رواں سال کے ابتدائی 8 ماہ میں 226 افراد قتل، گھروں میں ڈکیتی کی 15 سو سے زائد وارداتیں ہوئیں

کراچی میں آزاد گھومتے ڈاکو کسی صورت شہریوں کوبخشنے کے لیے تیار نہیں، پولیس رپورٹ کے مطابق رواں سال کے ابتدائی 8 ماہ میں 226 افراد قتل، گھروں میں ڈکیتی کی 15 سو سے زائد واردتیں،اغوابرائے تاوان کی11، بچوں کے اغواکی 80 اور دیگر وارداتوں میں درجنوں شہریوں کوجانی مالی نقصان اٹھانا پڑا۔

تفصیلات کے مطابق روشنیوں کے شہرمیں دن کی روشنی میں بھی ڈاکووارداتیں بے خوف ہوکر کرنے لگے،کراچی پولیس کی جانب سے جاری جرائم کے اعداد و شمار کی رپورٹ کے مطابق رواں سال کے ابتدائی 8 ماہ کے دوران 226 افراد جان سے گئے، جاں بحق افراد میں سے31 افرادڈاکوں کی گولیوں کانشانا بنے،اسٹریٹ کرائم کے علاوہ گھروں اور دکانوں میں ڈکیتی کی 15 سو 67 وارداتیں رپورٹ کی گئیں،828 گاڑیاں بھی چھین لی گئیں،اغوابرائے تاوان کی 11، بچوں کے اغواء کی 80 شکایتیں پولیس کوموصول ہوئیں،جبکہ روزانہ کی بنیاد پرلٹنے والے درجنوں شہریوں نے پولیس کے نارواسلوک کے باعث وارداتوں کی شکایت درج نہ کرانے میں ہی عافیت جانی، شہرمیں بڑھتے ہوئے اسٹریٹ کرائم کوقابو کرنے کے لیے پولیس صرف زبانی جمع خرچ کی حد تک ہی محدود دکھائی دیتی ہے۔

Electrolux