وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

تعیناتی کو طوفان بنانے کی کوشش

هفته 16 اکتوبر 2021 تعیناتی کو طوفان بنانے کی کوشش

حکمت و تدبر یہ ہے کہ مسائل بڑھانے کی بجائے حل کیے جائیں آئے روز نیا بحران پیداکرنا اور پھر کہناگھبرانا نہیں ہے حکمت وتدبر کے منافی ہے ایک طرف مہنگائی اور بے روزگاری میں اضافہ اور کاروباربند جبکہ قرضے ملکی تاریخ کی بلند ترین شرح کو پہنچ چکے ہیں ایسے میں گھبرانا نہیں ہے کے مشورے کو کوئی پسند نہیں کر سکتا لیکن مجھے نہیں لگتا کہ اقتدار کے ایوانوں میں بیٹھے لوگوں کو عوامی مشکلات کا احسا س ہے اگر ہوتا تو مسائل نظر انداز کرتے ہوئے تمام توجہ مستقبل کی سیاسی شطرنج سجانے پر ہرگز نہ دیتے سابق حکمرانوں کی صفائی دینا یا انھیں بہتر قرار دینا مقصود نہیں مگر اِس میںشائبہ نہیں کہ سابق حکمرانوں میں لاکھ خامیاں سہی ناقص حکمرانی کے باعث لوگ اب انھیں یادکرنے لگے ہیں حکمرانی بازیچہ اطفال نہیں امتحان کا نام ہے اور امتحان کی ناکامی کو گھبرانا نہیں ہے کا جملہ بول کر کامیابی نہیں کہہ سکتے ۔
اِداروں میں پختگی آرہی ہے عسکری اور عدالتی تقرریوں میں بیرونی مداخلت کی حوصلہ افزائی نہیں ہوتی دور کیوں جائیں سپریم کورٹ نے لاہورہائیکورٹ سے ایک جج کو سپریم کورٹ لے کر نئے چیف جسٹس کی تقرری کی مگر حکومت نے چیف جسٹس کی سفارشات کے برعکس ترقی و تعیناتی کا حکم نامہ جاری کیا تو ججز نے حکومتی حکم نامے پر عملدرآمد کی بجائے وہی کیا جو چیف جسٹس کی منشا تھی یہ ایسا سبق تھا کہ حکمرانوں کو کچھ سیکھنا چاہیے تھا لیکن یہاں نہ کوئی سیکھنے کا متمنی ہے اور نہ ہی کوئی مشاورت کا قائل ہے بلکہ عقلِ کل کے مرض میں مبتلا لوگوں کی بھرمار ہے اور عملی طور پر کچھ کرنے کی بجائے ہوائی قلعے بنانے کے آرزومندوں کی کثرت ہے جو فنِ تقریر میں طاق ہونے کی خوبی کوہی مسائل کے زہر کاتریاق سمجھتے ہیں حالانکہ فنِ تقریر سے مسائل حل ہوتے تو ملک کی معاشی حالت ایسی تباہ ہوتی؟یاد رکھیں کبھی کبھار کچھ کہنے کی بجائے خاموشی اختیار کرنا بہتر ہوتاہے لیکن کیا کریں جب عنانِ اقتدار انجمن ستائش باہمی کے پاس ہو تو شورشرابے کو ہی کامیابی کا نام دیا جاتا ہے۔
اہلیت و صلاحیت دعوے کرنے یا حریفوں کے لتے لینے کانام نہیں بلکہ کون کیا ہے چیلنجز کے دوران پتہ چلتا ہے ہر امتحان میں حماقتوں کے انبار لگانا اہلیت و صلاحیت نہیں ہوتی عسکری سپاہ سالار کو مزید عرصہ عہدے پر برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا تو اپوزیشن نے خطے کے حالات کے پیشِ نظر تائید کر دی اتفاقِ رائے کا تقاضا تھا کہ فیصلہ سوچ وبچار اور مشاورت سے کیا جاتا لیکن نوٹیفکیشن کرتے ہوئے غلطیاں نہیں حماقتیں کی گئیں جس سے سپاہ سالار کے منصب کو بے کی توقیر میں اضافہ نہ ہوا جب وزیر ومشیر کی تقرری کا پیمانہ گالی کلچر میں مشاق ہونا ہی ہو تو بھلا عقل و دانش کا کیا کام؟ آخر کار عدالت کو ہدایات جاری کرنا پڑیںتب جاکر قواعد وضوابط کے مطابق نوٹیفکیشن جاری کیا گیا اب بھی لگتا ہے حکومت نے سبق حاصل کرنے کی بجائے رسوائیاں سمیٹنے کو ہی ترجیح بنا رکھا ہے اسی لیے اِداروں کو بھی جماعت کا زیلی ونگ سمجھنے کی غلطی کی جارہی ہے لیکن حماقتوں سے اِداروں کی کارکردگی متاثر ہوتی ہے اِس لیے حکمرا ن ووٹ دینے کی عوام کو کڑی سزا دے چکے اِداروں کو ہی بخش دیں۔
کچھ پہلوان کشتی لڑتے ہوئے کسی سے شکست نہیں کھاتے مگر کبھی کبھار اپنے بھاری بھرکم وجود کی بنا پر خود ہی منہ کے بل گرجاتے ہیں حکومت بھی اسی روش پر گامزن ہے نئے ڈی جی آئی ایس آئی کی تعیناتی کوطونان بنانے کی کوشش ثابت کرتی ہے کہ وزیرِ اعظم اپنے بھاری بھرکم وجود سے گرنے کے قریب ہیںہیں بلاشبہ ڈی جی آئی ایس آئی براہ راست وزیرِ اعظم کو جوابدہ ہوتا ہے مگر یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ بطور لیفٹیننٹ جنرل آرمی چیف کے حکم کا بھی پابند ہے ملک کو درپیش حالات اور افغانستان کی صورتحال کے تناظر میںاگروزیراعظم چاہتے ہیںکہ موجودہ ڈی جی لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید ہی مزیدعرصہ عہدے پر کام کریںتو انھیں سپاہ سالار سے بات کرتے ہوئے کیا ہچکچاہٹ ہے؟ مگر ایسا طرزِ عمل اپنایا گیا جیسے فوج کی طرف سے سویلین حکومت سے بالا بالا ہی فیصلے کیے جارہے ہیں جن سے حکومت خوش نہیں جس سے افواہ ساز فیکٹریوں کو متحرک ہو نے کا موقع ملا یوں ایک اہم ترین تقرری کو متنازعہ بنانے کی کوشش کی گئی جس کے بعد بھی کابینہ کو گھبرانا نہیں ہے کی تلقین کوتاہ اندیشی کے سوا کچھ نہیں۔
آصف زرداری کی طرف سے اینٹ سے اینٹ بجا دینے کا بیان اور نواز شریف اور اُن کی صاحبزادی کی طرف سے عسکری اِدارے پرتنقید کی وجہ سے مخصوص قوتوں کے لیے عمران خان ابھی تک واحد چوائس ہیں لیکن واحد چوائس کا متبادل تلاش کرنا دشوار نہیں اگر نواز شریف نے برادرِ خورد کو آزادانہ مرضی سے کام کرنے کا موقع دے دیا تو مجھے نہیں لگتا کہ چند نشستوں کے سہارے قائم حکومت مزیدچند ہفتے ہی رہ سکے ابھی تو شہباز شریف اپنے بڑے بھائی کے بیانیے کی وجہ سے خاموش اور سیاست میں سُست ہیںلیکن ایسا تاحیات نہیں رہ سکتا آج نہیں تو کل صورتحال تبدیل ہو سکتی ہے اِس لیے واحد آپشن کے زعم کاشکار کاسیاسی حوالے سے نقصان سے دوچارہونا بعید ازقیاس نہیں چھ اکتوبر کوتبادلے ہوئے مگر نوٹیفکیشن جاری نہ ہوا دس تاریخ کو عشرہ رحمت العالمین ؑ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِ اعظم کہتے ہیں کہ دنیا میں خالد بن ولید ؓ سے شاید ہی کوئی بڑا جنرل ہو کیونکہ انھوں نے کوئی جنگ نہیں ہاری لیکن حضرت عمرؓ نے ان سے کمان چھڑوا کر دوسرے کو سونپ دی اِس میں سمجھداروں کافی پیغام ہے ۔
پاک فوج کی عوام کی نظروں میں عزت و توقیر کم کرنے کے لیے کئی بیرونی عناصر مصروف ہیں نت نئی من گھڑت خبریں اور افواہیں پھیلائی جاتی ہیں جن کو غیر موثر بنانے کے لیے حکومت کو فعال ہونا چاہیے تھا مگر ہوابرعکس ہے وزیرِ اعظم اپنے اختیار کا رونا رو کر بیرونی عناصر کی پھیلائی من گھڑت خبروں اور افواہوں کی تائید کر رہے ہیں ملکی معیشت کا کباڑہ کرنے کے بعداِداروں سے محاز آرائی بڑھا کر حکومت کِس کے ایجنڈے پر عمل پیراہے؟ وزارتِ دفاع نے ڈی جی آئی ایس آئی کی تقرری کے لیے جنرل سرفراز،ندیم انجم اور ثاقب ملک کے ناموں پر مشتمل سمری وزیرِ اعظم ہائوس بھیج دی ہے وزیرِ اعظم اور آرمی چیف میں مشاورت بھی ہو چکی اِس لیے جلد از جلد نئی تعیناتی کا فیصلہ ہو جانا چاہیے اگر تعیناتی کو طوفان بنانے کی کوشش کی گئی تو ممکن ہے اپوزیشن جماعتوں کی کمی عوام خود سڑکوں پر آکر پوری کردیں اور اختیار کا رونا روتے روتے فنِ خطابت میں طاق اپنے ہی بھاری بھرکم وجود سے گر پڑے فیصلوں میں جتنی تاخیر ہوگی نقصان حکومت کاہی ہو گا کیونکہ اِداروں میں ڈسپلن ہوتاہے جہاں تک وزیروں و مشیروں کا تعلق ہے انھیں کون سا حکمران جماعت نے فکری تربیت دی ہے یہ کئی جماعتوں سے آئے ہیںجو کسی انہونی کی صورت میں سابقہ جماعتوں کی طرف لوٹ سکتے ہیں وزیرِ دفاع اور وزیرِ داخلہ نے تین رکنی وزارتی کمیٹی میں شامل ہونے سے معذوری کا اظہار کردیا مزید کیا سُننے کی تمناہے اِس لیے وسوسوں اور خدشات کا جتنی جلدی ہو سکے خاتمہ ہی بہترآپشن ہے ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


متعلقہ خبریں


مضامین
کون نہائے گا وجود منگل 07 دسمبر 2021
کون نہائے گا

دوگززمین وجود پیر 06 دسمبر 2021
دوگززمین

سجدوں میں پڑے رہناعبادت نہیں ہوتی! وجود پیر 06 دسمبر 2021
سجدوں میں پڑے رہناعبادت نہیں ہوتی!

چین کی عسکری صلاحیت’’عالمی رونمائی‘‘ کی منتظر ہے! وجود پیر 06 دسمبر 2021
چین کی عسکری صلاحیت’’عالمی رونمائی‘‘ کی منتظر ہے!

دوگززمین وجود اتوار 05 دسمبر 2021
دوگززمین

یورپ کا مخمصہ وجود هفته 04 دسمبر 2021
یورپ کا مخمصہ

اے چاندیہاں نہ نکلاکر وجود جمعه 03 دسمبر 2021
اے چاندیہاں نہ نکلاکر

تاریخ پررحم کھائیں وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
تاریخ پررحم کھائیں

انوکھی یات۔ٹو وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
انوکھی یات۔ٹو

وفاقی محتسب واقعی کام کرتاہے وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
وفاقی محتسب واقعی کام کرتاہے

ڈی سی کی گرفتاری اور سفارشی کلچر وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
ڈی سی کی گرفتاری اور سفارشی کلچر

ماں جیسی ر یاست اور فہیم۔۔۔ وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
ماں جیسی ر یاست اور فہیم۔۔۔

اشتہار

افغانستان
طالبان کے خواتین سے متعلق حکم نامے کا خیرمقدم کرتے ہیں، تھامس ویسٹ وجود اتوار 05 دسمبر 2021
طالبان کے خواتین سے متعلق حکم نامے کا خیرمقدم کرتے ہیں، تھامس ویسٹ

15 سالہ افغان لڑکی برطانوی اخبار کی 2021 کی 25 با اثر خواتین کی فہرست میں شامل وجود هفته 04 دسمبر 2021
15 سالہ افغان لڑکی برطانوی اخبار کی 2021 کی 25 با اثر خواتین کی فہرست میں شامل

طالبان کی خواتین کو جائیداد میں حصہ دینے،شادی مرضی سے کرانے کی ہدایت وجود جمعه 03 دسمبر 2021
طالبان کی خواتین کو جائیداد میں حصہ دینے،شادی مرضی سے کرانے کی ہدایت

جھڑپ میں ایران کے 9سرحدی گارڈز ہلاک ہوئے،طالبان وجود جمعه 03 دسمبر 2021
جھڑپ میں ایران کے 9سرحدی گارڈز ہلاک ہوئے،طالبان

افغان طالبان اور ایرانی بارڈر گارڈز کے درمیان شدید جھڑپیں، بھاری اسلحہ کا استعمال وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
افغان طالبان اور ایرانی بارڈر گارڈز کے درمیان شدید جھڑپیں، بھاری اسلحہ کا استعمال

اشتہار

بھارت
بابری مسجد شہادت کے 29 برس بیت گئے وجود منگل 07 دسمبر 2021
بابری مسجد شہادت کے 29 برس بیت گئے

بھارت ، ٹیکس میں کمی، پیٹرول 8روپے فی لیٹرسستا ہوگیا وجود جمعرات 02 دسمبر 2021
بھارت ، ٹیکس میں کمی، پیٹرول 8روپے فی لیٹرسستا ہوگیا

بھارت میں مشتعل ہجوم کی چرچ میں تھوڑ پھوڑ ،عمارت کو نقصان،ایک شخص زخمی وجود بدھ 01 دسمبر 2021
بھارت میں مشتعل ہجوم کی چرچ میں تھوڑ پھوڑ ،عمارت کو نقصان،ایک شخص زخمی

بھارت میں نفرت جیت گئی، فنکار ہار گیا،مسلم کامیڈین وجود پیر 29 نومبر 2021
بھارت میں نفرت جیت گئی، فنکار ہار گیا،مسلم کامیڈین

بھارت میں ہندوانتہا پسندوں کی نماز جمعہ کے دوران ہلڑ بازی وجود هفته 27 نومبر 2021
بھارت میں ہندوانتہا پسندوں کی نماز جمعہ کے دوران ہلڑ بازی
ادبیات
جرمن امن انعام زمبابوے کی مصنفہ کے نام وجود منگل 26 اکتوبر 2021
جرمن امن انعام زمبابوے کی مصنفہ کے نام

پکاسو کے فن پارے 17 ارب روپے میں نیلام وجود پیر 25 اکتوبر 2021
پکاسو کے فن پارے 17 ارب روپے میں نیلام

اسرائیل کا ثقافتی بائیکاٹ، آئرش مصنف نے اپنی کتاب کا عبرانی ترجمہ روک دیا وجود بدھ 13 اکتوبر 2021
اسرائیل کا ثقافتی بائیکاٹ، آئرش مصنف نے اپنی کتاب کا عبرانی ترجمہ روک دیا

بھارت میں ہندوتوا کے خلاف رائے کو غداری سے جوڑا جاتا ہے، فرانسیسی مصنف کا انکشاف وجود جمعه 01 اکتوبر 2021
بھارت میں ہندوتوا کے خلاف رائے کو غداری سے جوڑا جاتا ہے، فرانسیسی مصنف کا انکشاف

اردو کو سرکاری زبان نہ بنانے پر وفاقی حکومت سے جواب طلب وجود پیر 20 ستمبر 2021
اردو کو سرکاری زبان نہ بنانے پر وفاقی حکومت سے جواب طلب
شخصیات
جنید جمشید کی پانچویں برسی آج منائی جائے گی وجود منگل 07 دسمبر 2021
جنید جمشید کی پانچویں برسی آج منائی جائے گی

نامور شاعر ، مزاح نگار پطرس بخاری کی 63 ویں برسی آج منائی جائیگی وجود اتوار 05 دسمبر 2021
نامور شاعر ، مزاح نگار پطرس بخاری کی 63 ویں برسی آج منائی جائیگی

سینئر صحافی ضیاءالدین ا نتقال کر گئے وجود پیر 29 نومبر 2021
سینئر صحافی ضیاءالدین ا نتقال کر گئے

پاکستانی سائنسدان مبشررحمانی مسلسل دوسری بار دنیا کے بااثرمحققین میں شامل وجود جمعرات 25 نومبر 2021
پاکستانی سائنسدان مبشررحمانی مسلسل دوسری بار دنیا کے بااثرمحققین میں شامل

سکھ مذہب کے بانی و روحانی پیشواباباگورونانک کے552ویں جنم دن کی تین روزہ تقریبات کا آغاز وجود جمعه 19 نومبر 2021
سکھ مذہب کے بانی و روحانی پیشواباباگورونانک کے552ویں جنم دن کی تین روزہ تقریبات کا آغاز