وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

سال 2015ء کی بہترین ڈرون تصاویر

جمعه 25 دسمبر 2015 سال 2015ء کی بہترین ڈرون تصاویر

یہ تصاویر دیکھیں، آپ کو اندازہ ہو جائے گا کہ ڈرون فوٹوگرافی اب بہت مقبول سرگرمی بن چکی ہے۔

ڈرون کے ذریعے تصویر کشی کے سوشل نیٹ ورک ڈرونسٹاگرام میں 2015ء کے دوران پیش ہونے والی یہ سب سے بہترین تصاویر ہیں۔ ویب سائٹ کے سی ای او ایرک ڈوپن کہتے ہیں کہ دنیا کو نئے زاویے سے دیکھنے کے لیے ڈرون تیزی سے ایک مقبول اور نیا ذریعہ بن رہے ہیں۔ اب کسی بھی منظر کو قید کرنے کے لیے کوئی زاویہ ایسا نہیں بچا، جو انسان کی دست برد سے محفوظ ہو۔

ریو ڈی جنیرو، برازیل میں حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے عظیم مجسمے کا طائرانہ منظر

ریو ڈی جنیرو، برازیل میں حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے عظیم مجسمے کا طائرانہ منظر


خلیج امالفی، اٹلی

خلیج امالفی، اٹلی


ایک گمنام جزیرہ

ایک گمنام جزیرہ


مونٹ سینٹ مائیکل، نارمنڈی، فرانس

مونٹ سینٹ مائیکل، نارمنڈی، فرانس


زاؤ چینگ، شان ڈونگ، چین

زاؤ چینگ، شان ڈونگ، چین


پراکاتو، برازیل

پراکاتو، برازیل


دبئی، متحدہ عرب امارات میں اونٹوں کی دوڑ کا ایک میدان

دبئی، متحدہ عرب امارات میں اونٹوں کی دوڑ کا ایک میدان


مارنگا، برازیل میں دھند سے اوپر

مارنگا، برازیل میں دھند سے اوپر


میاس، روس میں منجمد جھیل ترگویاک کا ایک فضائی منظر

میاس، روس میں منجمد جھیل ترگویاک کا ایک فضائی منظر


متعلقہ خبریں


چند سالوں میں ڈرون بحری جہازوں کا دور دورہ ہوگا وجود - پیر 11 اپریل 2016

جاری دہائی کے اختتام تک سمندروں میں ریموٹ کنٹرول سے چلنے والے "ڈرون بحری جہازوں" کا دور دورہ ہوگا، جس پر عملے کا کوئی رکن نہ ہوگا۔ یہ بات ہوائی جہازوں کے انجن بنانے والے معروف ادارے رولس رائس نے کہی ہے جو بحری جہازوں کو زمینی اڈوں سے کنٹرول کرنے کے لیے درکار ٹیکنالوجی پر کام کر رہا ہے کیونکہ اس کے نتیجے میں بحری جہازوں کو چلانا سستا پڑے گا۔ رائس کے بحری یونٹ کے عہدیدار آسکر لیونڈر نے کہا کہ "یہ حقیقت میں ہونے جا رہا ہے۔ یہ "اگر" کا نہیں بلکہ "کب" کا سوال ہے۔ انہوں نے کہا ...

چند سالوں میں ڈرون بحری جہازوں کا دور دورہ ہوگا

فون اور ڈرون – چین کے نوجوان دنیا پر چھاتے ہوئے وجود - پیر 04 جنوری 2016

2006ء میں کالج کے چند طلبا نے ایک ادارہ بنا جو اب عام شہری استعمال کے ڈرون میں ایک عالمی رہنما بن چکا ہے۔ دا جیانگ انوویشنز (ڈی جے آئی) کی داستان بتاتی ہے کہ جدت طرازی سے وابستگی نئی دنیا میں آپ کو کس مقام تک پہنچا سکتی ہے۔ ادارے کے ابنی وانگ تاؤ کہتے ہیں کہ جب آپ جدید ٹیکنالوجی کے ساتھ مارکیٹ میں موجود ہوں تو سب سے پہلے آنے کا فائدہ آپ کو بہرصورت پہنچتا ہے۔ ڈی جے آئی کی سالانہ فروخت 2010ء میں 3 ملین یوآن یعنی 4 لاکھ 60 ہزار ڈالرز تھیں لیکن 2014ء میں یہ 3 ارب یوآن تک پہن...

فون اور ڈرون – چین کے نوجوان دنیا پر چھاتے ہوئے

”ہم نے معصوم لوگوں کو مارا“، ڈرون چلانے والے پھٹ پڑے وجود - هفته 21 نومبر 2015

دنیا بھر میں ڈرون کے ذریعے مشتبہ افراد کو مارنے کا امریکی منصوبہ نفرت، بدلے اور بنیاد پرستی کی آگ کو پھیلانے کے لیے کافی ایندھن فراہم کر چکا ہے اور اب بھی اس کے مزید بھڑکنے کا سبب سمجھا جا رہا ہے۔ اب ڈرون دنیا بھر میں دہشت گردی کو پھیلانے اور عدم استحکام پیداکرنے کے لیے مہلک ترین قوتوں میں سےایک بن چکا ہے۔ اس منصوبے میں شریک چار سابق اہلکاروں نے امریکا کے صدر براک اوباما، وزیر دفاع آشٹن کارٹر اور سی آئی اے کے ڈائریکٹر جان برینن کو ایک کھلا خط لکھا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ...

”ہم نے معصوم لوگوں کو مارا“، ڈرون چلانے والے پھٹ پڑے

ڈرون حملے، 90 فیصد اموات ان افراد کی جو نشانہ ہی نہیں ہوتے، خفیہ دستاویز وجود - جمعه 16 اکتوبر 2015

افغانستان، صومالیہ اور یمن میں مخالفین کو ٹھکانے لگانے کے لیے امریکی پروگرام کے بارے میں خفیہ دستاویزات منظرعام پر آ گئی ہیں، جن سے معلوم ہوتا ہے کہ امریکی صدر براک اوباما نے ڈرون حملوں کے کہاں تک پھیلایا ہے۔ نامعلوم شخص کی جانب سے منظرعام پر لائی گئی یہ دستاویز آن لائن پبلی کیشن 'دی انٹرسپٹ' کی جانب سے جاری کی گئی ہے، جس نے آٹھ حصوں کی تحقیقات کو "دی ڈرون پیپرز" کا نام دیا ہے اور انہیں "ٹارگٹ کلنگ" قرار دیا ہے۔ رپورٹ کا سب سے اہم انکشاف یہ ہے کہ پانچ ماہ کے عرصے میں جو ...

ڈرون حملے، 90 فیصد اموات ان افراد کی جو نشانہ ہی نہیں ہوتے، خفیہ دستاویز

پاکستان ساختہ ڈرون براق کی پہلی کارروائی، تین دہشت گرد ہلاک کرنے کا دعویٰ وجود - پیر 07 ستمبر 2015

پاکستان کا تیار کردہ ڈرون’’ براق‘‘ کے ذریعے۷؍ستمبر بروز پیرکو افواجِ پاکستان نے پہلی کارروائی کی ہے جس میں تین دہشت گردوں کی ہلاکت کا دعویٰ کیا گیا ہے۔ فوج کے تعلقات عامہ(آئی ایس پی آر) کے ترجمان میجر جنرل عاصم باجوہ نے پیر کی صبح سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر اپنے مختصر پیغام میں یہ اطلاع دی کہ پاکستان کے پہلے ڈرون طیارے ’’براق‘‘ نے وادیٔ شوال میں دہشت گردوں کے ایک احاطے (کمپاؤنڈ) کو نشانا بنایا ہے جس میں تین دہشت گرد ہلاک ہو گئے ہیں۔دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں نشانا ...

پاکستان ساختہ ڈرون براق کی پہلی کارروائی، تین دہشت گرد ہلاک کرنے کا دعویٰ

ڈرون کی پرواز کہاں تک علی منظر - پیر 07 ستمبر 2015

پاکستان شاید دنیا کا واحد ملک ہے جہاں لوگوں کی اکثریت ڈرون کی اصطلاح اور استعمال سے واقف ہے۔ فوجی مقاصد کے لئے ایجاد ہونے والا یہ آلہ اب محض دفاعی کاروائیوں میں استعمال نہیں ہوتا ۔ نہ ہی اس کی پرواز اب میدان جنگ تک محدود رہی ہے۔ ہر ٹیکنالوجی کی طرح ڈرون نے بھی ارتقاء کی کئی منازل طے کی ہیں اور اب یہ محض ایک انسان دشمن مشین نہیں۔ دیکھیں اس کی اڑان کہاں تک جاتی ہے۔ ۱۹۳۰ء کی دہائی سے ہی ڈرون یا Unmanned Aerial Vehicle یعنی بغیر پائلٹ طیارے کا فوجی استعمال شروع ہو چکا تھا ، جب...

ڈرون کی پرواز کہاں تک