وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar

برٹش وائلڈلائف فوٹوگرافی ایوارڈز 2015ء، شاہکار تصاویر

جمعرات 22 اکتوبر 2015 برٹش وائلڈلائف فوٹوگرافی ایوارڈز 2015ء، شاہکار تصاویر

برٹش وائلڈلائف فوٹوگرافی ایوارڈز میں شامل تصاویر سے اندازہ ہو رہا ہے کہ دیکھنے والی آنکھ کیا ہوتی ہے۔ 2015ء کے ان ایوارڈز میں “جانوروں کے رویے ” سے لے کر “شہروں میں جنگلی حیات” تک مختلف موضوعات پر جیتنے والی تصاویر ان ہزاروں انٹریز میں سے منتخب ہوئیں جوشوقیہ اور پیشہ ورفوٹوگرافرز نے مقابلے میں پیش کی تھیں۔

جیتنے والی تصاویر کی قومی دورے میں ملک گیر نمائش کی جائے گی جبکہ برٹش وائلڈلائف فوٹوگرافی کلیکشن کو کتابی صورت میں بھی شائع کیا گیا ہے۔

رواں سال جیتنے والی 14 بہترین تصاویر یہ ہیں:

فوٹوگرافر: ولیم ہاروے

فوٹوگرافر: ولیم ہاروے

فوٹوگرافر: پال کولی

فوٹوگرافر: پال کولی

فوٹوگرافر: کرس ورسلی

فوٹوگرافر: کرس ورسلی

فوٹوگرافر: ٹیری وٹیکر

فوٹوگرافر: ٹیری وٹیکر

فوٹوگرافر: چیتانیا دیش پانڈے

فوٹوگرافر: چیتانیا دیش پانڈے

فوٹوگرافر: ٹم ہنٹ

فوٹوگرافر: ٹم ہنٹ

فوٹوگرافر: ٹوموس برینگون

فوٹوگرافر: ٹوموس برینگون

فوٹوگرافر: کرس اسپیلر

فوٹوگرافر: کرس اسپیلر

فوٹوگرافر: ایلکس ہائیڈ

فوٹوگرافر: ایلکس ہائیڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: کیون سافورڈ

فوٹوگرافر: بیری ولیمز

فوٹوگرافر: بیری ولیمز


متعلقہ خبریں


چین کے خوبصورت طائرانہ مناظر وجود - هفته 17 اکتوبر 2015

[caption id="attachment_31139" align="aligncenter" width="900"] آڈی کی نئی گاڑیاں ایک وسیع پارکنگ علاقے میں موجود۔ چانگ، صوبہ جلن [/caption] [caption id="attachment_31138" align="aligncenter" width="900"] سمندر طوفان کی آمد سے قبل محفوظ مقام پر لنگر انداز کشتیاں۔ تائی ژو، صوبہ ژی جیانگ[/caption] [caption id="attachment_31137" align="aligncenter" width="900"] سمندر طوفان کی آمد سے قبل محفوظ مقام پر لنگر انداز کشتیاں۔ تائی ژو، صوبہ ژی جیانگ[/caption] [capti...

چین کے خوبصورت طائرانہ مناظر

فطرت کے سفیروں کا قتلِ عام نیلوفر کھر - هفته 10 اکتوبر 2015

موسمی پھل اور سوغات کے تحائف ایک دوسرے کو بھجوانا ایک قدیم روایت ہے۔ ماضی قریب میں بابائے جمہوریت نوابزادہ نصر اﷲ خان اپنے ذاتی باغات سے آموں کی پیٹیاں تحائف کی صورت میں سیاستدانوں اور صحافیوں کا بھجوایا کرتے تھے۔ ا س قسم کی مختلف روایات آج بھی جاری ہیں۔ بیورکریسی کے اعلیٰ افسران کو ان کے ماتحتوں کی جانب سے تحائف بھجوانے کا عمل بھی جاری و ساری ہے۔ افسران کو تحائف بجھوانے والے اگرچہ خاندانی طور پر مستحکم نہیں ہوتے ۔ زیادہ تر لوگوں کے نہ تو باغات ہوتے ہیں اور نہ ایسے ذاتی وسائل...

فطرت کے سفیروں کا قتلِ عام