وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

حجازِ مقدس کی اولین و نایاب ترین تصاویر

بدھ 23 ستمبر 2015 حجازِ مقدس کی اولین و نایاب ترین تصاویر

مسجد حرام کی وہ نایاب تصویر، جو مصری فوٹوگرافر محمد صادق بے نے 1880ء میں لی تھی۔ یہ کیمرے کے ذریعے کھینچی گئی مسجد حرام کی پہلی تصویر ہے

مسجد حرام کی وہ نایاب تصویر، جو مصری فوٹوگرافر محمد صادق بے نے 1880ء میں لی تھی۔ یہ کیمرے کے ذریعے کھینچی گئی مسجد حرام کی پہلی تصویر ہے

حج بیت اللہ کی خواہش ہر مسلمان کے دل میں رہتی ہے۔ آج وقوفِ عرفات کے موقع پر دنیا بھر میں براہ راست دکھائے گئے روح پرور مناظر سے اس خواہش میں مزید اضافہ ہوا ہے۔ اس جدید دور میں تیز رفتار سفر اور بہترین سہولیات کی وجہ سے حج ماضی کے مقابلے میں بہت آسان ہوگیا ہے لیکن آپ ماضی میں جھانکیں تو اندازہ ہوتا ہے کہ سفر کی صعوبتیں اور مشکلات کسے کہتے ہیں اور آخر حج کی اتنی فضیلت کیوں ہے۔ بلاشبہ ایک صدی قبل حج دنیا کے مشکل ترین سفروں میں سےایک تھا۔

محمد صادق بے، یا صادق پاشا، بھی انہی خوش نصیبوں میں سے ایک ہیں جنہوں نے آج سے کوئی ڈیڑھ سو سال قبل حجاز مقدس کو اپنی نظروں سے دیکھا لیکن ان کا سفر اس لیے سب سے مختلف تھا کیونکہ انہوں نے صرف خود نہیں دیکھا، بلکہ دنیا کو بھی دکھایا۔ محمد صادق وہ پہلے شخص تھے، جنہوں نے مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کی تصاویر کھینچیں اور انہیں کتابوں میں شائع کرکے دنیا بھر میں پھیلایا۔

محمد صادق نے اپنا پہلا سفر حجاز جنوری 1861ء میں کیاتھا۔ وہ قاہرہ سے بذریعہ سوئز مدینہ منورہ پہنچے تھے اور 12 فروری 1861ء کی دوپہر مسجد نبوی، گنبد حضراء، میناروں اور شہر کے اردگرد کی شاندار تصاویر لیں۔ یہ مدینہ منورہ کی اولین تصاویر تھیں جو کسی کیمرے سے لی گئیں اور خود کرنل محمد صادق کو بھی یہ بات معلوم تھی کہ یہ کارنامہ ان سے پہلے کسی نے انجام نہیں دیا۔

پیرس میں دوران تعلیم محمد صادق کی فوٹوگرافی میں دلچسپی پیدا ہوئی اور پھر انہوں نے یہ کارنامہ انجام دیا

پیرس میں دوران تعلیم محمد صادق کی فوٹوگرافی میں دلچسپی پیدا ہوئی اور پھر انہوں نے یہ کارنامہ انجام دیا

1832ء میں قاہرہ میں پیدا ہونے والے اور پیرس میں تعلیم حاصل کرنے والے محمد صادق انجینئر تھے۔ فرانس میں قیام کے دوران ہی انہیں فوٹوگرافی کا شوق ہوا اور پھر جہاں وہ ہوتے وہاں اُن کا کیمرہ ہوتا۔ مسجد نبوی کی تاریخی تصاویر لینے کے 19 سال بعد کرنل صادق کو مصری حاجیوں کے قافلے کے ساتھ سفر مکہ کا پروانہ ملا۔ صحرائے سینا عبور کرکے اور بحیرۂ احمر کے ساحلوں کے ساتھ ساتھ سفر کرتے وہ ام القریٰ مکہ پہنچے۔ اس بار بیت اللہ، مسجد حرام، اس کے مختلف دروازوں، منیٰ اور میدان عرفات کی یادگار تصاویر ان کی کلیکشن کا حصہ بنیں۔ انہوں نے ایک مرتبہ پھر دربار نبوی پر حاضری بھی دی۔

ان دونوں سفروں اور ان میں کھینچی گئی نایاب تصاویر نے نہ صرف مصر و عثمانی سلطنت میں بلکہ دنیا بھر میں محمد صادق کو بہت عزت بخشی۔ 1881ء میں انہیں وینس میں جغرافیہ دانوں کی تیسری بین الاقوامی کانگریس میں مدعو کیا گیا جس میں محمد صادق حجاز مقدس کی تصاویر اور اس سفر کے احوال کے ساتھ شریک ہوئے اور نمائش میں سونے کا تمغہ حاصل کیا۔ محمد صادق نے لیفٹیننٹ جنرل کی حیثیت سے فوج کو خیرباد کہا اور 1896ء میں حج کے بارے میں اپنی چوتھی کتاب بھی شائع کی۔ 1902ء میں آپ سینا کے علاقے العریش میں گورنر مقرر ہوئے لیکن اس عہدے پر صرف دو مہ ہی گزار سکے کہ انتقال کرگئے۔

صادق بے کی چند نایاب تصاویر آپ ذیل میں دیکھ سکتے ہیں:

Sadiq-Bey-Masjid-e-Nabawi

مدینہ منورہ کی ایک نایاب تصویر، فوٹوگرافر محمد صادق بے

منیٰ میں حاجیوں کے خیمے

منیٰ میں حاجیوں کے خیمے، فوٹوگرافر محمد صادق بے

Sadiq-Bey-The-Mala-cemetery

مکہ مکرمہ کا ایک قبرستان، فوٹوگرافر محمد صادق بے


متعلقہ خبریں


سعودی عرب میں چوبیس گھنٹوں میں چار دھماکے: بدبختوں نے مقدس سرزمین کو نشانے پر لے لیا! وجود - منگل 05 جولائی 2016

دہشت گردوں نے رمضان المبارک کے آخری عشرے کی مبارک ترین ساعتوں میں مقدس ترین سرزمین سعودی عرب کو اپنے نشانے پر لے لیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سعودی عرب کے شہر قطیف میں مسجد کے قریب ایک خودکش حملہ ہوا جس میں کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی تاہم مدینہ منورہ میں خودکش دھماکے کے نتیجے میں 2 سیکیورٹی اہلکار جاں بحق ہوگئےہیں۔ تفصیلات کے مطابق قطیف میں دھماکا نماز مغرب کے وقت ہوا جب خودکش حملہ آور نے مسجد کے دروازے پر آکر خود کو دھماکے سے اڑا لیا، دھماکے کے وقت علاقے میں لوگوں...

سعودی عرب میں چوبیس گھنٹوں میں چار دھماکے: بدبختوں نے مقدس سرزمین کو نشانے پر لے لیا!

حجاج کی شیطان کو کنکریاں مارنے کے لئے منیٰ آمد وجود - جمعرات 24 ستمبر 2015

حجاج مزدلفہ میں شب بسری کے بعد شیطان کو کنکریاں مارنے اور سنت ابراہیمی کی پیروی میں قربانی اور دیگر مناسک کی ادائی کے لئے جوق در جوق منیٰ پہنچ رہے ہیں۔ اللہ کے مہمانوں نے گزشتہ روز عرفات کے میدان میں نماز ظہر اور عصر ایک ساتھ ادا کی جس کے بعد وہ مزدلفہ روانہ ہو گئے جہاں انہوں نے مغرب اور عشاء کی نمازیں ایک ساتھ ادا کیں اور کھلے آسمان تلے رات اللہ کی عبادت میں گزاری۔ دوسری طرف مسجد الحرام اور مسجد نبوی میں نماز عید کے عظیم الشان اجتماعات ہوئے۔جہاں مسلمانوں کی بڑی تعداد...

حجاج کی شیطان کو کنکریاں مارنے کے لئے منیٰ آمد

آبِ زمزم ایک ارضیاتی معجزہ علیم احمد - جمعرات 17 ستمبر 2015

حج کے دن ہوں ، عمرے کے مہینے یا طوافِ کعبہ کا قصد–زائرینِ مکہ میں سے شاید ہی کوئی ایسا ہو جو اِس شہرِ امن گیا ہو اور آبِ زم زم کا تبرک لیے بغیر واپس آیا ہو۔ آج ہر سال تقریبا30 لاکھ حجاجِ کرام فریضہ حج ادا کرنے مکہ مکرمہ آتے ہیں، سیر ہو کر آبِ زم زم پیتے ہیں ا ور بوتلیں بھر بھر کر اپنے ساتھ بطورِ مقدس نشانی لے جاتے ہیں۔ اسے پینے والے بھی اسے پُر تاثیر پاتے ہیں۔ ان کی تھکن دور ہوتی ہے اور انہیں حیرت انگیز تازگی کا احساس بھی ہوتا ہے۔ کہنے والے تو یہاں تک کہتے ہیں کہ انہوں نے دنی...

آبِ زمزم ایک ارضیاتی معجزہ

سعودی عرب : حرمِ پاک میں کرین گرنے سے سینکڑوں شہادتیں وجود - جمعه 11 ستمبر 2015

مسلمانوں کے مقدس ترین شہر مکہ کی مسجد الحرام میں طوفانی بارش کے باعث کرین گر گئی ہے جس سے سینکڑوں حجاج کرام کی شہادت کی اطلاعات ہیں جبکہ کئی عازمین حج زخمی بھی ہوگئے ہیں۔ اب تک جو خبریں ملی ہیں ان کے مطابق 52 حاجی شہید اور 200 زخمی ہوئے ہیں۔ سعودی ذرایع ابلاغ نے تصدیق کی ہے کہ مکہ مکرمہ میں تعمیراتی کاموں کے لئے نصب کرین طوفانی بارش کی وجہ سے گرگئی ہے جس کے باعث وہاں موجود متعدد لوگ زخمی ہوئے ہیں ۔ وجود ڈاٹ کام کو جائے حادثہ سے ملنے والی تازہ ترین تصاویر میں حادثے کے مناظر...

سعودی عرب : حرمِ پاک میں کرین گرنے سے سینکڑوں شہادتیں