افغان طالبان کا 17 سال میں پہلی بار جنگ بندی کا اعلان

افغانستان میں حکومت کی جانب سے جنگ بندی کے اعلان کے بعد طالبان نے بھی پہلی مرتبہ عیدالفطر کے پیش نظر تین دن جنگ بندی کرنے کا اعلان کیا ہے۔ذرائع کے مطابق طالبان کے ترجمان نے مگر خبردار کیا کہ جنگ بندی کا اعلان غیر ملکی فوج کے لیے نہیں ہے ،کسی بھی حملے کی صورت میں اس کا بھرپور جواب دیا جائے گا۔واضح رہے کہ افغانستان میں امریکی قبضے کے بعد گزشتہ 17 سال کے دوران طالبان کی جانب سے پہلی مرتبہ جنگ بندی کا اعلان کیا گیا ہے ۔طالبان ترجمان کی جانب سے صحافیوں کو بھیجے گئے واٹس ایپ پیغام میں کہا گیا کہ ’’ تمام مجاہدین کو عید کے تین دن افغان فوجیوں کے خلاف عسکری کارروائیاں نہ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔‘‘دوسری جانب افغان صدر کی جانب سے جنگ بندی کے اعلان کے بعد افغان سیکیورٹی فورسز نے 10 طالبان ہلاک کردیے ، اس حوالے سے سیکیورٹی اداروں کا کہنا ہے کہ وہ کسی بھی حملے کی صورت میں جوابی کارروائی کریں گے ۔افغان حکام کے مطابق صوبہ ننگر ہار میں ہونے والی جھڑپوں میں ہلاک ہونے والے 10 افراد میں سے 5 پاکستانی تھے ، ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے آپریشن مکمل کرلیا ہے اور اب جنگ بندی کے معاہدے پر عمل کیا جائے گا۔واضح رہے کہ ننگر ہار میں گزشتہ روز رکن اسمبلی پر نامعلوم مسلح شخص کی جانب سے حملے کی کوشش کی گئی جس کے نتیجے میں 4 افراد ہلاک اور 5 زخمی ہوگئے تھے ،تاہم رکن اسمبلی اس وقت گھر پر موجود نہیں تھے ۔اس پوری صورتِ حال پر طالبان کی جانب سے کوئی نیا ردِ عمل سامنے نہیں آیا ہے۔

Electrolux