وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

2018 میں خود کش حملوں میں 46 فیصد لوگ جاں بحق ہوئے

جمعرات    31    جنوری    2019 2018 میں خود کش حملوں میں 46 فیصد لوگ جاں بحق ہوئے

پاکستان انسٹیٹیوٹ فار کنٹفلیکٹ اینڈ سیکیورٹی ا سٹڈیز( پکس) نے سال 2018 میں ہونے والے خود کش حملوں کی رپورٹ جاری کردی ،سال 2018 میں عمومی دہشت گردانہ حملوں کی بجائے خود کش حملوں میں 46 فیصد لوگ جاں بحق ہوئے۔رپوٹ کے مطابق گزشتہ سال ہونے والے حملوں کی تعداد 33 فیصد رہی ۔رپورٹ کے مطابق 2018 میں 18 خود کش حملے ہوئے ۔رپورٹ کے مطابق ان حملوں کے نتیجہ میں 268افراد جاں بحق ہوئے ۔رپورٹ کے مطابق 2018 میں دہشت گرد حملوں میں 205 عام شہری ،42 سکیورٹی اہلکار شہید 20 دہشت گرد ہلاک ہوئے ،ان حملوں میں 460 افراد زخمی ہوئے ،زخمیوں میں 384 عام شہری اور 76 سکیورٹی اہلکار شامل ہیں ۔رپورٹ میں کہاگیاکہ 2017 میں 23 خود کش حملے ہوئے ،2018 میں میں ہونے والے دہشت گردوں کے اوسطاً ایک حملے میں 15 جبکہ دوہزار سترہ میں 13 افراد شہید ہوئے۔رپورٹ میں کہاگیاکہ 2013 سے 2015 کے بعد 2018 میں خود کش حملوں کی تعداد بڑھ گئی ۔رپورٹ میں کہاگیاکہ 2017 میں 33 فیصد جبکہ 2018 میں 46 فیصد خود کش حملے ہوئے ۔رپورٹ کے مطابق فاٹا میں 2018 کے دوران کوئی خود کش حملہ نہیں ہوا ۔پنجاب میں ایک خود کش حملہ ہوا۔ رپورٹ کے مطابق سندھ میں ایک ، کے پی کے 4 خود کش حملے ہوئے رپورٹ کے مطابق سب سے زیادہ 11 خودکش حملے بلوچستان میں ہوئے ۔