طالبان کانصف امریکی فوج اپریل تک نکالنے کا عندیہ ،زلمے خلیل زاد کی تردید

طالبان رہنما عبدالسلام حنیفی کا کہنا ہے کہ امریکا نے افغانستان سے اپنی نصف فوج اپریل کے آخر تک نکالنے کا وعدہ کیا ہے۔دوسری جانب پینٹاگون کے ترجمان کرنل راب میننگ نے بتایاہے کہ امریکی فوج کو انخلا کا کوئی حکم نہیں ملا، طالبان کے ساتھ امن مذاکرات جاری ہیں۔

ادھرافغانستان کے لیے امریکا کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے بھی واضح کیا ہے کہ امریکا نے افغانستان سے فوج کی واپسی کا کوئی ٹائم ٹیبل نہیں دیا۔ سنا ہے کہ کچھ طالبان ذاتی طور پر اس حوالے سے دعویٰ کر رہے ہیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ماسکو میں افغان پیس کانفرنس کے سائیڈ لائن پر طالبان کے رہنما عبدالسلام حنیفی نے میڈیا کو بتایا کہ امریکا فروری سے اپریل تک افغانستان سے اپنی نصف فوج باہر نکال لے گا۔واضح رہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خارجہ پالیسی میں واضح تبدیلی لاتے ہوئے افغانستان میں امریکی فوج کی تعداد میں نمایاں کمی لانے کا چند ماہ قبل عندیہ دیا تھا، امریکی میڈیا کے مطابق ٹرمپ نے پینٹاگان کو حکم دیا تھا کہ چند ماہ کے دوران 7 ہزار امریکی فوجیوں کو افغانستان سے نکال لیا جائے۔