وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

مقبوضہ کشمیر میں 52 ویں روز کرفیو، بندشیں ہٹتے ہی عوامی احتجاج پھر شروع

بدھ 31 اگست 2016 مقبوضہ کشمیر میں 52 ویں روز کرفیو، بندشیں ہٹتے ہی عوامی احتجاج پھر شروع

kashmir-slogan

سری نگر کے دو پولیس اسٹیشنوں سے وابستہ علاقے اور جنوبی ضلع پلوامہ کو چھوڑ کر پیر کو وادی میں جاری احتجاجی لہر کے52ویں روز جونہی کرفیو اور بندشیں ہٹائی گئیں، تو شہر ودیہات میں شمال سے لیکر جنوب تک کشمیری ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر آگئے اور احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع کردیا۔سری نگر کی معروف نیوز ایجنسی کے این این کے مطابق اگرچہ کرفیو ہٹائے جانے کا سرکاری طور پر اعلان کیاگیا ہے، لیکن بیشتر علاقوں میں پولیس اور مظاہرین میں جھڑپوں کے بعد غیر اعلانیہ کرفیو نافذ کردیا گیا اور متاثرہ علاقوں میں لوگوں کی نقل وحرکت اور گاڑیوں کی نقل و حرکت پر ایک بار پھر سخت ترین پابندی عائد کردی گئی ہے۔

اطلاعات کے مطابق کرفیو اور پابندیاں ہٹانے کے ساتھ ہی نوجوانوں کی ٹولیاں سڑکوں پر نمودار ہوئی جنہوں نے احتجاجی مظاہرے کیے۔فورسز نے فوری طور پر کارروائی عمل میں لاتے ہوئے مظاہرین کو تتر بتر کرنے کیلئے ٹیر گیس، شیلنگ، پیلٹ گن فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں بیسیوں افراد زخمی ہوئے۔ برہان مظفر وانی کی شہادت کے بعد اب تک70 افراد جام شہادت نوش کرچکے ہیں، جن میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔ چھروں، گولیوں اور آنسوگیس کے گولوں سے 8 ہزار سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ پرتشدد پتھراؤ کے دوران میں فورسز کے تین ہزار اہلکار بھی زخمی ہوئے ہیں جبکہ اس دوران میں دو پولیس اہلکار مارے بھی گئے۔دریں اثنا ء حکومت نے مزاحمتی رہنماؤں سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کو مسلسل قید رکھا ہے۔گزشتہ روز پولیس نے میرواعظ عمرفاروق کو بھی گرفتار کر لیا تھا۔ انھیں چشمہ شاہی کی ایک ٹورسٹ ہٹ میں قید کیا گیا ہے، جسے حکومت نے سب جیل قرار دیا ہے۔ یہ دوسراموقع ہے کہ میر واعظ عمرفاروق کو حراست میں لیا گیا ہے،اس سے قبل اُنہیں2010میں بھی گرفتار کیا گیاتھا۔

ادھرمقبوضہ کشمیر کی سکھ برادری نے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ انسانیت، جموریت اور کشمیریت کا نعرہ دھوکے کے سواکچھ نہیں جبکہ بھارت کو نوشتہ دیوار پڑھ کر کشمیر میں رائے شماری کرانی چاہئے۔ ’Sikh Intellectuals Circle ‘ کے چیئرمین نریندر سنگھ خالصہ نے موجودہ صورتحال کو خالص عوامی تحریک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیریوں کی رواں جدوجہد کو نہ تو ماضی میں قوت اور فوجی دباؤ کی بنیاد پر دبایا گیا اور نہ مستقبل میں دبایا جاسکتا ہے۔نریندر سنگھ خالصہ نے پیر کو پریس کالونی سرینگر میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سکھ برادری کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ رواں جدوجہد کے حوالے سے مزاحمتی قائدین سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کی جانب سے جو مشترکہ احتجاجی پروگرام ترتیب دیا جارہا ہے اس میں بھی سکھ برادری مکمل تعاون فراہم کرے گی۔

دریں اثنا حریت کانفرنس کے سربراہ میرواعظ مولوی محمد عمر فاروق نے کہا ہے کہ تحریک مخالف اور اتحاد دشمن افواہیں پھیلا کر اتحاد و اتفاق کو پارہ پارہ کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔انہوں نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ مزاحمتی قیادت کی جانب سے دیے گئے احتجاجی پروگراموں پر سختی سے عمل کریں۔ حریت(ع) کے محبوس چیئرمین میرواعظ مولوی محمد عمر فاروق نے جیل سے اپنے ایک خصوصی پیغام میں کشمیری عوام کے نام اپنی اپیل میں کہا ہے کہ ہمارے حق و انصاف پر مبنی حق خودارادیت کی جدوجہد ایک انتہائی نازک مرحلے میں داخل ہو چکی ہے جہاں پوری یکسوئی اور اتحاد ِفکر و عمل کے ساتھ قیادت اور قوم کو تحریک آزادی کو اُسکے منطقی انجام تک لے جانے کیلئے انتہائی پھونک پھونک کر قدم اٹھانے کی ضرورت ہے۔ میرواعظ نے کہا کہ مظالم، تشدد اور قید و بند کی سختیاں ہمیں ہرگز اپنے مطالبات اور جدوجہد سے باز نہیں رکھ سکتیں اور نہ ہی ہم حکومتی جبر و استبداد کے سامنے جھکنے کو تیار ہیں۔پریس کے نام جاری ایک اور بیان میں حریت کا نفرنس گیلانی کے ترجمان نے کہاہے کہ جموں کشمیر میں برپا آزادی کی ہمہ گیر تحریک کو بزور طاقت کچلنے کی تمام تر سفاکانہ کوششوں میں ناکامی کا منہ دیکھنے کے بعد بھارتی سرکار اب بوکھلاہٹ اور گھبراہٹ میں مبتلا ہوکر تحریکِ آزادی کے قائدین اور کارکنان کو تعزیراتی اور نفسیاتی کریک ڈاؤن کی زد میں لارہی ہے تاکہ مزاحمتی قیادت عوامی جذبات واحساسات کی ترجمانی سے دستبردار ہوجائے اور یوں بھارتی سرکار کو نہتے اور بے بس کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم پر پردہ ڈالنے کا ایک اور موقع میسر ہو۔

حریت ترجمان نے اپنے بیان میں انکشاف کیا ہے کہ سید علی گیلانی کے فرزند ڈاکٹر نعیم گیلانی کے خلاف بھارتی تفتیشی ایجنسی این آئی اے نے ایک نوٹس جاری کیا ہے جس میں انہیں این آئی اے کے تفتیشی مرکز واقع شیوپورہ میں حاضر ہونے کو کہا گیا ہے۔ نوٹس پر ردّعمل ظاہرتے کرتے ہوئے کہا گیا کہ ایسے مضحکہ خیز مفروضوں کی آڑ میں گیلانی صاحب کے اہل خانہ کو زیرِ عتاب لانے سے بھارت کو کچھ حاصل ہونے والا نہیں ہے کیونکہ بھارتی سرکار نے اس سے قبل حریت قیادت کے خلاف بارہا کردار کشی کی ایسی لاحاصل کوششوں کو آزمایا ہے، لیکن پھر بھی عوام میں حریت قیادت کے اعتبار کو کبھی کوئی گزند نہیں پہنچا سکی۔ بیان میں عوام سے اپیل کی گئی ہے کہ احتجاجی پروگرام کو ہر قیمت پر کامیاب بنایا جائے اور ہر پروگرام پر سختی سے کاربند رہا جائے۔ ساتھ ہی عوام سے یہ بھی کہا گیا کہ خون سے سینچی جارہی اس تحریک کے ساتھ کسی کو بھی کھلواڑ کرنے کا موقع نہ دیا جائے۔

kashmir-graffiti


متعلقہ خبریں


فلسطین ہمارا پہلا مسئلہ تھا ہے اور رہے گا، سعودی عرب وجود - جمعه 17 جنوری 2020

سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان آل سعود نے کہا ہے کہ فلسطین ہمارا پہلا مسئلہ تھا، آج بھی ہے اور آئندہ بھی رہے گا۔سعودی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ہم نے ہمیشہ عرب امن فارمولے اور بین الاقوامی قانونی قراردادوں کے مطابق جامع عرب حل کا مطالبہ کیا ہے ۔ انھوں نے کہا ہے کہ ہمارا غیر متزلزل موقف ہے کہ فلسطینیوں کے حوالے سے قابض حکام کے یکطرفہ اقدامات غیر قانونی ہیں۔انھوں نے کہا کہ سعودی عرب، عرب ممالک کے اتحاد و سالمیت کو ضروری سمجھتا ہے اور عربوں کے استحکام کو خطرہ لاحق کرنے والی...

فلسطین ہمارا پہلا مسئلہ تھا ہے اور رہے گا، سعودی عرب

ایرانی حکومت ہر آنے والے دن اپنا قانونی جواز کھو رہی ہے ، مائیک پومپیو وجود - جمعه 17 جنوری 2020

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایرانی حکومت پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ تہران حکومت اپنے عوام اور پوری دنیا سے مسلسل جھوٹ بول رہی ہے ۔پومپیو نے اپنے ٹویٹر اکائونٹ پر پوسٹ کردہ ایک ٹویٹ میں لکھا کہ ایرانی حکومت اپنے عوام سے مسلسل جھوٹ بول رہی ہے اور اس کے ساتھ توہین آمیز سلوک کررہی ہے ۔ ایرانی رجیم اپنے من پسند لوگوں کو انتخابات میں کامیاب کرانے کے لیے پارلیمنٹ کے انتخابات میں دھاندلی کی بھی مرتکب ہے ۔انہوں نے یہ بھی مزید کہا کہ یہاں تک کہ ایران کے صدر کا کہنا ہے کہ ی...

ایرانی حکومت ہر آنے والے دن اپنا قانونی جواز کھو رہی ہے ، مائیک پومپیو

ایرانی میزائل حملے میں11 فوجی زخمی ہوئے ، امریکی سینٹرل کمانڈ وجود - جمعه 17 جنوری 2020

امریکی سینٹرل کمانڈ نے عراق میں 8 جنوری کو ہونے والے ایرانی میزائل حملے میں 11 امریکی فوجیوں کے زخمی ہونے کی تصدیق کر دی ہے جنہیں علاج کے لیے کویت اور جرمنی منتقل کیا گیا۔امریکی سینٹرل کمانڈ نے عراق میں ایران کی جانب سے امریکی بیس پر 8 جنوری کو کیے گئے میزائل حملے کے نتیجے میں 11 امریکی فوجی زخمی ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایرانی میزائل حملے میں کوئی امریکی فوجی ہلاک نہیں ہوا۔ترجمان امریکی سینٹرل کمانڈ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ عراق میں الاسد ایئر بیس پر ایرانی میزائل...

ایرانی میزائل حملے میں11 فوجی زخمی ہوئے ، امریکی سینٹرل کمانڈ

ایران میں حکومت مخالف مظاہرے جاری ، فائرنگ سے کئی مظاہرین زخمی وجود - منگل 14 جنوری 2020

ایران میں حکومت کی طرف سے یوکرین کا مسافر جہاز مارگرائے جانے کی غلطی تسلیم کرنے بعد ملک میں حکومت کے خلاف مظاہرے جاری ہیں جن میں سیکڑوں افراد نے ایرانی رجیم کے خلاف نعرے بازی کی۔ اس موقع پر پولیس اور سیکیورٹی فورسز کی طرف سے پرتشدد حربے استعمال کیے گئے جس کے نتیجے میں کئی مظاہرین زخمی ہوئے ہیں۔ سماجی کارکنوں کی طرف سے سوشل میڈیا مظاہروں حکومت مخالف ریلیوں کی تصاویر اور ویڈیوز پوسٹ کی گئی ہیں جن میں مظاہرین کو حکومت کے خلاف نعرے لگاتے دیکھا جا سکتا ہے ۔ ویڈیوز میں پولیس اور قا...

ایران میں حکومت مخالف مظاہرے جاری ، فائرنگ سے کئی مظاہرین زخمی

ہیری اورمیگھان کو کینیڈا اوربرطانیہ میں رہنے کی عبوری اجازت مل گئی وجود - منگل 14 جنوری 2020

ملکہ نے کہا ہے کہ شاہی خاندان نے سندرنگھم پر پرنس ہیری اور میگھان مرکل کے مستقبل کے حوالے سے مثبت بحث میں حصہ لیا مگر یہ اعتراف بھی کیا کہ وہ جوڑے کو شاہی خاندان کے کل وقتی رکن کی حیثیت دینے کو ترجیح دیں گی۔ تصاویر میں دکھایا گیا تھا کہ پرنس ہیری، پرنس ولیم اور پرنس چارلس ہرمیجسٹی سے دو گھنٹے جاری رہنے والی بحرانی ملاقا ت کے بعد علیحدہ علیحدہ کاروں میں واپس جا رہے ہیں۔ ڈیوک آف سسیکس نے شاہی خاندان کے فردکی حیثیت ختم کرنے کے بعد ہر میجسٹی، اپنے بھائی اور اپنے والد کا پہلی بار ...

ہیری اورمیگھان کو کینیڈا اوربرطانیہ میں رہنے کی عبوری اجازت مل گئی

امریکی صدر کی ایران میں جاری مظاہروں کی حمایت وجود - پیر 13 جنوری 2020

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے فارسی زبان میں ٹویٹر پر پوسٹ کردہ ایک ٹویٹ میں ایرانی حکومتکو کڑی تنقید کا نشانہ بنانے کے ساتھ ایرانی عوام اور حکومت مخالف مظاہروںکی حمایت کی ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ دنیا کی نظریں اس وقت ایران پرلگی ہوئی ہیں۔ ہم ایران کو مزید قتل عام کی اجازت نہیں دیں گے ۔امریکی صدر کی طرف سے ایرانی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی پرمبنی بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب گزشتہ روز ایرانی شہروں میں اس وقت لوگ سڑکوں پرنکل آگئے جب ایرانی پاسداران انقلاب نے اعتراف کیا کہ 8جنو...

امریکی صدر کی ایران میں جاری مظاہروں کی حمایت

پاسداران انقلاب ایران کے داعشی ہیں ، تہران میں عوام کی نعرے بازی وجود - پیر 13 جنوری 2020

ایران کے دارالحکومت تہران میں اس وقت لوگوں کی بڑی تعداد حکومت کے خلاف سڑکوں پر نکل آئی جب تہران نے سرکاری سطح پر اعتراف کیا کہ حال ہی میں یوکرین کا ایک مسافر جہاز میزائل حملے کے نتیجے میں حادثے کا شکار ہوا تھا۔ مظاہرین سخت مشتعل اورغم وغصے میں تھے ۔ انہوں نے پاسداران انقلاب کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے ہوئے ان کے خلاف' اے ڈکٹیٹر ۔۔۔ تم ایران کے داعشی ہو' کے نعرے لگائے ۔ایرانی اپوزیشن کے ترجمان ٹی وی چینل ایران انٹرنیشنل کی طرف سے تہران میں نکالے جانے والے جلوس کی فوٹیج دکھائی ...

پاسداران انقلاب ایران کے داعشی ہیں ، تہران میں عوام کی نعرے بازی

مظاہروں میں شرکت پر ایران میں برطانوی سفیر کی گرفتاری اور رہائی وجود - پیر 13 جنوری 2020

ایرانی پولیس نے حکومت کے خلاف نکالے گئے ایک جلوس میں شرکت کرنے پرتہران میں متعین برطانوی سفیر روب مکائیر کو حراست میں لے لیا، تاہم بعد ازاں انہیں رہا کردیا گیا ۔برطانوی حکومت نے تہران میں اپنے سفیر کی گرفتاری کو بین الاقوامی قوانین اور سفارتی آداب کی سنگین خلاف ورزی قرار یا ہے ،جبکہ امریکا نے بھی تہران میں برطانوی سفیر کی گرفتاری کو سفارتی آداب کی توہین قراردیتے ہوئے تہران پر زور دیا ہے کہ وہ اس اقدام پر برطانیہ سے معافی مانگے ۔ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کی مقرب ...

مظاہروں میں شرکت پر ایران میں برطانوی سفیر کی گرفتاری اور رہائی

یوکرین کا طیارہ مار گرانے پرایرانی اپوزیشن کا خامنہ ای سے اقتدار چھوڑنے کا مطالبہ وجود - پیر 13 جنوری 2020

ایران میں پاسداران انقلاب کی طرف سے یوکرین کا مسافر ہوائی جہاز مار گرائے جانے کے بعد نہ صرف پوری دنیا بلکہ ایرانی عوام اور سیاسی حلقوں میں بھی حکومت کے خلاف سخت غم وغصے کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ ایران کی اپوزیشن جماعتوں نے موجودہ حکومت کو یوکرین کا طیارہ مار گرانے کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای سے اقتدار چھوڑنے کا مطالبہ کیا ہے ۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایران کی 'گرین موومنٹ' کے رہنما مہدی کروبی نے ایک بیان میں کہا کہ سپریم لیڈر ملک کی قیادت کے اہل نہیں ...

یوکرین کا طیارہ مار گرانے پرایرانی اپوزیشن کا خامنہ ای سے اقتدار چھوڑنے کا مطالبہ

 امریکاکے دشمنوں کے لیے کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی، ڈونلڈ ٹرمپ وجود - جمعه 10 جنوری 2020

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ میری انتظامیہ اسلامی بنیاد پرست دہشتگردی کو شکست دینے سے باز نہیں آئے گی ، امریکہ کے دشمنوں کے لیے کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ایک اور مسلم مخالف بیان منظر عام پر آیا ہے ، ٹوئیٹر پیغام میں امریکی صدر ٹرمپ نے دہشتگردی کو مذہب اسلام کے ساتھ جوڑنے کے اپنے ماضی کے بیانات کو دہراتے ہوئے کہا ہے کہ میری انتظامیہ اسلامی بنیاد پرست دہشتگردی کو شکست دینے سے کبھی باز نہیں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ان کی انتظامیہ...

 امریکاکے دشمنوں کے لیے کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی، ڈونلڈ ٹرمپ

اسرائیلیوں کی اکثریت اپنی قیادت کو کرپٹ سمجھتی ہے ، سروے وجود - جمعه 10 جنوری 2020

اسرائیل میں کیے گئے رائے عامہ ایک تازہ جائزے میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلیوں کی اکثریت موجودہ صہیونی ریاست کو کرپٹ سمجھتی ہے ۔ مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق''ڈیموکریٹک اسرائیل''انسٹیٹوٹ کی طرف سے کیے گئے سروے میں بتایا گیا کہ 58 فی صد یہودی آباد کاروں کاخیال ہے کہ ان کی لیڈر شپ بدترین کرپٹ ہے ۔اس سروے میں 24 فی صد اسرائیلیوں کا کہنا ہے کہ وہ اپنی قیادت کوکرپٹ سمجھتے ہیں جب کہ 16 فی صد نے کہا کہ اسرائیلی قیادت کرپٹ نہیں۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 55 فی صد اسرائیلیوں کا کہنا ہے کہ ...

اسرائیلیوں کی اکثریت اپنی قیادت کو کرپٹ سمجھتی ہے ، سروے

امریکی ایوان نمائندگان میں ٹرمپ کے جنگ کے اختیارات محدود کرنے کی قرارداد منظور وجود - جمعه 10 جنوری 2020

امریکی ایوان نمائندگان میں صدر ٹرمپ کے ایران کے خلاف جنگ کرنے کے اختیارات کو محدود کرنے کی قرار داد کو منظور کر لیا گیا۔قرار داد ڈیمو کریٹس کے اکثریتی ایوان میں 194 ووٹوں کے مقابلے میں 224 ووٹوں سے منظور کی گئی۔ قرار داد کا مقصد ایران کے ساتھ کسی بھی تنازع کی صورت میں عسکری کارروائی کے لیے کانگریس کی منظوری کو لازمی قرار دینا ہے ، سوائے اس کے کہ امریکا کو کسی ناگزیر حملے کا سامنا ہو۔ٹرمپ سے جنگ کا اختیار واپس لینے کا ڈیموکریٹس کا بل اگلے ہفتے سینیٹ میں بھیجے جانے کا امکان ہے ...

امریکی ایوان نمائندگان میں ٹرمپ کے جنگ کے اختیارات محدود کرنے کی قرارداد منظور