امریکا، 2024ء میں سگریٹ نوشی کی قانونی عمر 100 سال کرنے کا قانون

امریکی ریاست ہوائی کی مقامی حکومت نے تمباکو نوشی سے نجات پانے کے لیے بہ تدریج پابندی لگانے کے لیے سخت قانونی سازی شروع کردی ،2024ء میں ہوائی میں قانونی طور پر صرف وہی شخص تمباکو نوشی کرسکے گا جس کی عمر 100 سال ہوچکی ہوگی۔ میڈیارپورٹس کے مطابق ماہرین نے کہاکہ سگریٹ نوشی کے لیے قانونی عمر ایک سو سال کرنے کے قانون کا مقصد انسانی صحت کی تباہی کی اس لعنت سے نجات پانے کی کوشش ہے۔ہوائی میں یہ قانون پیشے کے اعتبار سے ایک ڈاکٹر رکن پارلیمنٹ رچرڈ کریگن کی طرف سے پیش کیا گیا ہے۔ھوائی کا شمار سگریٹ نوشی کے خلاف سخت قانون سازی کرنے والی ریاستوں میں ہوتا ہے مگر رچرڈ کریگن کا کہنا تھا کہ وہ سگریٹ نوشی کی روک تھام کے لیے مزید اقدامات کریں گے۔ انٹرویو میں کریگن کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس لوگوں کی بڑی تعداد موجود ہے جو تمباکو نوشی کرتے ہیں۔ اس کی ایک وجہ بڑے پیمانے پر سیگریٹ کی تیاری ہے۔ ہمیں تمباکو کی تیاری کو بھی روکنا ہوگا۔مقامی قانون کے مطابق اکیس سال سے کم عمر افراد کو سگریٹ فروخت کرنا منع ہے جب کہ امریکا کے وفاقی قانون کے تحت 18 یا 19 سال سے کم عمر افراد کو سگریٹ فروخت کرنے کی اجازت نہیں۔ہوائی میں سگریٹ نوشی پر پابندی کا قانون مرحلہ وار آگے بڑھایا جائے گا۔ آئندہ سال سگریٹ نوشی کی قانونی عمر 30 سال، 2021ء میں 40، سال، 2022ء میں 50 سال، 2023ء میں 60 اور 2024ء میں 100 سال کر دی جائے گی۔