وجود

... loading ...

وجود

ہوا سے کاربن ڈائی آکسائیڈ صاف کرنے والی انقلابی ٹیکنالوجی متعارف

اتوار 13 فروری 2022 ہوا سے کاربن ڈائی آکسائیڈ صاف کرنے والی انقلابی ٹیکنالوجی متعارف

امریکی ماہرین نے حادثاتی طور پر ایسی نئی ٹیکنالوجی وضع کرلی ہے جسے استعمال کرتے ہوئے صرف چند منٹوں میں ہوا سے 99 فیصد کاربن ڈائی آکسائیڈ صاف کی جاسکتی ہے۔ میڈیارپورٹس کے مطابق یونیورسٹی آف ڈیلاویئر میں سائنسدانوں کی ایک ٹیم پچھلے کئی سال سے نئی قسم کے ایندھنی ذخیرہ خانے (فیول سیلز) تیار کرنے کی کوششوں میں مصروف تھی جنہیں ہائیڈروجن ایکسچینج میمبرین فیول سیلز کا نام دیا گیا تھا۔ اس تحقیق میں انہیں بدترین کامیابی کا سامنا ہوا کیونکہ تجرباتی فیول سیلز، کاربن ڈائی آکسائیڈ جذب کرنے کے معاملے میں بہت حساس تھے، جس کی وجہ سے وہ زیادہ دیر تک کام نہیں کر پاتے تھے۔ جب انہوں نے ایچ ای ایم ٹیکنالوجی کی اس خرابی کا بغور جائزہ لیا تو معلوم ہوا کہ فیول سیل اپنے اندر داخل ہونے والی ہوا میں موجود تقریبا تمام کاربن ڈائی آکسائیڈ کو بہت تیزی سے جذب کررہا تھا۔ایچ ای ایم فیول سیلز کا منصوبہ تو ناکام ہوگیا لیکن سائنسدانوں نے اسی خامی کو استعمال کرتے ہوئے ایک ایسے نظام پر کام شروع کردیا جو ہوا سے کاربن ڈائی آکسائیڈ الگ کرنے کے موجودہ طریقوں سے بہتر ہو۔اب انہوں نے اس ٹیکنالوجی کو پختہ کرتے ہوئے ایک پروٹوٹائپ سسٹم بھی تیار کرلیا جس کی جسامت کولڈ ڈرنک کے ایک چھوٹے کین (سافٹ ڈرنک ٹِن)جتنی ہے لیکن وہ صرف ایک منٹ میں 10 لٹر ہوا سے 99 فیصد تک کاربن ڈائی آکسائیڈ الگ کرکے ہوا کو صاف کرتا ہے۔ امید ہے کہ اس پروٹوٹائپ کی بنیاد پر ایسی بڑی مشینیں بنائی جاسکیں گی جو کم خرچ پر، کم توانائی استعمال کرتے ہوئے، بہت تیزی سے ہوا کو کاربن ڈائی آکسائیڈ سے پاک کرسکیں گی۔دیگر ماہرین نے اس ایجاد کو سراہتے ہوئے خبردار کیا کہ کاربن ڈائی آکسائیڈ جذب کرنے والے نظاموں اور آلات سے یہ ہر گز نہیں سمجھنا چاہیے کہ کاربن ڈائی آکسائیڈ کا اخراج کم کرنے کی ضرورت ختم ہوگئی ہے۔اس طرف بھی توجہ دینے کی اشد ضرورت ہے کیونکہ ماحولیاتی آلودگی اتنا سادہ مسئلہ نہیں کہ جسے صرف ایک ایجاد سے مکمل طور پر حل کیا جاسکے۔


متعلقہ خبریں


سال 2021 ریکارڈ پر موجود گرم ترین 5 سالوں میں سے ایک تھا، یورپی سائنسدان وجود - بدھ 12 جنوری 2022

یورپی سائنسدانوں نے کہا ہے کہ گزشتہ سال 2021 اب تک ریکارڈ پر موجود گرم ترین 5 سالوں میں سے ایک تھا۔ یورپی یونین کی انفارمیشن ایجنسی کوپرنیکس کلائمیٹ چینج سروس (The EU's Copernicus Climate Change Service) کی رپورٹ میں کہا گیا کہ 2021 میں یورپ، شمالی امریکا اور بحیرہ روم میں بھی در...

سال 2021 ریکارڈ پر موجود گرم ترین 5 سالوں میں سے ایک تھا، یورپی سائنسدان

مضامین
تیسرے مارشل لاء کی کھائی وجود جمعه 09 دسمبر 2022
تیسرے مارشل لاء کی کھائی

بھی ۔کاری وجود جمعه 09 دسمبر 2022
بھی ۔کاری

شہر میں میلہ سجاہے۔۔۔ آئیں! کتاب خریدتے ہیں وجود جمعرات 08 دسمبر 2022
شہر میں میلہ سجاہے۔۔۔ آئیں! کتاب خریدتے ہیں

معاشی جادوگری کی ضرورت وجود بدھ 07 دسمبر 2022
معاشی جادوگری کی ضرورت

لوٹادو وہ بچپن کا ساون۔۔۔ وجود بدھ 07 دسمبر 2022
لوٹادو وہ بچپن کا ساون۔۔۔

ہم تو ڈوبے ہیں صنم وجود بدھ 07 دسمبر 2022
ہم تو ڈوبے ہیں صنم

اشتہار

تہذیبی جنگ
بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار وجود منگل 06 دسمبر 2022
بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار

1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی وجود پیر 05 دسمبر 2022
1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی

امریکا نے القاعدہ ، کالعدم ٹی ٹی پی کے 4رہنماؤں کوعالمی دہشت گرد قرار دے دیا وجود جمعه 02 دسمبر 2022
امریکا نے القاعدہ ، کالعدم ٹی ٹی پی کے 4رہنماؤں کوعالمی دہشت گرد قرار دے دیا

برطانیا میں سب سے تیز پھیلنے والا مذہب اسلام بن گیا وجود بدھ 30 نومبر 2022
برطانیا میں سب سے تیز  پھیلنے والا مذہب اسلام بن گیا

اسرائیلی فوج نے 1967 کے بعد 50 ہزار فلسطینی بچوں کو گرفتار کیا وجود پیر 21 نومبر 2022
اسرائیلی فوج نے 1967 کے بعد 50 ہزار فلسطینی بچوں کو گرفتار کیا

استنبول: خود ساختہ مذہبی اسکالر کو 8 ہزار 658 سال قید کی سزا وجود جمعه 18 نومبر 2022
استنبول: خود ساختہ مذہبی اسکالر کو 8 ہزار 658 سال قید کی سزا

اشتہار

شخصیات
موت کیا ایک لفظِ بے معنی جس کو مارا حیات نے مارا وجود هفته 03 دسمبر 2022
موت کیا ایک لفظِ بے معنی               جس کو مارا حیات نے مارا

ملک کے پہلے وزیراعظم لیاقت علی خان کے بیٹے اکبر لیاقت انتقال کر گئے وجود بدھ 30 نومبر 2022
ملک کے پہلے وزیراعظم لیاقت علی خان کے بیٹے اکبر لیاقت انتقال کر گئے

معروف صنعت کار ایس ایم منیر انتقال کر گئے وجود پیر 28 نومبر 2022
معروف صنعت کار ایس ایم منیر انتقال کر گئے
بھارت
بھارت کو اقتصادی محاذ پر جھٹکا، جی ڈی پی میں کمی کا امکان وجود منگل 06 دسمبر 2022
بھارت کو اقتصادی محاذ پر جھٹکا، جی ڈی پی میں کمی کا امکان

بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار وجود منگل 06 دسمبر 2022
بابری مسجد کا 30 واں یوم شہادت ، بھارتی عدلیہ کا گھناؤنا کردار

1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی وجود پیر 05 دسمبر 2022
1993کے ممبئی دھماکوں کی آڑ میں مسلمانوں کو بدنام کرنے کی سازش رچائی گئی، بھارتی صحافی

بھارت،پہلی سے آٹھویں جماعت کے اقلیتی طلباء کو اب اسکالر شپ نہیں ملے گی، بھارتی حکومت وجود پیر 05 دسمبر 2022
بھارت،پہلی سے آٹھویں جماعت کے اقلیتی طلباء کو اب اسکالر شپ نہیں ملے گی، بھارتی حکومت
افغانستان
کابل، پاکستانی سفارتی حکام پر فائرنگ، ناظم الامور محفوظ رہے، گارڈ زخمی وجود جمعه 02 دسمبر 2022
کابل، پاکستانی سفارتی حکام پر فائرنگ، ناظم الامور محفوظ رہے، گارڈ زخمی

افغان مدرسے میں زوردار دھماکے میں 30 افراد جاں بحق اور 24 زخمی وجود بدھ 30 نومبر 2022
افغان مدرسے میں زوردار دھماکے میں 30 افراد جاں بحق اور 24 زخمی

حنا ربانی کھر کی قیادت میں پاکستان کا اعلیٰ سطح کا وفد دورہ افغانستان کے لیے روانہ وجود منگل 29 نومبر 2022
حنا ربانی کھر کی قیادت میں پاکستان کا اعلیٰ سطح کا وفد دورہ افغانستان کے لیے روانہ
ادبیات
کراچی میں دو روزہ ادبی میلے کا انعقاد وجود هفته 26 نومبر 2022
کراچی میں دو روزہ ادبی میلے کا انعقاد

مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع کردار پرنئی کتاب شائع وجود هفته 23 اپریل 2022
مسجد حرام کی تعمیر میں ترکوں کے متنازع  کردار پرنئی کتاب شائع

مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار وجود بدھ 06 اپریل 2022
مستنصر حسین تارڑ کا ادبی ایوارڈ لینے سے انکار