روشن سندھ سولرلائٹ منصوبے میں ساڑھے 8 ارب روپے کی کرپشن کا انکشاف

سندھ میں 8 ارب 50 کروڑروپے کے روشن سندھ سولرلائٹ منصوبے میں کرپشن کے انکشاف پراہم حکومتی شخصیات کوبچانے کے لیے سرکاری ادارے متحرک ہوگئے،نیب کی پکڑ سے قبل ہی اینٹی کرپشن نے سندھ کے 9 اضلاع میں سولرلائٹ منصوبے کاریکارڈ تحویل میں لے کرتحقیقات شروع کردیں،2014میں شروع کیے جانے والے متبادل توانائی کے اربوں روپے کے پراجیکٹ کے ٹھیکے منظورنظرکمپنی کودینے کے انکشاف پرواٹرکمیشن تحقیقات نیب کے سپرد کرنے پرغورکررہا تھا،منظورنظرکمپنی کے بورڈآف ڈائریکٹرزمیں سابق نگراں وزیربلدیات اوراہم حکومتی شخصیات کے قریبی عزیزبھی شامل ہیں۔سندھ حکومت کے دیگرمختلف منصوبوں کی طرح ساڑھے 8 ارب روپے سے زائد مالیت کا روشن سندھ کے نام سے سولرلائٹ منصوبہ بھی کرپشن ،اقربا پروری اوراہم حکومتی شخصیات کے مفادات کی نذرہوجانے کا انکشاف سامنے آیا ہے۔

روشن سندھ کے نام سے سولرلائٹ منصوبہ سابق وزیر بلدیات سندھ ودیہی ترقی شرجیل میمن کی وزارت کے دورمیں 2014 میں شروع کیا گیا تھا اورسندھ حکومت نے 2014 سے 2018 کے بجٹ میں کراچی سمیت سندھ کے 9 اضلاع کے دیہی علاقوں کوروشن کرنے کے لیے 8 ارب 50 کروڑروپے سے زائد مختص اورمنصوبے کے لیے مرحلہ وارجاری کیے ۔یہ انکشافات واٹرکمیشن کی ہدایت پرسولرلائٹ منصوبے کا جائزہ لینے والی خصوصی کمیٹی کی بازپرس کے دوران ہوا ہے اس صورتحال کوبھانپتے ہوئے اینٹی کرپشن سندھ نے نیب کی کارروائی سے قبل ہی صوبے کے 9 اضلاع کراچی،ٹھٹھہ ، سجاول،شہداد کوٹ،میرپورخاص،شہیدبے نظیرآباد،عمرکوٹ،جام شورو،لاڑکانہ کا ریکارڈ تحویل میں لے لیا ہے جبکہ واٹرکمیشن کی جانب سے روشن سندھ سولرلائٹ منصوبے میں من پسند کمپنی کوٹھیکہ دینے اوربڑے پیمانے پرکرپشن کی تحقیقات نیب سندھ سے کرائے جانے پرغورجاری تھا۔

معتمد ترین ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ کے مختلف اضلاع کے لیے ساڑھے 8 ارب روپے مالیت کے سولرلائٹ منصوبوں میں 2 لاکھ روپے فی سولربلب کے حساب سے 7 ارب روپے سے زائد کے ٹھیکے ایک ہی کمپنی کودینے کے انکشاف پر جائزہ کمیٹی نے واٹرکمیشن کو معاملے کی تحقیقات نیب سے کرانے کی سفارش کی تھی۔ جائزہ کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ روشن سندھ کے نام سے سولرلائٹ منصوبہ 2014 میں سابق وزیربلدیات ودیہی ترقی شرجیل انعام میمن کے دوروزارت میں شروع کیا گیا تھا پہلے مرحلے میں 4 ارب روپے مالیت کے روشن سندھ منصوبے کے تحت نامزد اضلاع کی میونسپل اورٹاؤن کمیٹیوں میں تقریبا 20 ہزارسولرلائٹ نصب کرنا تھیں۔

Electrolux