وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

بحیرۂ جنوبی چین تنازع، معاملات شدت اختیار کرنے لگے

پیر 02 نومبر 2015 بحیرۂ جنوبی چین تنازع، معاملات شدت اختیار کرنے لگے

spratly-islands

بحیرۂ جنوبی چین میں سرحدی تنازعات اور دعوے، امریکی بحریہ کی موجودگی اور چین کی دھمکیوں کے بعد معاملات شدت اختیار کرنے لگے ہیں۔ اس صورت حال میں امریکا کےوزیر دفاع علاقے کا دورہ کررہے ہیں، جن کا کہنا ہے کہ خطے میں امریکا دراصل علاقائی ممالک کے مطالبے پر موجود ہے۔

چند روز قبل ایک امریکی جنگی بحری جہاز علاقے میں بنائے گئے چین کے مصنوعی جزائر کے قریب سے گزرا تھا، جس پر اچھا بھلا ہنگامہ کھڑا ہوگیا۔ بلکہ یہ اسپراٹلی جزائر میں بیجنگ کے دعووں اور علاقہ جاتی حدود کے معاملے پر امریکا کی جانب سے ایک بڑا چیلنج سمجھا جا رہا ہے۔

امریکی بحریہ کی اس حرکت پر بیجنگ کی جانب سے بہت سخت ردعمل سامنے آیا ہے، جس نے کہا ہے کہ اگر امریکا باز نہ آیا تو علاقے میں ایک چھوٹا سا واقعہ بھی جنگ کا سبب بن سکتا ہے۔ بحیرۂ جنوبی چین کا یہ علاقہ دنیا کے مصروف ترین بحری راستوں میں سےایک ہے۔

امریکی وزیر دفاع ایش کارٹر نے جنوبی کوریا روانہ ہوتے ہوئے صحافیوں سے کہا کہ جنوبی بحیرۂ چین میں متنازع دعوے اور ان تنازعات کی اہمیت علاقے کے کئی ممالک پر اثرانداز ہو رہی ہے جو خطے میں امریکا کے ساتھ سیکورٹی تعاون کو بڑھانا چاہ رہے ہیں۔

کارٹر نے کہا کہ ملائیشیا میں آئندہ دفاعی اجلاس میں جنوبی بحیرۂ چین کا معاملہ بھی زیر غور آئے گا، جن میں سب سے نمایاں چین کی مصنوعی جزائر بنانے کی رفتار اور فوجی سرگرمیاں ہیں۔

کارٹر اتوار کو جنوبی کوریا کے دارالحکومت سیول پہنچے ہیں اور سوموار کو ملک کے دفاعی حکام سے بات چیت کریں گے جس کی توجہ شمالی کوریا کے جوہری اور میزائل پروگرام پر ہوگی۔ وہ بعد ازاں جنوب مشرقی ایشیا کے وزرائے دفاع سے ملاقات کے لیے ملائیشیا جائیں گے، جہاں چین کے وزیر دفاع چانگ وان چوان بھی موجود ہوں گے۔


متعلقہ خبریں


علاقائی مسائل خطے میں حل ہونے چاہئیں، دوسرے ممالک کی مداخلت قبول نہیں: چین کا واضح اعلان وجود - هفته 10 ستمبر 2016

چین نے کہا ہے کہ علاقائی مسائل علاقے میں حل ہونے چاہئیں، کسی دوسرے کی مداخلت قبول نہیں۔ یہ بات مشرقی ایشیائی اجلاس کے بعد بحیرۂ جنوبی چین کے معاملے پر سوالات اٹھنے پر چینی نائب وزیر خارجہ لیو چینمن نے کہی۔ گو کہ انہوں نے کسی ملک کا نام نہیں لیا لیکن وہ ایک صحافی کے سوال کا جواب دے رہے تھے جنہوں نے پوچھا تھا کہ جاپان اور امریکا کے رہنماؤں نے بحیرۂ جنوبی چین کے حوالے سے تشویش ظاہر کی ہے۔ جس پر نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ "غیر متعلقہ ممالک اس وقت مداخلت کرنا پسند کرتے ہیں جب و...

علاقائی مسائل خطے میں حل ہونے چاہئیں، دوسرے ممالک کی مداخلت قبول نہیں: چین کا واضح اعلان

چینی وزیر دفاع نے عوام کو تیسری عالمی جنگ سے خبردار کردیا وجود - جمعه 12 اگست 2016

عالمی ثالثی عدالت کی جانب سے جنوبی بحیرۂ چین میں چین کی جاری سرگرمیوں کو غیر قانونی قرار دیے جانے کے بعد چینی وزیر دفاع چانگ وانچوان نے اپنے شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ تیسری عالمی جنگ کے لیے تیار ہو جائیں۔ یہ فیصلہ رواں سال 12 جون کو ہیگ میں واقع مستقل ثالثی عدالت (پی سی اے) نے دیا تھا جس نے جنوبی بحیرۂ چین میں چینی دعووں کو غیر قانونی و بے بنیاد قرار دیا تھا۔ چین عہد کرچکا ہے کہ وہ اس فیصلے کی پروا نہیں کرے گا اور اپنی سالمیت کی حفاظت کرے گا۔ وانچوان نے مبینہ طور ...

چینی وزیر دفاع نے عوام کو تیسری عالمی جنگ سے خبردار کردیا

بحیرۂ جنوبی چین کا بحران، امریکا ڈرون آبدوزیں بھیجے گا وجود - منگل 19 اپریل 2016

بحیرۂ جنوبی چین میں چین کی موجودگی میں اضافے کو دیکھتے ہوئے امریکا نے اپنی نئی فوجی ٹیکنالوجی کو آزمانے کا فیصلہ کیا ہے، یہ ہیں ڈرون آبدوزیں۔ گزشتہ چھ ماہ میں پینٹاگون نے اپنے اس "خفیہ" پروگرام پر سے بارہا پردہ اٹھایا ہے، جو زیر آب چلنے والی ایسی آبدوزوں کے حوالے سے ہے، جس میں کوئی اہلکار نہیں ہوگا۔ یوں امریکا اس اہم علاقے میں چین کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کو چیلنج کرنے کی کوشش کرے گا۔ امریکی وزیر دفاع آشٹن کارٹر نے ایشیا میں فوجی حکمت عملی کے حوالے سے ایک تقریر میں خا...

بحیرۂ جنوبی چین کا بحران، امریکا ڈرون آبدوزیں بھیجے گا

امریکی وزیر دفاع کا دورہ، بحیرۂ جنوبی چین کا تنازع شدت اختیارکرگیا وجود - جمعرات 05 نومبر 2015

بحیرۂ جنوبی چین کا تنازع مزید شدت اختیار کرگیا ہے جہاں ایک طرف چین کا کہنا ہے کہ ذرا سی غفلت کسی جنگ کا پیش خیمہ ہو سکتی ہے، وہیں امریکا کے وزیر دفاع ایش کارٹر بھی علاقے میں پہنچ رہے ہیں۔ ایش کارٹر گزشتہ دو دنوں سے ملائیشیا کے شہر کوالالمپور میں موجود ہیں، جہاں ایشیائی وزرائے دفاع کی کانفرنس منعقد ہوئی اور اب وہ جمعرات کو امریکی طیارہ بردار جہاز تھیوڈور روزویلٹ پر آئیں گے۔ یہ گویا چین کے دعووں سے امریکا کی براہ راست ٹکر کا اعلان ہے، جو پورے بحیرۂ جنوبی چین کو اپنا علاقہ سم...

امریکی وزیر دفاع کا دورہ، بحیرۂ جنوبی چین کا تنازع شدت اختیارکرگیا

مضامین
جامہ عریانی کا قامت پہ مری آیا ہے راست
(ماجرا۔۔محمد طاہر)
وجود بدھ 16 اکتوبر 2019
جامہ عریانی کا قامت پہ مری آیا ہے راست <br>(ماجرا۔۔محمد طاہر)

کامی یاب مرد۔۔
(علی عمران جونیئر)
وجود بدھ 16 اکتوبر 2019
کامی یاب مرد۔۔<br> (علی عمران جونیئر)

تری نگاہِ کرم کوبھی
منہ دکھانا تھا !
(ماجرا۔۔محمد طاہر)
وجود منگل 15 اکتوبر 2019
تری نگاہِ کرم کوبھی <br>منہ دکھانا تھا ! <br>(ماجرا۔۔محمد طاہر)

معاہدے سے پہلے جنگ بندی سے انکار
(صحرا بہ صحرا..محمد انیس الرحمن)
وجود منگل 15 اکتوبر 2019
معاہدے سے پہلے جنگ بندی سے انکار <br>(صحرا بہ صحرا..محمد انیس الرحمن)

ہاتھ جب اس سے ملانا تو دبا بھی دینا
(ماجرا۔۔۔محمدطاہر)
وجود پیر 14 اکتوبر 2019
ہاتھ جب اس سے ملانا تو دبا بھی دینا<br> (ماجرا۔۔۔محمدطاہر)

وزیراعلیٰ سندھ کی گرفتاری کے امکانات ختم ہوگئے۔۔۔؟
(سیاسی زائچہ..راؤ محمد شاہد اقبال)
وجود پیر 14 اکتوبر 2019
وزیراعلیٰ سندھ کی گرفتاری کے امکانات ختم ہوگئے۔۔۔؟<br>(سیاسی زائچہ..راؤ محمد شاہد اقبال)

پانچ کیریکٹر،ایک کیپٹل۔۔
(عمران یات..علی عمران جونیئر)
وجود پیر 14 اکتوبر 2019
پانچ کیریکٹر،ایک کیپٹل۔۔ <br>(عمران یات..علی عمران جونیئر)

طالبان تحریک اور حکومت.(جلال نُورزئی) قسط نمبر:3 وجود بدھ 09 اکتوبر 2019
طالبان تحریک اور حکومت.(جلال نُورزئی)  قسط نمبر:3

دودھ کا دھلا۔۔ (علی عمران جونیئر) وجود بدھ 09 اکتوبر 2019
دودھ کا دھلا۔۔ (علی عمران جونیئر)

سُکھی چین کے 70 سال سیاسی
(زائچہ...راؤ محمد شاہد اقبال)
وجود پیر 07 اکتوبر 2019
سُکھی چین کے 70 سال  سیاسی <Br>(زائچہ...راؤ محمد شاہد اقبال)

دنیا کے سامنے اتمام حجت کردی گئی!
(صحرا بہ صحرا..محمد انیس الرحمن)
وجود پیر 07 اکتوبر 2019
دنیا کے سامنے اتمام حجت کردی گئی! <br>(صحرا بہ صحرا..محمد انیس الرحمن)

حدِ ادب ۔۔۔۔۔۔(انوار حُسین حقی) وجود بدھ 02 اکتوبر 2019
حدِ ادب ۔۔۔۔۔۔(انوار حُسین حقی)

اشتہار