وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

الجزیرہ امریکا کی بندش کا اعلان کردیا گیا

هفته 16 جنوری 2016 الجزیرہ امریکا کی بندش کا اعلان کردیا گیا

Aljazeera-America

الجزیرہ امریکا نے رواں سال 30 اپریل تک اپنے کیبل ٹیلی وژن اور ڈیجیٹل آپریشنز بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔ یہ فیصلہ کرتے ہوئے الجزیرہ کا کہنا ہے کہ دراصل ان کے کاروبار کا انداز امریکا میں ذرائع ابلاغ کی مارکیٹ کو درپیش اقتصادی مسائل کی وجہ سے مزید جاری نہیں رہ سکتا۔

الجزیرہ امریکا کی بندش عوام کے ساتھ ساتھ خاص طور پر ان تمام افراد کے لیے مایوس کن خبر ہے جو طویل المیعاد مستقبل کے لیے ادارے میں انتھک محنت کر رہے تھے۔ ملازمین کو ادارے کی جانب سے جو ای میل بھیجی گئی ہے اس میں الجزیرہ کا کہنا ہے کہ صحافت سے جیسی وابستگی ہماری ہے، اس کی کوئی دوسری مثال نہیں ملتی۔ ہم نے خود کو جداگانہ حیثیت دی اور ہمارے پاس ایسی باصلاحیت ٹیم موجود رہی جس کی دیگر ادارے صرف تمنا ہی کر سکتے ہیں۔ ای میل میں امریکی عملے کی کام سے بھرپور وابستگی کو سراہا گیا اور انہیں اپنے کام کا ماہر قرار دیا گیا۔

گو کہ الجزیرہ امریکا کو ابتدا میں ٹی وی ریٹنگز کے حصول میں سخت جدوجہد کا سامنا کرنا پڑا لیکن اس کے باوجود نئے ٹیلی وژن چینل نے بہت جلد صحافت کی دنیا میں اہمیت حاصل کی اور کئی اعزازات حاصل کیے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ الجزیرہ امریکا کی بندش کا اعلان عین اس وقت ہوا ہے جب اس کی عالمی پیرنٹ کمپنی نے اپنے عالمی ڈیجیٹل آپریشنز کو بڑے پیمانے پر توسیع دینے سے وابستگی کا اظہار کیا ہے، جس میں امریکا بھی شامل ہے۔


متعلقہ خبریں


بینک کا خفیہ ڈیٹا منظرعام پر، صحافی، شاہی خاندان اور 'جاسوس' بھی شامل وجود - جمعرات 28 اپریل 2016

قطر نیشنل بینک کا خفیہ ڈیٹا منظر عام پر آ گیا ہے جس میں الجزیرہ کے صحافیوں کے علاوہ شاہی خاندان اور برطانوی جاسوسوں کی معلومات بھی سامنے آئی ہے۔ جس میں ذاتی بینک کھاتے اور پاس ورڈز تک موجود ہیں۔ قطر نیشنل بینک نے کہا ہے کہ وہ مبینہ ہیک پر تحقیقات کررہا ہے جس میں ان کے صارفین کی بڑی تعداد کے نام اور پاسورڈز سامنے آ گئے ہیں۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق 1.4 گیگابائٹس کا ڈیٹا ہے جو کسی نامعلوم شخص نے آن لائن کردیا ہے۔ اس میں 1200 افراد اور اداروں کے بارے میں معلومات ظاہر ہوئی ہیں۔ ا...

بینک کا خفیہ ڈیٹا منظرعام پر، صحافی، شاہی خاندان اور 'جاسوس' بھی شامل

برما میں مسلمانوں کی نسل کشی ہوئی، دستاویزی شواہد منظرعام پر وجود - منگل 27 اکتوبر 2015

قطر کے معروف ٹیلی وژن چینل الجزیرہ نے انسانی حقوق کے مختلف اداروں کے ساتھ مل کر ایسے شواہد منظرعام پر لایا ہے جن سے ثابت ہوتا ہے کہ برما میں مسلمانوں کی نسل کشی کی گئی۔ دستاویزی شواہد، جن پر 8 ماہ تحقیق کی گئی ہے، سے معلوم ہوا ہے حکومت سیاسی فوائد سمیٹنے کے لیے مذہبی فسادات کروائے۔ اس تحقیق میں یل یونیورسٹی لاء اسکول، لونسٹائن کلینک، الجزیرہ انوسٹی گیٹو یونٹ اور فورٹیفائی رائٹس شامل رہے ہیں۔ لونسٹائن کلینک کا کہنا ہے کہ "جس پیمانے پر مظالم ڈھائے گئے ہیں اور جس طرح سیا...

برما میں مسلمانوں کی نسل کشی ہوئی، دستاویزی شواہد منظرعام پر