان اشیا کی قیمتیں اتنی کم ہیں کہ ملک کے چھوٹے اور درمیانہ درجے کے صنعت کار اس کامقابلہ کرنے میں ناکام ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے ایسی بہت سی صنعتیں اور کارخانے بند ہوگئے ہیں اور جو ابھی بھی کسی نہ طرح اپنا وجود قائم رکھے ہوئے ہیں وہ بھی آخری سانس لیتے نظر آرہے ہیں جس کی وجہ سے م...

چین سے درآمد شدہ اشیاء ملک کی صنعتوں کیلئے مصیبت بن گئیں

حکومت مجموعی ملکی پیداوار کا مقررہ ہدف پورا کرنے میں ناکام ایچ اے نقوی - منگل 17 اکتوبر 2017

اسٹیٹ بینک پاکستان (ایس بی پی) نے پیش گوئی کی ہے کہ مالی سال 18-2017 میں مجموعی ملکی پیداوار(جی ڈی پی) کی شرح حکومت کے مقررہ کردہ ہدف 6 فیصد سے کم رہے گی۔ جبکہ رپورٹ کے مطابق 17-2016 کے دوران جی ڈی پی کی شرح 5 اور 6 فیصد کے درمیان تھی۔دوسری جانب حکومت کی جانب سے طے شدہ 6 فیصد افراط زر کی شرح، 4.5 اور 5.5 فیصد کے درمیان رہے گی۔رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ 18-2017 کے دوران مالی اور کرنٹ خسارے بالترتیب 5 سے 6 فیصد اور 4 سے 5 فیصد رہیں گے جبکہ جی ڈی پی میں ان کا ہدف 4.1 اور 2.6 فی...

حکومت مجموعی ملکی پیداوار کا مقررہ ہدف پورا کرنے میں ناکام

ایک سال کے دوران 34لاکھ افرادروزگار سے محروم ہوگئے شہلا حیات نقوی - هفته 14 اکتوبر 2017

عالمی ادارہ محنت (انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن - آئی ایل او)نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں بے روزگاروں کی تعداد 20 کروڑ سے تجاوز کرگئی ہے۔پیر کو جاری کی جانے والی ایک رپورٹ میں عالمی ادارے نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں بے روزگاروں کی تعداد میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 34 لاکھ افراد کا اضافہ ہوا ہے۔عالمی ادارے کے مطابق اس وقت دنیا بھر میں لگ بھگ دو ارب 80 کروڑ افراد کا روزگار نجی شعبے سے وابستہ ہے جو دنیا میں برسرِ روزگار کل افراد کا 87 فی صد ہیں۔رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں نجی شعبہ اور ...

ایک سال کے دوران 34لاکھ افرادروزگار سے محروم ہوگئے

وفاقی حکومت نے کتنے ملکی وغیر ملکی قرضے لیے؟ الیاس احمد - هفته 14 اکتوبر 2017

ویسے توقیام پاکستان سے لے کر اب تک پاکستان کھربوں روپے کے ملکی وغیرملکی قرضے لیے ہیں اور پھر یہ ایک میوزیکل چیز کی طرح پورا ایک مافیا اس قرضے سے ملکی اور بیرونی سطح پر کمیشن لے کر اپنا پیٹ بھرتارہا ہے ۔ اس طرح جتنا بھی قرضہ لیا جاتا ہے اس کا 40 فیصد حصہ کمیشن کی نذر ہوجاتا ہے اور بقیہ 60 فیصد رقم کو جب ترقیاتی منصوبوں پر لگایا جاتا ہے تو اس میں سے بھی 35 فیصد رقم سرکاری افسران اور وزراء کی کمیشن چلی جاتی ہے اور باقی 20سے 25 فیصد رقم ہی خرچ ہوتی ہے۔ اگردیکھاجائے تو حقیقی معنوں...

وفاقی حکومت نے کتنے ملکی وغیر ملکی قرضے لیے؟