وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

کشمیری مجاہدین کا فدائی حملہ، 2افسران سمیت 7بھارتی فوجی ہلاک

بدھ 30 نومبر 2016 کشمیری مجاہدین کا فدائی حملہ، 2افسران سمیت 7بھارتی فوجی ہلاک

فدائین نے رنگروٹہ کے اس فوجی کیمپ پر دھاوا بولا جس میں ایل او سی اور پاکستانی علاقے پر بلااشتعال فائرنگ کی منصوبہ سازی ہوتی تھی ،ذرائع۔درجنوں بھارتی فوجی زخمی۔3فدائین کی شہادت کی بھی اطلاعات ۔بھارتی فوج مظالم سے جذبہ آزادی کو ختم نہیں کرسکتی ،حریت رہنما ۔۔۔مقبوضہ کشمیر میں بڑھتی ہوئی ریاستی دہشت گردی  نے علاقے کے امن کو خطرے میں ڈال دیا ، ہماری برداشت کی پالیسی کو کمزوری سمجھنا بھارت کے لیے خطرناک ہو گا،سبکدوش آرمی چیف راحیل شریف کی آخری خطاب میں تنبیہ، او آئی سی کا کشمیریوں کی جدوجہد کی حمایت کا اعادہ

مقبوضہ جموں میں بھارتی فوج کی شمالی کمان کے ایک کیمپ پر حریت پسندوں کے ایک فدائی حملے میں دو افسران سمیت سات فوجی ہلاک ہو گئے ہیں جبکہ درجنوں زخمی ہیں۔مجاہدین نے جموں میں واقع نگروٹہ کیمپ کو نشانہ بنایا ۔لائن آف کنٹرول اور پاکستانی علاقے میں سرحدی جارحیت کی منصوبہ بندی کے لیے اہمیت کا حامل ہے ۔
کشمیر میں جاری حریت تحریک سے وابستہ ذرائع نے بتایا کہ یہ کشمیر میں جاری غاصب بھارتی فوجیوں کے ظلم وتشدد کا ردعمل ہے اور کشمیری مجاہدین بھارت کی سفاکانہ وبزدلانہ حرکتوں کا جواب اپنی جرأت مندانہ کارروائیوں سے دیتے رہیں گے ۔ان کا کہنا تھا کہ بھارت کی جانب سے کشمیر میں نوجوان مجاہد برہان وانی کی شہادت اور شہریوں پر مظالم سے کشمیریوں کے جذبہ حریت کو دبایا نہیں جاسکتا بلکہ شہادتیں کشمیریوں کی تحریک آزادی کے لیے مہمیز کا کام دیتی ہیں۔
یہ گزشتہ دو ماہ کے دوران بھارتی فوج کے کسی ٹھکانے پر اپنی نوعیت کا یہ تیسرا بڑا حملہ ہے۔iok
بھارتی فوج کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق منگل کی صبح پولیس کی وردیوں میں ملبوس مسلح حملہ آوروں نے نگروٹہ میں کور ہیڈکوارٹر سے تین کلومیٹر کے فاصلے پر تعینات فوجی یونٹ پر دھاوا بولا۔
واقعات کے مطابق فدائی مجاہدین دلیرانہ طریقے سے آفیسرز میس میں گھتے چلے گئے۔دستی بموں اور فائرنگ کے نتیجے میں ابتدائی طور پر ایک فوجی افسر اور تین اہلکارمارے گئے جبکہ اس دوران مجاہدین دو ایسی عمارتوں میں داخل ہونے میں کامیاب رہے جہاں12 فوجی اہلکار موجود تھے جن کی بازیابی کے لیے بھارتی فوج نے آپریشن شروع کیا اطلاعات یہ ہیں کہ اس دوران 3مجاہدین بے جگری سے لڑتے ہوئے شہید ہوگئے جبکہ ایک بھارتی فوجی افسر اور دو اہلکار بھی اس دوران جان سے ہاتھ دھو بیٹھے اوردرجنوں بھارتی فوجی زخم چاٹنے پر مجبور ہوگئے۔
ادھربھارتی فوج کے مطابق مقابلے میں تینوں حملہ آور مارے گئے اور اب علاقے کو کلیئر کرنے کے لیے آپریشن جاری ہے۔
خیال رہے کہ نگروٹہ میں ہی بھارتی فوج کی سب سے زیادہ سرگرم شمالی کمان کا ہیڈکوارٹر قائم ہے۔یہ حملہ 166 میڈیم رجمنٹ آرٹلری کے کیمپ پر کیا گیا۔ اسی یونٹ میں پاکستان کے ساتھ لگنے والی لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر مبینہ دراندازی کے خلاف منصوبہ بندی بھی ہوتی ہے۔اس حملے کے بعد نگروٹہ میں فوجی تنصیبات کے قریب گاڑیوں کی آمدورفت روک دی گئی اور انتظامیہ نے اسکولوں میں تعطیل کا اعلان کر دیا گیا۔
اس دوران بھارتی سرحدی حفاظتی فورس (بی ایس ایف) نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے جموں میں ہی سامبا ضلع کے رام نگر اور چملی یال سیکٹر کے قریب تین مسلح دراندازوں کو ایک تصادم کے دوران ہلاک کیا۔تصادم میں ایک بی ایس ایف جوان زخمی ہوگیا ہے۔
پاکستان میں آرمی چیف کی تبدیلی کی تقریب کے موقع پر اپنی ذمہ داریوں سے سبکدوش ہونے والے اور پاکستان میں انتہائی مقبول جنرل راحیل شریف نے چارج چھوڑنے سے قبل اس خصوصی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بھارت کو متنبہ کیا کہ کشمیر میں حالیہ کشیدگی کے حوالے سے پاکستان کی ’برداشت‘ کو کمزوری نہ سمجھا جائے۔ قیادت کی تبدیلی کے لیے ایک خصوصی تقریب راولپنڈی میں قائم پاکستانی فوج کے ہیڈکوارٹرز میں منعقد ہوئی۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاکستانی فوج کے نئے سربراہ کے طور پر اپنی ذمہ داریاں سنبھال لی ہیں۔
راحیل شریف کا اپنے خطاب میں کہنا تھا، ’’بدقسمتی سے حالیہ مہینوں کے دوران مقبوضہ کشمیر میں بڑھتی ہوئی ریاستی دہشت گردی اور بھارت کے جارحیت پسندانہ اقدامات نے علاقےکے امن کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔‘‘ ان کا مزید کہنا تھا، ’’میں یہ بات بھارت پر واضح کر دینا چاہتا ہوں کہ ہماری برداشت کی پالیسی کو کمزوری سمجھنا اس کے لیے خطرناک ہو گا۔‘‘
جنرل راحیل شریف کے مطابق، ’’یہ حقیقت ہے کہ جنوبی ایشیا میں پائیدار امن اور ترقی کشمیر کے مسئلے کو حل کیے بغیر ممکن نہیں ہے۔ اس کے لیے عالمی برادری کو اس پر خاص توجہ دینا چاہیے۔‘‘
پاکستان میں فوجی قیادت کی اس تبدیلی کے دن ہی کشمیر میں ایک فوجی اڈے پرحریت پسندوں نے حملہ کیا ہے۔
تقریب سے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کہتے ہیں کہ لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کی صورتحال ٹھیک ہوجائے گی۔سرکاری خبر رساں ادارے اے پی پی کے مطابق آرمی نے پاک فوج کی کمانڈ میں تبدیلی کی تقریب میں چیف آف آرمی اسٹاف کا عہدہ سنبھالنے کے بعد صحافیوں سے ہونے والی گفتگو میں کیا۔آرمی چیف نے میڈیا کے کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ قوم کی بہتری کے لیے میڈیا کو اس کردار کو جاری رکھنا چاہیئے۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ میڈیا اپنے کردار کو اسی جوش اور جذبے سے جاری رکھے گا۔
لائن آف کنٹرول کی موجودہ صورتحال سے متعلق پوچھے گئے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ وہ جلد ٹھیک ہوجائے گی۔
دوسری جانب اسلامی کانفرنس کی تنظیم(او آئی سی)نے کشمیری عوام کی حق خود ارادیت کیلئے ان کی جائز جدوجہد کی مکمل حمایت کا اعادہ کرتے ہوئے بھارتی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کشمیری عوام کیخلاف طاقت کا استعمال بند کرے۔منگل کو دفترخارجہ کے ترجمان کے مطابق جموں وکشمیر سے متعلق او آئی سی کے سیکرٹری جنرل خصوصی نمائندہ عبداللہ العلیم نے جدہ میںکشمیر سے متعلق سمینار اور تصویری نمائش کے موقع پر کہا کہ حال ہی میں مقبوضہ کشمیر میں صورتحال انتہائی تشویشناک ہو چکی ہے۔انہوں نے کہا کہ او آئی سی کشمیری عوام کی آزادی کیلئے جدوجہد کی مکمل حمایت کا اعادہ کرتی ہے۔
او آئی سی نے بھارتی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ نہتے کشمیریوں کیخلاف طاقت کا استعمال فوری بند کرے۔سمینار اور تصویری نمائش کا اہتمام او آئی سی اور جدہ میں پاکستانی قونصلیٹ نے مشترکہ طور پر کیا تھا۔قونصل جنرل شہر یار اکبر خان نے اپنے خیر مقدمی کلمات میںکہا کہ تقریب کا اہتمام 1947میں بھارتی فورسز کی مقبوضہ کشمیر میں غیر قانونی داخلے کی یاد میں کیا گیا تھا۔
کشمیری عوام کے نمائندے غلام محمد صفی نے سمینار کے شرکاء کو مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے حوالے سے تازہ ترین صورتحال سے آگاہ کیا اور عالمی برادی سے مطالبہ کیا کہ وہ کشمیری عوام کو حق خود ارادیت دینے میں اپنا کردار ادا کرے۔
چیئر مین کشمیر کمیٹی جدہ مسعود احمد نے عالمی برادی پر زور دیا کہ وہ کشمیر میں المیے پر چپ کا روزہ توڑے۔ کشمیری عوام کی جانب سے عبداللہ العلیم نے ایک قرار داد پیش کی،جس میں او آئی سی سے کشمیر کا مسلہ حل کرنے کیلئے کوششیں مزید تیز کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔
سعودی عرب میں پاکستان کے سفیرمنظور الحق نے مسلہ کشمیر کی حمایت پر او آئی سی اور سعودی عرب کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان بھارت کی ساتھ کشمیر سمیت تمام تصفیہ طلب معاملات مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہتا ہے۔
خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق پاکستان اور بھارت کی طرف سے گزشتہ دو ماہ کے دوران اب تک 300 سے زائد مرتبہ سیزفائر کی خلاف ورزی کی جا چکی ہے۔ ایک دوسرے کی فوجی پوزیشنوں اور سرحدی دیہات میں کی جانے والی فائرنگ کے نتیجے میں اب تک کم از کم 17 بھارتی فوجی اور 12 سویلین ہلاک ہو چکے ہیں۔
پاکستانی حکام کے مطابق بھارتی افواج کی سرحد پار سے فائرنگ کے نتیجے میں اب تک 44 افرادشہید ہو چکے ہیں۔ ان میں وہ 11 عام شہری بھی شامل ہیں جو ایک بس پر بھارتی فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں ہلاک ہوئے تھے۔


متعلقہ خبریں


ایران میں حکومت مخالف مظاہرے جاری ، فائرنگ سے کئی مظاہرین زخمی وجود - منگل 14 جنوری 2020

ایران میں حکومت کی طرف سے یوکرین کا مسافر جہاز مارگرائے جانے کی غلطی تسلیم کرنے بعد ملک میں حکومت کے خلاف مظاہرے جاری ہیں جن میں سیکڑوں افراد نے ایرانی رجیم کے خلاف نعرے بازی کی۔ اس موقع پر پولیس اور سیکیورٹی فورسز کی طرف سے پرتشدد حربے استعمال کیے گئے جس کے نتیجے میں کئی مظاہرین زخمی ہوئے ہیں۔ سماجی کارکنوں کی طرف سے سوشل میڈیا مظاہروں حکومت مخالف ریلیوں کی تصاویر اور ویڈیوز پوسٹ کی گئی ہیں جن میں مظاہرین کو حکومت کے خلاف نعرے لگاتے دیکھا جا سکتا ہے ۔ ویڈیوز میں پولیس اور قا...

ایران میں حکومت مخالف مظاہرے جاری ، فائرنگ سے کئی مظاہرین زخمی

ہیری اورمیگھان کو کینیڈا اوربرطانیہ میں رہنے کی عبوری اجازت مل گئی وجود - منگل 14 جنوری 2020

ملکہ نے کہا ہے کہ شاہی خاندان نے سندرنگھم پر پرنس ہیری اور میگھان مرکل کے مستقبل کے حوالے سے مثبت بحث میں حصہ لیا مگر یہ اعتراف بھی کیا کہ وہ جوڑے کو شاہی خاندان کے کل وقتی رکن کی حیثیت دینے کو ترجیح دیں گی۔ تصاویر میں دکھایا گیا تھا کہ پرنس ہیری، پرنس ولیم اور پرنس چارلس ہرمیجسٹی سے دو گھنٹے جاری رہنے والی بحرانی ملاقا ت کے بعد علیحدہ علیحدہ کاروں میں واپس جا رہے ہیں۔ ڈیوک آف سسیکس نے شاہی خاندان کے فردکی حیثیت ختم کرنے کے بعد ہر میجسٹی، اپنے بھائی اور اپنے والد کا پہلی بار ...

ہیری اورمیگھان کو کینیڈا اوربرطانیہ میں رہنے کی عبوری اجازت مل گئی

امریکی صدر کی ایران میں جاری مظاہروں کی حمایت وجود - پیر 13 جنوری 2020

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے فارسی زبان میں ٹویٹر پر پوسٹ کردہ ایک ٹویٹ میں ایرانی حکومتکو کڑی تنقید کا نشانہ بنانے کے ساتھ ایرانی عوام اور حکومت مخالف مظاہروںکی حمایت کی ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ دنیا کی نظریں اس وقت ایران پرلگی ہوئی ہیں۔ ہم ایران کو مزید قتل عام کی اجازت نہیں دیں گے ۔امریکی صدر کی طرف سے ایرانی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی پرمبنی بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب گزشتہ روز ایرانی شہروں میں اس وقت لوگ سڑکوں پرنکل آگئے جب ایرانی پاسداران انقلاب نے اعتراف کیا کہ 8جنو...

امریکی صدر کی ایران میں جاری مظاہروں کی حمایت

پاسداران انقلاب ایران کے داعشی ہیں ، تہران میں عوام کی نعرے بازی وجود - پیر 13 جنوری 2020

ایران کے دارالحکومت تہران میں اس وقت لوگوں کی بڑی تعداد حکومت کے خلاف سڑکوں پر نکل آئی جب تہران نے سرکاری سطح پر اعتراف کیا کہ حال ہی میں یوکرین کا ایک مسافر جہاز میزائل حملے کے نتیجے میں حادثے کا شکار ہوا تھا۔ مظاہرین سخت مشتعل اورغم وغصے میں تھے ۔ انہوں نے پاسداران انقلاب کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے ہوئے ان کے خلاف' اے ڈکٹیٹر ۔۔۔ تم ایران کے داعشی ہو' کے نعرے لگائے ۔ایرانی اپوزیشن کے ترجمان ٹی وی چینل ایران انٹرنیشنل کی طرف سے تہران میں نکالے جانے والے جلوس کی فوٹیج دکھائی ...

پاسداران انقلاب ایران کے داعشی ہیں ، تہران میں عوام کی نعرے بازی

مظاہروں میں شرکت پر ایران میں برطانوی سفیر کی گرفتاری اور رہائی وجود - پیر 13 جنوری 2020

ایرانی پولیس نے حکومت کے خلاف نکالے گئے ایک جلوس میں شرکت کرنے پرتہران میں متعین برطانوی سفیر روب مکائیر کو حراست میں لے لیا، تاہم بعد ازاں انہیں رہا کردیا گیا ۔برطانوی حکومت نے تہران میں اپنے سفیر کی گرفتاری کو بین الاقوامی قوانین اور سفارتی آداب کی سنگین خلاف ورزی قرار یا ہے ،جبکہ امریکا نے بھی تہران میں برطانوی سفیر کی گرفتاری کو سفارتی آداب کی توہین قراردیتے ہوئے تہران پر زور دیا ہے کہ وہ اس اقدام پر برطانیہ سے معافی مانگے ۔ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کی مقرب ...

مظاہروں میں شرکت پر ایران میں برطانوی سفیر کی گرفتاری اور رہائی

یوکرین کا طیارہ مار گرانے پرایرانی اپوزیشن کا خامنہ ای سے اقتدار چھوڑنے کا مطالبہ وجود - پیر 13 جنوری 2020

ایران میں پاسداران انقلاب کی طرف سے یوکرین کا مسافر ہوائی جہاز مار گرائے جانے کے بعد نہ صرف پوری دنیا بلکہ ایرانی عوام اور سیاسی حلقوں میں بھی حکومت کے خلاف سخت غم وغصے کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ ایران کی اپوزیشن جماعتوں نے موجودہ حکومت کو یوکرین کا طیارہ مار گرانے کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای سے اقتدار چھوڑنے کا مطالبہ کیا ہے ۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایران کی 'گرین موومنٹ' کے رہنما مہدی کروبی نے ایک بیان میں کہا کہ سپریم لیڈر ملک کی قیادت کے اہل نہیں ...

یوکرین کا طیارہ مار گرانے پرایرانی اپوزیشن کا خامنہ ای سے اقتدار چھوڑنے کا مطالبہ

 امریکاکے دشمنوں کے لیے کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی، ڈونلڈ ٹرمپ وجود - جمعه 10 جنوری 2020

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ میری انتظامیہ اسلامی بنیاد پرست دہشتگردی کو شکست دینے سے باز نہیں آئے گی ، امریکہ کے دشمنوں کے لیے کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ایک اور مسلم مخالف بیان منظر عام پر آیا ہے ، ٹوئیٹر پیغام میں امریکی صدر ٹرمپ نے دہشتگردی کو مذہب اسلام کے ساتھ جوڑنے کے اپنے ماضی کے بیانات کو دہراتے ہوئے کہا ہے کہ میری انتظامیہ اسلامی بنیاد پرست دہشتگردی کو شکست دینے سے کبھی باز نہیں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ان کی انتظامیہ...

 امریکاکے دشمنوں کے لیے کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی، ڈونلڈ ٹرمپ

اسرائیلیوں کی اکثریت اپنی قیادت کو کرپٹ سمجھتی ہے ، سروے وجود - جمعه 10 جنوری 2020

اسرائیل میں کیے گئے رائے عامہ ایک تازہ جائزے میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلیوں کی اکثریت موجودہ صہیونی ریاست کو کرپٹ سمجھتی ہے ۔ مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق''ڈیموکریٹک اسرائیل''انسٹیٹوٹ کی طرف سے کیے گئے سروے میں بتایا گیا کہ 58 فی صد یہودی آباد کاروں کاخیال ہے کہ ان کی لیڈر شپ بدترین کرپٹ ہے ۔اس سروے میں 24 فی صد اسرائیلیوں کا کہنا ہے کہ وہ اپنی قیادت کوکرپٹ سمجھتے ہیں جب کہ 16 فی صد نے کہا کہ اسرائیلی قیادت کرپٹ نہیں۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 55 فی صد اسرائیلیوں کا کہنا ہے کہ ...

اسرائیلیوں کی اکثریت اپنی قیادت کو کرپٹ سمجھتی ہے ، سروے

امریکی ایوان نمائندگان میں ٹرمپ کے جنگ کے اختیارات محدود کرنے کی قرارداد منظور وجود - جمعه 10 جنوری 2020

امریکی ایوان نمائندگان میں صدر ٹرمپ کے ایران کے خلاف جنگ کرنے کے اختیارات کو محدود کرنے کی قرار داد کو منظور کر لیا گیا۔قرار داد ڈیمو کریٹس کے اکثریتی ایوان میں 194 ووٹوں کے مقابلے میں 224 ووٹوں سے منظور کی گئی۔ قرار داد کا مقصد ایران کے ساتھ کسی بھی تنازع کی صورت میں عسکری کارروائی کے لیے کانگریس کی منظوری کو لازمی قرار دینا ہے ، سوائے اس کے کہ امریکا کو کسی ناگزیر حملے کا سامنا ہو۔ٹرمپ سے جنگ کا اختیار واپس لینے کا ڈیموکریٹس کا بل اگلے ہفتے سینیٹ میں بھیجے جانے کا امکان ہے ...

امریکی ایوان نمائندگان میں ٹرمپ کے جنگ کے اختیارات محدود کرنے کی قرارداد منظور

حرم شریف میں زمزم کے 15 ہزار کولر اور نئی قالینوں کا اضافہ وجود - جمعه 10 جنوری 2020

مسجد الحرام کی انتظامیہ نے حرم شریف کے خارجی صحنوں، دالانوں اور راہداریوں میں آب زمزم کے کولرز کی تعداد میں 15 ہزار کا اضافہ کر دیا ۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق مسجد الحرام انتظامیہ کے ماتحت زمزم سبیل کے ادارے کے ڈائریکٹر مشاری المسعودی نے میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ ہمارے ادارے نے سٹیل اور سنگ مرمر والی آب زمزم کی سبیلیں بھی شروع کردی ہیں جبکہ حرم شریف میں اہم مقامات پر بھی آب زمزم کے کولرز کی تعداد میں 15 ہزار کولرش کا اضافہ کر دیا ہے جبکہ مسجد الحرام شریف کے دالانوں او...

حرم شریف میں زمزم کے 15 ہزار کولر اور نئی قالینوں کا اضافہ

مغربی میڈیا نے ایران میں تباہ یوکرینی طیارے کی فوٹیج جاری کردی وجود - جمعه 10 جنوری 2020

مغربی میڈیا نے ایران میں تباہ یوکرینی طیارے کی فوٹیج جاری کردی ،یوکرین کی ایئرلائن کو تہران ایئرپورٹ کے قریب نشانا بنایا گیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق امریکی اخبار نے یوکرینن ایئرلائن کے جہاز کی تباہ ہونے کی فوٹیج حاصل کرلی ،فوٹیج میں یوکرینن ایئر لائنز کو ٹیک آف کے فوری بعد میزائل سے تباہ ہوتے دیکھا جاسکتا ہے ۔فوٹیج میں واضح دیکھا جاسکتا ہے کہ یوکرینن ایئر لائن میزائل لگنے سے تباہ ہوئی، جہاز فنی خرابی کے باعث تباہ نہیں ہوا ہے ۔امریکی صدر نے الزام عائد کیا ہے کہ طیارہ کو نشانہ بن...

مغربی میڈیا نے ایران میں تباہ یوکرینی طیارے کی فوٹیج جاری کردی

عراق ،بغداد میں امریکی سفارتخانے پر راکٹوں سے حملہ وجود - جمعرات 09 جنوری 2020

عراقی دارالحکومت میں امریکی سفارتخانے پر راکٹوں سے حملہ کیا گیا، کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق عراق کے دارالحکومت بغداد میں امریکی سفارتخانے پر راکٹوں سے حملہ کیا گیا، امریکی سفارتخانے کے گرین زون میں 3 راکٹ داغے گئے جبکہ گرین زون میں 2 راکٹ امریکی سفارتخانے کے قریب گرے تاہم امریکی سفارتخانے کو راکٹ حملے سے کوئی نقصان نہیں پہنچا،راکٹ گرنے سے 2 دھماکے ہوئے اور خطرے کے سائرن بجائے گئے ،ایک راکٹ امریکی سفارت خانے سے سو میٹر فاصلے پر گرا۔ وائٹ ہائوس یا...

عراق ،بغداد میں امریکی سفارتخانے پر راکٹوں سے حملہ