وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

پنجاب میں ڈومیسائل سسٹم کا خاتمہ ، سندھ بھی تقلید کرے

بدھ 24 نومبر 2021 پنجاب میں ڈومیسائل سسٹم کا خاتمہ ، سندھ بھی تقلید کرے

پروفیسر زاہد احمد

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
پاکستان کے سب سے بڑے اور تقریباً نصف آبادی والے صوبے پنجاب میں ، گزشتہ روز ، تقریباً ستّر سال سے رائج و نافذ ’’ڈومیسائل سسٹم‘‘ کے خاتمے کا اعلان کردیا گیا۔ اب صوبۂ پنجاب میں کسی بھی شہری کے ‘کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ’ پر ، مستقل رہائش کے کالم میں درج پتے کاضلع ہی شہری کے ڈومیسائل کا ضلع متصوّر ہوگا۔
حکومت ِ پنجاب نے ‘ڈومیسائل سسٹم’ کے خاتمے کی وجہ ، شہریوں کو ڈومیسائل کے اجرا ء کے عوض رشوت ستانی کی بڑھتی ہوئی شکایات اور بدعنوانیوں کو قرار دیا ہے۔ اس اعتبار سے حکومت ِ پنجاب کا یہ فیصلہ نہ صرف صائب اور دانشمندانہ ، بلکہ بروقت بھی ہے۔ ڈومیسائل کے سلسلے میں سب سے زیادہ شکایات صوبہ سندھ کے باشندوں کو ہیں۔ سندھ ، پاکستان کا وہ واحد صوبہ ہے جہاں ، تقریباً گزشتہ نصف صدی سے ٰ کوٹہ سسٹم رائج و نافذ ہے ، جسے سندھ کے شہری اضلاع کے رہائشی پسندیدگی کی نگاہ سے نہیں دیکھتے اور اسے ناانصافی پر مبنی ، میرٹ کا قاتل اور ایک استحصالی نظام تصور کرتے ہیں تو دوسری جانب سندھ کے دیہی اضلاع کے باشندوں کو شکایت ہے کہ ، دیگر صوبوں کے باشندے سندھ کے جعلی اور غیرقانونی ڈومیسائل بنواکر وفاقی حکومت میں سندھ کے کوٹے اور صوبہ سندھ کی حکومت میں ، صوبے کے باشندوں کے لیے مختص سرکاری ملازمتیں اور سندھ کے پیشہ ورانہ تعلیمی اداروں میں داخلے حاصل کرتے ہیں ( حالانکہ ان کے ‘کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈ’ پر مستقل رہائش کے کالم میں ان کے اصل رہائشی ضلع کا پتہ ہی درج ہوتا ہے )۔
سندھ کے شہری اور دیہی اضلاع کے باشندوں کی اپنی اپنی شکایات اور تحفّظات صد فیصد درست ہیں۔ شہری اضلاع کے باشندوں کی جانب سے ڈومیسائل کی بنیاد پر ، صوبہ سندھ میں رائج و نافذ ‘کوٹہ سسٹم’ ، سندھ کے شہری اضلاع کے باشندوں کو قابلیت اور صلاحیت پر آگے بڑھنے اور ترقی کرنے کی راہ میں رکاوٹ ہے ، وہ اسے میرٹ کے منافی قراردیتے ہیں۔ سندھ میں رائج و نافذ کوٹہ سسٹم ، صوبے کے شہروں میں گزشتہ تقریباً چاردہائیوں سے انتخابی سیاست پر بھی اثرانداز ہوتا رہا ہے۔ یہ معاملہ سندھ کے شہری علاقوں کی سیاست کا مرکزی محور رہا ہے اور سندھ کے شہروں میں کوٹہ سسٹم کے خاتمے کے نام پر ووٹ حاصل کیاجاتا رہا ہے۔ دوسری جانب سندھ کے دیہی اضلاع کے شہریوں کو شکایت ہے کہ ملک کے دیگر صوبوں کے مستقل شہری ، غیرقانونی طور پر سندھ کاڈومیسائل بنواکر ، سندھ کی سرکاری ملازمتیں اور پیشہ ورانہ تعلیمی اداروں میں داخلے حاصل کرکے سندھ کے باشندوں کے حقوق غصب کررہے ہیں ، خاص طور پر سندھ سے متصل پنجاب کے اضلاع رحیم یارخاں اور ڈیرہ غازی خاں کے باشندے بڑی تعداد میں سندھ کے متصلہ اضلاع گھوٹکی ، کشمور ، جیکب آباد اور سکھر کے ڈومیسائل بنوانے میں بآسانی کامیاب ہوجاتے ہیں اور پھر ان ڈومیسائل کی بنیاد پر وفاقی ، صوبائی اور مقامی شہری اداروں میں سرکاری ملازمتیں اور پیشہ ورانہ تعلیمی اداروں میں داخلے حاصل کرکے سندھ کے مستقل باشندوں کی حق تلفی کے مرتکب ہوتے ہیں۔
سندھ کے شہری اضلاع میں جس طرح ‘کوٹہ سسٹم’ کے نام پر سیاست کی جاتی ہے ، بالکل اسی طرح سندھ کے دیہی اضلاع سے تعلق رکھنے والی قوم پرست جماعتیں ، جعلی ڈومیسائل کے خاتمے کے مطالبے پر اپنی سیاست چمکاتی ہیں ، یوں سندھ کی شہری و دیہی سیاست کے تانے بانے ، بہرحال ’’ڈومیسائل‘‘ سے ہی جاملتے ہیں۔ اگر ‘ڈومیسائل سسٹم’ کے خاتمے کے صوبۂ پنجاب کے فیصلے کی پیروی کرتے ہوئے ، صوبۂ سندھ میں بھی ڈومیسائل کے موجودہ سسٹم کو ختم کرکے ، شہری کے ‘کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ’ کے مستقل پتے کے کالم میں درج پتے کے ضلع کو ہی اس باشندے کے ڈومیسائل کا ضلع تصور کرنے کا فیصلہ کرے تو اس فیصلے سے نہ صرف ، ڈومیسائل جاری کرنے والی اتھارٹی یعنی ، سندھ کے اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کے دفاتر سے رشوت ستانی اور بدعنوانی کا خاتمہ ہوگا بلکہ سیاسی میدان میں بھی ، ڈومیسائل کے مسئلے پر سیاست کرنے اور لسانی بنیادوں پر سندھ کے شہری اور دیہی اضلاع کے باشندوں کے درمیان منافرت اور تناؤ پیدا کرنے والی سیاست بھی ختم ہوجائیگی اور سندھ میں بسنے والے شہری و دیہی باشندوں کی شکایات کا ازالہ ہوسکے گا ، انکی شکایات اور جائز تحفّظات دور ہوسکیں گے بلکہ ان کے درمیان بھائی چارے ، اخوت اور باہمی اعتماد میں بھی اضافہ ہو گا جو صوبۂ سندھ کے لیے بھی خوش آئند ثابت ہوگا۔ امید ہے سندھ کے وہ تمام مستقل باشندے ، خواہ وہ سندھ کے شہری اضلاع سے تعلق رکھتے ہوں یا دیہی اضلاع میں رہائش پزیر ہوں ، اور سندھ میں سیاست کرنے والی سیاسی جماعتیں بھی یک زبان ہوکر صوبۂ سندھ سے بھی ڈومیسائل سسٹم کے خاتمے کے لیے اپنی آواز بلند کرینگیں۔


متعلقہ خبریں


مضامین
کون نہائے گا وجود منگل 07 دسمبر 2021
کون نہائے گا

دوگززمین وجود پیر 06 دسمبر 2021
دوگززمین

سجدوں میں پڑے رہناعبادت نہیں ہوتی! وجود پیر 06 دسمبر 2021
سجدوں میں پڑے رہناعبادت نہیں ہوتی!

چین کی عسکری صلاحیت’’عالمی رونمائی‘‘ کی منتظر ہے! وجود پیر 06 دسمبر 2021
چین کی عسکری صلاحیت’’عالمی رونمائی‘‘ کی منتظر ہے!

دوگززمین وجود اتوار 05 دسمبر 2021
دوگززمین

یورپ کا مخمصہ وجود هفته 04 دسمبر 2021
یورپ کا مخمصہ

اے چاندیہاں نہ نکلاکر وجود جمعه 03 دسمبر 2021
اے چاندیہاں نہ نکلاکر

تاریخ پررحم کھائیں وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
تاریخ پررحم کھائیں

انوکھی یات۔ٹو وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
انوکھی یات۔ٹو

وفاقی محتسب واقعی کام کرتاہے وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
وفاقی محتسب واقعی کام کرتاہے

ڈی سی کی گرفتاری اور سفارشی کلچر وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
ڈی سی کی گرفتاری اور سفارشی کلچر

ماں جیسی ر یاست اور فہیم۔۔۔ وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
ماں جیسی ر یاست اور فہیم۔۔۔

اشتہار

افغانستان
طالبان کے خواتین سے متعلق حکم نامے کا خیرمقدم کرتے ہیں، تھامس ویسٹ وجود اتوار 05 دسمبر 2021
طالبان کے خواتین سے متعلق حکم نامے کا خیرمقدم کرتے ہیں، تھامس ویسٹ

15 سالہ افغان لڑکی برطانوی اخبار کی 2021 کی 25 با اثر خواتین کی فہرست میں شامل وجود هفته 04 دسمبر 2021
15 سالہ افغان لڑکی برطانوی اخبار کی 2021 کی 25 با اثر خواتین کی فہرست میں شامل

طالبان کی خواتین کو جائیداد میں حصہ دینے،شادی مرضی سے کرانے کی ہدایت وجود جمعه 03 دسمبر 2021
طالبان کی خواتین کو جائیداد میں حصہ دینے،شادی مرضی سے کرانے کی ہدایت

جھڑپ میں ایران کے 9سرحدی گارڈز ہلاک ہوئے،طالبان وجود جمعه 03 دسمبر 2021
جھڑپ میں ایران کے 9سرحدی گارڈز ہلاک ہوئے،طالبان

افغان طالبان اور ایرانی بارڈر گارڈز کے درمیان شدید جھڑپیں، بھاری اسلحہ کا استعمال وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
افغان طالبان اور ایرانی بارڈر گارڈز کے درمیان شدید جھڑپیں، بھاری اسلحہ کا استعمال

اشتہار

بھارت
بابری مسجد شہادت کے 29 برس بیت گئے وجود منگل 07 دسمبر 2021
بابری مسجد شہادت کے 29 برس بیت گئے

بھارت ، ٹیکس میں کمی، پیٹرول 8روپے فی لیٹرسستا ہوگیا وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
بھارت ، ٹیکس میں کمی، پیٹرول 8روپے فی لیٹرسستا ہوگیا

بھارت میں مشتعل ہجوم کی چرچ میں تھوڑ پھوڑ ،عمارت کو نقصان،ایک شخص زخمی وجود بدھ 01 دسمبر 2021
بھارت میں مشتعل ہجوم کی چرچ میں تھوڑ پھوڑ ،عمارت کو نقصان،ایک شخص زخمی

بھارت میں نفرت جیت گئی، فنکار ہار گیا،مسلم کامیڈین وجود پیر 29 نومبر 2021
بھارت میں نفرت جیت گئی، فنکار ہار گیا،مسلم کامیڈین

بھارت میں ہندوانتہا پسندوں کی نماز جمعہ کے دوران ہلڑ بازی وجود هفته 27 نومبر 2021
بھارت میں ہندوانتہا پسندوں کی نماز جمعہ کے دوران ہلڑ بازی
ادبیات
جرمن امن انعام زمبابوے کی مصنفہ کے نام وجود منگل 26 اکتوبر 2021
جرمن امن انعام زمبابوے کی مصنفہ کے نام

پکاسو کے فن پارے 17 ارب روپے میں نیلام وجود پیر 25 اکتوبر 2021
پکاسو کے فن پارے 17 ارب روپے میں نیلام

اسرائیل کا ثقافتی بائیکاٹ، آئرش مصنف نے اپنی کتاب کا عبرانی ترجمہ روک دیا وجود بدھ 13 اکتوبر 2021
اسرائیل کا ثقافتی بائیکاٹ، آئرش مصنف نے اپنی کتاب کا عبرانی ترجمہ روک دیا

بھارت میں ہندوتوا کے خلاف رائے کو غداری سے جوڑا جاتا ہے، فرانسیسی مصنف کا انکشاف وجود جمعه 01 اکتوبر 2021
بھارت میں ہندوتوا کے خلاف رائے کو غداری سے جوڑا جاتا ہے، فرانسیسی مصنف کا انکشاف

اردو کو سرکاری زبان نہ بنانے پر وفاقی حکومت سے جواب طلب وجود پیر 20 ستمبر 2021
اردو کو سرکاری زبان نہ بنانے پر وفاقی حکومت سے جواب طلب
شخصیات
جنید جمشید کی پانچویں برسی آج منائی جائے گی وجود منگل 07 دسمبر 2021
جنید جمشید کی پانچویں برسی آج منائی جائے گی

نامور شاعر ، مزاح نگار پطرس بخاری کی 63 ویں برسی آج منائی جائیگی وجود اتوار 05 دسمبر 2021
نامور شاعر ، مزاح نگار پطرس بخاری کی 63 ویں برسی آج منائی جائیگی

سینئر صحافی ضیاءالدین ا نتقال کر گئے وجود پیر 29 نومبر 2021
سینئر صحافی ضیاءالدین ا نتقال کر گئے

پاکستانی سائنسدان مبشررحمانی مسلسل دوسری بار دنیا کے بااثرمحققین میں شامل وجود جمعرات 25 نومبر 2021
پاکستانی سائنسدان مبشررحمانی مسلسل دوسری بار دنیا کے بااثرمحققین میں شامل

سکھ مذہب کے بانی و روحانی پیشواباباگورونانک کے552ویں جنم دن کی تین روزہ تقریبات کا آغاز وجود جمعه 19 نومبر 2021
سکھ مذہب کے بانی و روحانی پیشواباباگورونانک کے552ویں جنم دن کی تین روزہ تقریبات کا آغاز