وجود

... loading ...

وجود

امریکہ چین کے کارپوریٹ، توانائی اور تکنیکی ترقی کے خلاف تیار ہے، چینی میڈیا

بدھ 31 اگست 2022 امریکہ چین کے کارپوریٹ، توانائی اور تکنیکی ترقی کے خلاف تیار ہے، چینی میڈیا

چینی میڈیا نے کہا ہے کہ امریکہ چین کے کارپوریٹ، توانائی اور تکنیکی ترقی کے خلاف تیار ہے۔ میڈیا رپورٹ میں کہا گیا کہ اب یہ تلخ حقیقت بن چکی ہے کہ امریکی حکومت کی طرف سے متعدد قوانین کو پاس کرنا اور ان کا اعلان کرنا واضح طور پر یہ ظاہر کرتا ہے کہ وہ چین کے کارپوریٹ، توانائی اور تکنیکی ترقی کے خلاف تیار ہے۔ گوادر پرو کے مطابق ابھی حال ہی میں امریکی صدر جو بائیڈن نے ‘انفلیشن ریڈکشن ایکٹ (آئی آر اے) ” کے نام سے ایک نئی قانون سازی پر دستخط کیے ہیں جس میں صحت کی دیکھ بھال اور دوائیں بنانے میں نام نہاد بڑی سرمایہ کاری شامل ہے جسے زیادہ سستی بنانا، موسمیاتی تبدیلی سے لڑنا اور بڑی کارپوریشنوں پر ٹیکس لگانا شامل ہے۔ گوادر پرو کے مطابق یو ایس انڈیپنڈنٹ اکنامسٹ اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ آئی آر اے افراط زر کی شرح کو ”کم کرنے” کے لیے موثر نہیں ہوگا۔ بین الاقوامی میڈیا نے اسے بلڈ بیک بیٹر بل کا ”سلمڈ ڈاؤن” ورژن قرار دیا ہے، جس کا مقصد ملک کے سماجی تحفظ کے نیٹ ورک میں تاریخی سرمایہ کاری کرنا ہے۔ گوادر پرو کے مطابق دوسری طرف وائٹ ہاؤس اب بھی یقین رکھتا ہے کہ آئی آر اے امریکی تاریخ میں موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے کے لیے سب سے بڑی سرمایہ کاری لائے گا ہے، دوائیوں کی قیمت کم ہو گی اور کارپوریشنوں پر ٹیکس بڑھے گا لیکن بین الاقوامی ماہرین اس کے بلند و بالا دعووں کی تردید کرتے ہیں۔ گوادر پرو کے مطابق امریکی صدر بائیڈن نے زور دے کر کہا کہ اس قانون سے امریکیوں کو مہنگائی میں ریلیف ملے گا لیکن ایک ابتدائی مطالعہ سے پتہ چلتا ہے کہ حقیقت میں آئی آر اے ممکنہ طور پر قیمتوں کو کم نہیں کرے گا۔ اس سلسلے میں، پن ورٹن بجٹ ماڈل Penn Wharton Budget Model (PWBM) نے اس بات پر زور دیا کہ آئی آر اے کا افراط زر پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ گوادر پرو کے مطابق مزید برآں کانگریس کے بجٹ آفس ( سی بی او )، ایک وفاقی ایجنسی جو کہ کانگریس کو بجٹ اور اقتصادی معلومات فراہم کرتی ہے، اس بات کی بھی تصدیق کرتی ہے کہ آئی آر اے ابتدا میں مہنگائی پر بمشکل کوئی کمی کرے گا اور اسے اوپر کی طرف بھی دھکیل سکتا ہے۔ اس نے پیش گوئی کی ہے کہ اس کا 2022 میں افراط زر پر بہت کم اثر پڑے گا اور 2023 میں یہ افراط زر کو 0.1 فیصد پوائنٹ کم اور 0.1 فیصد پوائنٹ زیادہ کے درمیان بدل دے گا جو اس وقت ہے۔ گوادر پرو کے مطابق واضح طور پرآئی آر اے واشنگٹن کی تنہائی پسند ذہنیت کو ظاہر کرتا ہے۔ یہ امریکی حکومت کے انتظامات کی ایک اور منصوبہ بند اور واضح اسکیم ہے جس میں متنوع پیداواری ذرائع اور سبز توانا ئی کے مربوط قائل کے لحاظ سے چینی عالمی برتری کو شامل کیا گیا ہے۔ اس طرح یو ایس آئی آر اے ستم ظریفی سے صرف اپنی بھاگتی ہوئی افراط زر کو ہوا دے سکتا ہے، عالمی صنعتی سلسلہ کو مزید متاثر کر سکتا ہے، اور آب و ہوا کے اہداف کو حاصل کرنے سے روک سکتا ہے۔ لہذا عالمی چپس اور آئی آر اے کو ختم کرنے سے امریکی حکومت کے لیے کوئی خاطر خواہ اقتصادی فائدہ نہیں ہوگا۔ گوادر پرو کے مطابق آئی آر اے نے حال ہی میں منظور شدہ چپس ایکٹ کی پیروی کی، جس میں اس بات پر زور دیا گیا ہے کہ کس طرح واشنگٹن کو لگا کہ وہ چین کی بڑھتی ہوئی ٹیکنالوجی صلاحیتوں اور نئی توانائی گاڑی (NEV) ٹیکنالوجی میں اپنی نام نہاد بالادستی کو برقرار رکھنے میں اس کی اپنی اندرونی نااہلی سے خوفزدہ ہے۔ دنیا کی دوسری سب سے بڑی معیشت کے خلاف شروع کیا ہے۔ یہ اشارہ کرتا ہے کہ امریکہ اب ایک منصفانہ اور شفاف بین الاقوامی مقابلے سے ”بھاگ رہا ہے”۔ گوادر پرو کے مطابق تاہم اس کی دلکش دفعات اس بات کی نشاندہی کرتی ہیں کہ ٹیکس کریڈٹ کے لیے اہل ہونے کے لیے این ا ی وی بنانے والوں کو شمالی امریکہ میں گاڑیوں کو اسمبل کرنا چاہیے اور بیٹری کے بڑے اجزائ، بشمول لیتھیم، نکل اور کوبالٹ جیسی دھاتوں کا ایک خاص حصہ امریکہ یا ان ممالک سے حاصل کرنا چاہیے جن کے پاس ہے۔ امریکہ کے ساتھ آزاد تجارتی معاہدے اس طرح آئی آر اے بظاہر امریکی حکومت کی ایک ”اقتصادی بلاک” بنانے کی ایک اور ناکام کوشش ہے جو چینی صنعتی نمو کو ”روکنے” اور دنیا میں اس کے سپلائی چین کے طریقہ کار کو خراب کرنے کے لیے ہے۔ گوادر پرو کے مطابق لہٰذا،آئی آر اے امریکی تسلط پسند ذہنیت، زبردستی معاشی سفارت کاری، اور مشروط سیاسی رسائی کا حقیقی عکاس ہے اور چین میں پوری ہائی ٹیکنالوجی صنعتی سلسلہ کو دبانے کے امریکہ کے مذموم عزائم اور بدنیتی پر مبنی منصوبوں کو بے نقاب کرتا ہے۔ گوادر پرو کے مطابق ایسا لگتا ہے کہ امریکہ کا ”سیاسی میدان” معاشی طور پر متعصب اور بین الاقوامی طور پر متعصب ہے۔ ڈیموکریٹس اور ریپبلکنز کی طرف سے آئی آر اے کی مشترکہ منظوری نے چین کے تئیں ان کی اندرونی دشمنی اور انا پرستانہ روش کی تصدیق کر دی ہے۔ یہ درحقیقت بین الاقوامی مسابقت کی حقیقی روحوں کا ”قتل” ہے، اشیا اور خدمات کے آزادانہ بہاؤ پر زور دیتا ہے، زبردست عالمگیریت اور آخری لیکن کم از کم مغربی ہائپڈ کثیر ثقافتی نہیں ہے۔ گوادر پرو کے مطابق مزید برآں آئی آر اے کا مطلب صرف زیادہ ٹیکس، زیادہ مہنگے توانائی کے بل اور زیادہ جارحانہ اندرونی محصولات کی خدمت کے آڈٹ ہوں گے اور کانگریس کے بجٹ آفس نے ایک تجزیے میں کہا کہ یہ ایکٹ امریکہ میں مہنگائی سے نمٹنے کے لیے کچھ نہیں کرے گا۔


متعلقہ خبریں


بھارت کو اقتصادی محاذ پر جھٹکا، جی ڈی پی میں کمی کا امکان وجود - منگل 06 دسمبر 2022

عالمی بنک نے بھارت کو اقتصادی محاذ پر جھٹکا لگنے کی پیش گوئی کرتے ہوئے مالی سال 2022-23میں بھارتی معیشت کی شرح نمو گھٹا کر 6.9فیصد رہنے کا امکان ظاہر کیا ہے۔ عالمی بینک نے اپنی انڈیا ڈیولپمنٹ اپ ڈیٹ میں مانیٹری پالیسی میں سختی اور اجناس کی قیمتوں میں اضافے کو ملک کی ترقی کو متاثر...

بھارت کو اقتصادی محاذ پر جھٹکا، جی ڈی پی میں کمی کا امکان

بلائنڈ ٹی 20 ورلڈ کپ: بھارت کا سیاسی بنیاد پر پاکستانی ٹیم کو ویزا دینے سے انکار وجود - منگل 06 دسمبر 2022

بھارت نے بلائنڈ ٹی 20 ورلڈ کپ کے لیے ٹورنامنٹ کی فیورٹ پاکستانی ٹیم کو سیاسی بنیاد پر ویزا دینے سے انکار کر دیا۔ پاکستان بلائنڈ کرکٹ کونسل (پی بی سی سی) نے ایک بیان میں کہا کہ بھارت نے ٹورنامنٹ کے لیے ٹیم کو ویزا دینے سے انکار کیا ہے جو 5 سے 17 دسمبر تک کھیلا جارہا ہے۔ بیان میں ک...

بلائنڈ ٹی 20 ورلڈ کپ: بھارت کا سیاسی بنیاد پر پاکستانی ٹیم کو ویزا دینے سے انکار

ارشد شریف قتل : میڈیکل رپورٹ غیر تسلی بخش قرار، مقدمہ درج کرنے کا حکم وجود - منگل 06 دسمبر 2022

سپریم کورٹ آف پاکستان نے از خود نوٹس لیتے ہوئے مقتول سینئر صحافی ارشد شریف کی میڈیکل رپورٹ غیر تسلی بخش قرار د ے کر قتل کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا۔ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس عمرعطا بندیال کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ نے ارشد شریف قتل کیس کے ازخود نوٹس پر سماعت کی، جسٹس اع...

ارشد شریف قتل : میڈیکل رپورٹ غیر تسلی بخش قرار، مقدمہ درج کرنے کا حکم

بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار وجود - منگل 06 دسمبر 2022

بابری مسجد کی شہادت کو30 برس مکمل ہو گئے ہیں جسے 1992 ء میں آج کے دن ہندو توا تنظیموں بھارتیہ جنتا پارٹی اور راشٹریہ سوائم سیوک سنگھ کی قیادت میں ہندو بلوائیوں نے اس وقت کی کانگریس حکومت کی خاموش منظوری کے ساتھ شہید کیا تھا اور اس طرح بھارت کا انتہا پسند چہرہ دنیا بھر کے سامنے بے...

بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار

برطانیہ میں قورمے کی توہین، پاکستان اور بھارت ایک ساتھ ٹوٹ پڑے وجود - منگل 06 دسمبر 2022

برطانیہ میں قورمے کی توہین پر پاکستان اور بھارت ایک پیج پر آ گئے، تین دسمبر کو برطانوی فوڈ نیٹ ورک ٹیسٹی یو کے نے قورمہ بنانے کی ویڈیو جاری کی جس کے بعد پورا برِصغیر ٹوئٹر پر آ ٹوٹا۔ قورمے کی متنازع ریسیپی میں چاول ڈال دیے گئے، حد تب ہوئی جب اس میں بے دھڑک پالک شامل کر دی گئی۔ قو...

برطانیہ میں قورمے کی توہین، پاکستان اور بھارت ایک ساتھ ٹوٹ پڑے

پاکستان کو ترسیلات میں 7.3 فیصد تک کمی ہوسکتی ہے، ورلڈ بینک وجود - منگل 06 دسمبر 2022

ورلڈ بینک نے کہا ہے کہ پاکستان کو ترسیلات میں 7.3 فیصد تک کمی ہوسکتی ہے۔ ورلڈ بینک نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ پاکستان کو گزشتہ سال کے 31 ارب ڈالر کے مقابلے 2022 میں 29 ارب ڈالر کی ترسیلات ہوں گی۔ رپورٹس کے مطابق بنگلادیش اور سری لنکا کو بھی ترسیلات کی مد میں کمی متوقع ہے، رواں برس ...

پاکستان کو ترسیلات میں 7.3 فیصد تک کمی ہوسکتی ہے، ورلڈ بینک

تحریک انصاف کا الیکشن کراؤ ملک بچاؤ مہم شروع کرنے کا فیصلہ وجود - منگل 06 دسمبر 2022

پاکستان تحریک انصاف نے الیکشن کراؤ ملک بچاؤ مہم شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کی زیر صدارت لاہور کے ارکان پنجاب اسمبلی، ارکان قومی اسمبلی اور پارٹی رہنماؤں کا مشاورتی اجلاس ہوا، اجلاس میں شفقت محمود، حماد اظہر، میاں اسلم اقبال، فواد چودھری، ڈاکٹر یاسمین ر...

تحریک انصاف کا الیکشن کراؤ ملک بچاؤ مہم شروع کرنے کا فیصلہ

ڈاکٹر اسد مجید خان نے سیکریٹری خارجہ کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں سنبھال لیں وجود - پیر 05 دسمبر 2022

ڈاکٹر اسد مجید خان نے پاکستان کے31 ویں سیکریٹری خارجہ کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں سنبھال لیں۔ دفتر خارجہ کی ترجمان ممتاز زہرا بلوچ کی جانب سے ٹوئٹر پر جاری بیان کے مطابق ڈاکٹر اسد مجید خان نے پاکستان کے 31 ویں وزیر خارجہ کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں سنبھال لی ہیں۔ واضح رہے کہ دو ...

ڈاکٹر اسد مجید خان نے سیکریٹری خارجہ کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں سنبھال لیں

حکومت کے صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی کے ذریعے ہونے والے مذاکرات تعطل کا شکار وجود - پیر 05 دسمبر 2022

حکومت کے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کے ذریعے ہونے والے مذاکرات تعطل کا شکار ہو گئے ہیں۔ نجی ٹی وی کے مطابق حکومت کی جانب سے وزیر خزانہ اسحاق ڈار جبکہ پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کے ذریعے موجودہ سیاسی صورتحال پر بات جاری تھی۔ ذرائع کے مطابق مذاکرات کا سل...

حکومت کے صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی کے ذریعے ہونے والے مذاکرات تعطل کا شکار

ایران نے ہندوستان سے چائے، باسمتی چاول کی درآمد بند کردی وجود - پیر 05 دسمبر 2022

ایران نے گزشتہ ہفتے سے ہندوستان سے چائے اور باسمتی چاول کی درآمد کیلئے نئے معاہدوں پر دستخط کرنا بند کردیے ہیں۔ غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ایران نے گزشتہ ہفتے سے بھارت سے چائے اور باسمتی چاول کی درآمد کے لیے نئے معاہدوں پر دستخط کرنا بند کردیے ہیں۔ برآمدات کا سلسلہ یوں اچانک ...

ایران نے ہندوستان سے چائے، باسمتی چاول کی درآمد بند کردی

فلسطینیوں کی 1948ء میں بے دخلی پر مبنی فلم فرحہ کی ریلیز پر اسرائیل میں ہنگامہ وجود - پیر 05 دسمبر 2022

امریکی اسٹریمنگ سروس نیٹ فلکس نے سال 1948 میں لاکھوں فلسطینیوں کی بے دخلی پر مبنی اردنی فلم فرحہ ریلیز کردی، فلم ریلیز ہونے کے بعد اسرائیل کی جانب سے اس پر سخت تنقید کی گئی۔ یکم دسمبر کو نیٹ فلکس پر جاری ہونے والی اردنی فلم فرحہ، ایک 14 سالہ فلسطینی لڑکی کی کہانی ہے جس کا گاؤں اس...

فلسطینیوں کی 1948ء میں بے دخلی پر مبنی فلم فرحہ کی ریلیز پر اسرائیل میں ہنگامہ

لاہور دنیا کے آلودہ ترین شہروں میں سرفہرست، بیماریاں پھیلنے لگیں وجود - پیر 05 دسمبر 2022

دنیا کے آلودہ ترین شہروں میں لاہور پہلے نمبر پر رہا۔ صوبائی دارالحکومت لاہور کا ائیر کوالٹی انڈیکس 364 ریکارڈ کیا گیا جبکہ شہر میں اسموگ کے باعث بچوں اور بڑوں میں نزلے، زکام، چیسٹ انفیکشن، بخار اور سانس کی بیماریاں تیزی سے پھیلنے لگی ہیں۔ لاہور کے ہسپتالوں میں مریضوں کا رش لگ گیا...

لاہور دنیا کے آلودہ ترین شہروں میں سرفہرست، بیماریاں پھیلنے لگیں

مضامین
چائلڈپورنوگرافی وجود پیر 05 دسمبر 2022
چائلڈپورنوگرافی

بول کہ سچ زندہ ہے اب تک وجود پیر 05 دسمبر 2022
بول کہ سچ زندہ ہے اب تک

عوامی مقبولیت بھی پَل بھر کا تماشہ ہے وجود پیر 05 دسمبر 2022
عوامی مقبولیت بھی پَل بھر کا تماشہ ہے

عمرکومعاف کردیں وجود اتوار 04 دسمبر 2022
عمرکومعاف کردیں

ٹرمپ اور مفتے۔۔ وجود اتوار 04 دسمبر 2022
ٹرمپ اور مفتے۔۔

اب ایک اور عمران آرہا ہے وجود هفته 03 دسمبر 2022
اب ایک اور عمران آرہا ہے

اشتہار

تہذیبی جنگ
بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار وجود منگل 06 دسمبر 2022
بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار

1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی وجود پیر 05 دسمبر 2022
1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی

امریکا نے القاعدہ ، کالعدم ٹی ٹی پی کے 4رہنماؤں کوعالمی دہشت گرد قرار دے دیا وجود جمعه 02 دسمبر 2022
امریکا نے القاعدہ ، کالعدم ٹی ٹی پی کے 4رہنماؤں کوعالمی دہشت گرد قرار دے دیا

برطانیا میں سب سے تیز پھیلنے والا مذہب اسلام بن گیا وجود بدھ 30 نومبر 2022
برطانیا میں سب سے تیز  پھیلنے والا مذہب اسلام بن گیا

اسرائیلی فوج نے 1967 کے بعد 50 ہزار فلسطینی بچوں کو گرفتار کیا وجود پیر 21 نومبر 2022
اسرائیلی فوج نے 1967 کے بعد 50 ہزار فلسطینی بچوں کو گرفتار کیا

استنبول: خود ساختہ مذہبی اسکالر کو 8 ہزار 658 سال قید کی سزا وجود جمعه 18 نومبر 2022
استنبول: خود ساختہ مذہبی اسکالر کو 8 ہزار 658 سال قید کی سزا

اشتہار

شخصیات
موت کیا ایک لفظِ بے معنی جس کو مارا حیات نے مارا وجود هفته 03 دسمبر 2022
موت کیا ایک لفظِ بے معنی               جس کو مارا حیات نے مارا

ملک کے پہلے وزیراعظم لیاقت علی خان کے بیٹے اکبر لیاقت انتقال کر گئے وجود بدھ 30 نومبر 2022
ملک کے پہلے وزیراعظم لیاقت علی خان کے بیٹے اکبر لیاقت انتقال کر گئے

معروف صنعت کار ایس ایم منیر انتقال کر گئے وجود پیر 28 نومبر 2022
معروف صنعت کار ایس ایم منیر انتقال کر گئے
بھارت
بھارت کو اقتصادی محاذ پر جھٹکا، جی ڈی پی میں کمی کا امکان وجود منگل 06 دسمبر 2022
بھارت کو اقتصادی محاذ پر جھٹکا، جی ڈی پی میں کمی کا امکان

بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار وجود منگل 06 دسمبر 2022
بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار

1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی وجود پیر 05 دسمبر 2022
1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی

بھارت،پہلی سے آٹھویں جماعت کے اقلیتی طلباء کو اب اسکالر شپ نہیں ملے گی، بھارتی حکومت وجود پیر 05 دسمبر 2022
بھارت،پہلی سے آٹھویں جماعت کے اقلیتی طلباء کو اب اسکالر شپ نہیں ملے گی، بھارتی حکومت
افغانستان
کابل، پاکستانی سفارتی حکام پر فائرنگ، ناظم الامور محفوظ رہے، گارڈ زخمی وجود جمعه 02 دسمبر 2022
کابل، پاکستانی سفارتی حکام پر فائرنگ، ناظم الامور محفوظ رہے، گارڈ زخمی

افغان مدرسے میں زوردار دھماکے میں 30 افراد جاں بحق اور 24 زخمی وجود بدھ 30 نومبر 2022
افغان مدرسے میں زوردار دھماکے میں 30 افراد جاں بحق اور 24 زخمی

حنا ربانی کھر کی قیادت میں پاکستان کا اعلیٰ سطح کا وفد دورہ افغانستان کے لیے روانہ وجود منگل 29 نومبر 2022
حنا ربانی کھر کی قیادت میں پاکستان کا اعلیٰ سطح کا وفد دورہ افغانستان کے لیے روانہ
ادبیات
کراچی میں دو روزہ ادبی میلے کا انعقاد وجود هفته 26 نومبر 2022
کراچی میں دو روزہ ادبی میلے کا انعقاد

مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع کردار پرنئی کتاب شائع وجود هفته 23 اپریل 2022
مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع  کردار پرنئی کتاب شائع

مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار وجود بدھ 06 اپریل 2022
مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار