وجود

... loading ...

وجود
وجود

ٹیکساس یرغمال واقعے پر امریکی میڈیا نے جھوٹےالزامات لگائے،ڈاکٹر فوزیہ صدیقی

اتوار 16 جنوری 2022 ٹیکساس یرغمال واقعے پر امریکی میڈیا نے جھوٹےالزامات لگائے،ڈاکٹر فوزیہ صدیقی

ڈاکٹر عافیہ کی ہمشیرہ اور عافیہ موومنٹ کی رہنما ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے کہا ہے کہ عافیہ اور اس کے اہلخانہ کے نام پر پرتشدد کاروائیاں قابل مذمت ہیں۔ تمام مذاہب اور عبادت گاہیں قابل احترام ہیں۔عافیہ موومنٹ کی پالیسی میں تشدد اور انتہاپسندانہ فکرو عمل کی کوئی گنجائش نہیں ہے ۔عافیہ موومنٹ میڈیا انفارمیشن سیل سے ڈاکٹر عافیہ کی فیملی نے اتوار کو ٹیکساس میں یرغمال بنائے جانے والے واقعے کے بعد جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ امریکہ سے ڈاکٹر عافیہ کے بھائی کے قانونی مشیر اور CAIRـHouston بورڈ کے سربراہ جان فلائیڈ اور ڈاکٹر عافیہ کی وکیل مروہ ایلبیالی کے مطابق ان کے مؤکل کا اس افسوسناک واقعے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔بیان میں مزید کہا گیا ہے ہم یہ بات واضح طور پر بتانا چاہتے ہیں کہ یرغمال بنانے والے کارروائی میں ہلاک ہونے والا ملزم ڈاکٹر عافیہ صدیقی کا بھائی نہیں ہے۔ڈاکٹر عافیہ کا خاندان ہمیشہ قانونی اورپرامن طریقوں سے اپنی بہن کی رہائی کیلئے ثابت قدم رہا ہے۔ ہلاک کئے جانے والے حملہ آور کی کاروائی ناقابل قبول تھی جو کہ ڈاکٹر عافیہ کی رہائی کی پرامن اور انسانی حقوق کے حوالے سے جاری تحریک کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہے۔ ہم ان صحافیوں سے بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ جنہوں نے حملہ آور شخص کو ڈاکٹر عافیہ کے خاندان کا رکن ہونے کا دعویٰ کیا تھا کہ وہ اپنی رپورٹس کو درست کرلیں اور صدیقی خاندان سے معافی مانگیں۔ ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے اس واقعے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ الحمدللہ ٹیکساس میں یرغمالیوں کا بحران ختم ہوگیا۔میرے اور عافیہ کے بھائی کے یرغمال کی صورت حال میں ملوث ہونے کی جھوٹی اور بے بنیاد افواہیں دم توڑ گئی ہیں۔ ایسی پرتشدد کاروائیوں، واقعات اور بے بنیاد افواہوں سے ہمارا کوئی تعلق نہیں ہے۔جب بھی عافیہ کے حق میں عالمی اور ملکی سطح پر ہمدردی کی طاقتور لہر پیدا ہوتی ہے اور اس کی رہائی کا مطالبہ زور پکڑنے لگتا ہے تو اس طرح کے واقعات وقوع پذیر ہوتے ہیں۔اس طرح بے گناہ کو مجرم بنادیا جاتا ہے اورعافیہ کے ساتھ بھی ایسا ہی کیا گیا ہے۔ غیر ذمہ دار صحافی اوربرائی کا پرچار کرنے والے کتنی جانیں برباد کریں گے؟بدقسمتی سے یہ افواہ ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب میری والدہ شدید بیماراور BIPAP وینٹی لیٹری سپورٹ پر SCU میں داخل ہیں۔ میں اور میرا بھائی دونوں پہلے ہی والدہ کی شدید علالت کے باعث انتہائی پریشان تھے کہ یہ واقعہ ہماری پریشانی میں مزید اضافہ کا سبب بنا ہے۔


متعلقہ خبریں


ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کا مطالبہ کرنے والا شخص ماراگیا وجود - اتوار 16 جنوری 2022

امریکی ریاست ٹیکساس میں پولیس اور ایف بی آئی کے آپریشن میں ایک یہودی عبادت گاہ میں یرغمال بنائے گئے تمام افراد کو رہا کرا لیا گیا ہے جبکہ ایک نامعلوم شخص کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا ہے جس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ اس نے عبادت گاہ میں چار افراد کو یرغمال بنایا تھا۔امریکی حکام کے...

ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کا مطالبہ کرنے والا شخص ماراگیا

عافیہ صدیقی کا معاملہ پاکستانی تاریخ کا سیاہ باب ! الطاف ندوی کشمیری - جمعه 01 اپریل 2016

صدیوں پرانی بات ہے جب پاکستان کے جنم سے بہت پہلے اسی سرزمین پر ایک ’’عرب نوجوان لڑکی‘‘کی گرفتاری نے ’’ظالم حجاج بن یوسف‘‘کو اس قدر بے چین کردیا تھاکہ اس نے اپنی فوجوں کو محمد بن قاسمؒ کی اطاعت میں اس بات پر سختی سے پابند کردیا تھا کہ’’میری بیٹی‘‘کو ہر حال میں جیل سے نجات دلا کر ر...

عافیہ صدیقی کا معاملہ پاکستانی تاریخ کا سیاہ باب !

سابق امریکی سینیٹر نے عافیہ صدیقی کی رہا ئی کا مطالبہ کر دیا وجود - بدھ 16 ستمبر 2015

امریکا کے سابق سینیٹر مائیک گریول نے امریکی صدر بارک اُباما سے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ عافیہ کے خلاف مقدمہ بڑی ناانصافیوں میں سے ایک ہے۔ سابق امریکی سینیٹر کا کہنا تھا کہ پاکستانی عوام زور و شور سے عافیہ کی رہائی کا مطالبہ کرتے رہے ہیں۔ عافیہ اپنے...

سابق امریکی سینیٹر نے عافیہ صدیقی کی رہا ئی کا مطالبہ کر دیا

مضامین
فسادی بابا۔۔ وجود اتوار 27 نومبر 2022
فسادی بابا۔۔

اخوت کی بنیاد وجود جمعه 25 نومبر 2022
اخوت کی بنیاد

پراپر۔۔ٹی۔۔ وجود جمعه 25 نومبر 2022
پراپر۔۔ٹی۔۔

کیا کمشنز بلوچستان کے مسائل کا حل ہیں؟ وجود جمعرات 24 نومبر 2022
کیا کمشنز بلوچستان کے مسائل کا حل ہیں؟

ٹوئٹر کی ممکنہ موت،کیا ہماری دنیا بدل سکتی ہے؟ وجود جمعرات 24 نومبر 2022
ٹوئٹر کی ممکنہ موت،کیا ہماری دنیا بدل سکتی ہے؟

موسمیاتی فنڈ کا قیام اچھا فیصلہ مگر..... وجود بدھ 23 نومبر 2022
موسمیاتی فنڈ کا قیام اچھا فیصلہ مگر.....

اشتہار

تہذیبی جنگ
اسرائیلی فوج نے 1967 کے بعد 50 ہزار فلسطینی بچوں کو گرفتار کیا وجود پیر 21 نومبر 2022
اسرائیلی فوج نے 1967 کے بعد 50 ہزار فلسطینی بچوں کو گرفتار کیا

استنبول: خود ساختہ مذہبی اسکالر کو 8 ہزار 658 سال قید کی سزا وجود جمعه 18 نومبر 2022
استنبول: خود ساختہ مذہبی اسکالر کو 8 ہزار 658 سال قید کی سزا

ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش: سری رام سینا نے میدان پاک کرنے کے لیے گئو موتر کا چھڑکاؤ کیا وجود اتوار 13 نومبر 2022
ٹیپو سلطان کا یوم پیدائش: سری رام سینا نے میدان پاک کرنے کے لیے گئو موتر کا چھڑکاؤ کیا

فوج کے لیے حفظ قرآن کا عالمی مسابقہ، مکہ مکرمہ میں 27 ممالک کی شرکت وجود منگل 08 نومبر 2022
فوج کے لیے حفظ قرآن کا عالمی مسابقہ، مکہ مکرمہ میں 27 ممالک کی شرکت

سوشل میڈیا کی معاشرتی تباہی سے بچنے کے لیے قانون سازی کی جائے، امام کعبہ وجود جمعه 04 نومبر 2022
سوشل میڈیا کی معاشرتی تباہی سے بچنے کے لیے قانون سازی کی جائے، امام کعبہ

بھارت میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے خلاف شدید احتجاج وجود جمعه 04 نومبر 2022
بھارت میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے خلاف شدید احتجاج

اشتہار

بھارت
بھارت: مدعی نے جج کو دہشت گرد کہہ دیا، سپریم کورٹ کا اظہار برہمی وجود هفته 26 نومبر 2022
بھارت: مدعی نے جج کو دہشت گرد کہہ دیا، سپریم کورٹ کا اظہار برہمی

پونم پانڈے، راج کندرا اور شرلین چوپڑا نے فحش فلمیں بنائیں، بھارتی پولیس وجود پیر 21 نومبر 2022
پونم پانڈے، راج کندرا اور شرلین چوپڑا نے فحش فلمیں بنائیں، بھارتی پولیس

بھارت میں کالج طلبا کے ایک بار پھر پاکستان زندہ باد کے نعرے وجود اتوار 20 نومبر 2022
بھارت میں کالج طلبا کے ایک بار پھر پاکستان زندہ باد کے نعرے

بھارت، 2 سے زائد بچوں والے اب الیکشن نہیں لڑ سکیں گے وجود هفته 19 نومبر 2022
بھارت، 2 سے زائد بچوں والے اب الیکشن نہیں لڑ سکیں گے
افغانستان
طالبان کے افغانستان میں 19 افراد کو مختلف جرائم پر سرِعام کوڑے وجود منگل 22 نومبر 2022
طالبان کے افغانستان میں 19 افراد کو مختلف جرائم پر سرِعام کوڑے

افغان طالبان اور امریکا کی ایک دوسرے کو یقین دہانیاں وجود منگل 18 اکتوبر 2022
افغان طالبان اور امریکا کی ایک دوسرے کو یقین دہانیاں

امریکا کا افغان طالبان پر مزید پابندیوں کا اعلان وجود بدھ 12 اکتوبر 2022
امریکا کا افغان طالبان پر مزید پابندیوں کا اعلان

کابل میں وزارت داخلہ کی عمارت کے قریب دھماکا،3 افراد جاں بحق،25 سے زائد زخمی وجود جمعرات 06 اکتوبر 2022
کابل میں وزارت داخلہ کی عمارت کے قریب دھماکا،3 افراد جاں بحق،25 سے زائد زخمی
ادبیات
کراچی میں دو روزہ ادبی میلے کا انعقاد وجود هفته 26 نومبر 2022
کراچی میں دو روزہ ادبی میلے کا انعقاد

مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع کردار پرنئی کتاب شائع وجود هفته 23 اپریل 2022
مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع  کردار پرنئی کتاب شائع

مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار وجود بدھ 06 اپریل 2022
مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار

پاکستانی اور سعودی علما کی کئی سالہ کاوشوں سے تاریخی لغت کی تالیف مکمل وجود منگل 04 جنوری 2022
پاکستانی اور سعودی علما کی کئی سالہ کاوشوں سے تاریخی لغت کی تالیف مکمل
شخصیات
اسٹیج ، ٹی وی کے مشہور فنکار اسماعیل تارا انتقال کرگئے وجود جمعرات 24 نومبر 2022
اسٹیج ، ٹی وی کے مشہور فنکار اسماعیل تارا انتقال کرگئے

اداکار و میزبان ٹونی نوید جہان فانی سے کوچ کرگئے وجود جمعرات 24 نومبر 2022
اداکار و میزبان ٹونی نوید جہان فانی سے کوچ کرگئے

مفتی رفیع عثمانی کی نمازِ جنازہ ادا، دارالعلوم کورنگی کے احاطے میں سپرد خاک وجود اتوار 20 نومبر 2022
مفتی رفیع عثمانی کی نمازِ جنازہ ادا، دارالعلوم کورنگی کے احاطے میں سپرد خاک

فیض احمد فیض کو مداحوں سے بچھڑے 38 برس گزر گئے وجود اتوار 20 نومبر 2022
فیض احمد فیض کو مداحوں سے بچھڑے 38 برس گزر گئے