وجود

... loading ...

وجود
وجود
ashaar
ترکی میں غیرقانونی مقیم 42پاکستانی ملک بدر وجود - هفته 23 نومبر 2019

ترکی سے ڈی پورٹ کئے گئے 42 پاکستانی غیر ملکی ایئر لائن کے ذریعے اسلام آباد پہنچ گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق ترکی میں غیرقانونی طور پر مقیم غیر ملکیوں کیخلاف آپریشن جاری ہے ،ترکی نے غیرقانونی طور پر مقیم42 پاکستانیوں کو ڈی پورٹ کیا ۔غیرقانونی مقیم پاکستانیوں کو غیر ملکی ایئر لائن کے ذریعے اسلام آباد ایئر پورٹ پہنچایا گیا، جہاں سے انہیں ایف آئی اے سیل منتقل کردیاگیا ہے۔

ترکی میں غیرقانونی مقیم 42پاکستانی ملک بدر

ترک صدرکا انتقامی فیصلہ،احمد داود اوگلو کی استنبول یونیورسٹی بند کر دی وجود - جمعه 22 نومبر 2019

ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے سابق وزیراعظم احمد دائود اوگلوکی شہیر استنبول یونیورسٹی کو بند کردیا جس کے بعد ہزاروں طلبا کا مستقبل دائو پر لگ گیا ہے ۔میڈیارپورٹس کے مطابق ترک صدر نے احمد دائود اوگلو کوپارٹی چھوڑنے اور ان سے اختلاف کرنے کی وجہ سے یہ سزا دی ہے جبکہ یونیورسٹی کوملنے والی رقم بھی بند کردی اور یونیورسٹی کے اثاثے بھی منجمد کردئیے ہیں۔رپورٹ کے مطابق استنبول کی ایک عدالت نے خلق بنک کو شہیر استنبول یونیورسٹی کوفنڈز کی فراہمی پرپابندی لگا ئی ہے۔ اوگلو نے یہ درس گاہ 2008 م...

ترک صدرکا انتقامی فیصلہ،احمد داود اوگلو کی استنبول یونیورسٹی بند کر دی

21ویں صدی میں جنگی جرائم کی گنجائش نہیں ، امریکی ذمے دار کا ایردوآن کو انتباہ وجود - منگل 12 نومبر 2019

امریکی قومی سلامتی کے مشیر رابرٹ اوبرائن نے ترکی پر پابندیاں عائد کرنے کی دھمکی دیتے ہوئے ترکی کو خبردار کیا ہے کہ وہ شامی کْردوں کے خلاف کسی بھی قسم کے جنگی جرائم یا نسلی تطہیر سے باز رہے۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا جب ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن بدھ کے روز وائٹ ہاؤس میں اجلاس میں شرکت کے لیے واشنگٹن کے دورے کی تیاری میں مصروف ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق اوبرائن کا کہنا تھا کہ وہ شمال مشرقی شام میں ترکی کے حملے کے بعد وہاں ممکنہ جنگی جرائم ...

21ویں صدی میں جنگی جرائم کی گنجائش نہیں ، امریکی ذمے دار کا ایردوآن کو انتباہ

امریکاسے کشیدگی، ترک صدر کا دورہ وائٹ ہائوس منسوخ ہونے کا عندیہامریکاسے کشیدگی، ترک صدر کا دورہ وائٹ ہائوس منسوخ ہونے کا عندیہ وجود - بدھ 06 نومبر 2019

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن آئندہ ہفتے امریکا کے دورے کی تیاری کر رہے ہیں مگر دوسری طرف ذرائع نے بتایا ہے کہ امریکا اور ترکی کے درمیان جاری بعض اختلافات اور تنازعات ایردوآن کے دورے کو منسوخ کرنے کا باعث بن سکتے ہیں۔غیرملکی خبر رساں اداروں کے مطابق تین ترک عہدیداروں نے بتایا کہ ترک صدر رجب طیب اردوآن ایک صدی قبل آرمینیائی باشندوں کے قتل کے واقعات کو امریکی ایوان نمائندگان کی جانب سے نسل کشی قرار دینے اور انقرہ کے خلاف نئی پابندیاں عاید کرنے کے امکانات کے پیش نظر امریکا کا...

امریکاسے کشیدگی، ترک صدر کا دورہ وائٹ ہائوس منسوخ ہونے کا عندیہامریکاسے کشیدگی، ترک صدر کا دورہ وائٹ ہائوس منسوخ ہونے کا عندیہ

کردوں کے لیے اس خطے میں کوئی جگہ نہیں،ترک صدر کا نسل پرستانہ بیان وجود - اتوار 27 اکتوبر 2019

ترک صدر رجب طیب اردوآن نے شمال مشرقی شام میں اپنے فوجی آپریشن کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے یہ صحرائی علاقہ کردوں کے لیے نہیں بلکہ عربوں کی رہائش کے لیے ہے۔ وہ یہ بھول گئے کہ ترکی فوجی آپریشن کے نتیجے میں ہزراوں کرد شہری جن میں خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد تھی نقل مکانی پر مجبور ہوئے ۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اردوآن نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ کرد عسکریت پسندوں نے انخلا کے دورانیے کے بعد اگر وہ شام کے محفوظ علاقے میں دکھائی دیں تو ترکی ان کے خلاف کارروائی کرے گا۔

کردوں کے لیے اس خطے میں کوئی جگہ نہیں،ترک صدر کا نسل پرستانہ بیان

ترکی میں ای سگریٹ کی اجازت نہیں دوں گا،ترک صدر وجود - پیر 21 اکتوبر 2019

ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے کہا ہے کہ میں کبھی بھی الیکٹرانک (ای) سگریٹ کی کمپنی کو اجازت نہیں دوں گا کہ وہ اپنی مصنوعات ترکی میں فروخت کریں۔ استنبول میں تمباکو نوشی کے حوالے سے تقریب میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں نے وزیر تجارت کو حکم دیا ہے کہ ترکی میں الیکٹرانک سگریٹ کی اجازت نہیں دینی کیوں کہ اس زہر سے تمباکو کی کمپنیاں امیر ہوتی جارہی تھیں۔عالمی ادارہ صحت کے اعداد و شمار کے مطابق 2016 میں ترکی کی آبادی کے 27 فیصد 15 سالہ نوجوان سگریٹ پیتے تھے ، جبکہ 2010 میں 31...

ترکی میں ای سگریٹ کی اجازت نہیں دوں گا،ترک صدر

امریکا سے مذاکرات ‘ترکی نے کردوں کیخلاف آپریشن روک دیا وجود - جمعه 18 اکتوبر 2019

ترکی اور امریکا کے درمیان شام میں کردوں کے خلاف جنگ بندی پر اتفاق ہوگیا جس کے بعد ترکی نے شام میں عارضی طور پر سیز فائر کا اعلان کرتے ہوئے کردوں کو نکلنے کے لیے پانچ دن کی مہلت دے دی۔جنگ بندی کے حوالے سے امریکا کے نائب صدر مائیک پینس ترک صدر رجب طیب اردوان سے ملاقات کرنے انقرہ پہنچے اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا پیغام پہنچایا، ان کے ساتھ وزیر خارجہ مائیک پومپیو بھی موجود تھے۔ملاقات کے بعد دونوں رہنماؤں نے پریس کانفرنس کی جس میں مائیک پینس نے بتایا کہ امریکا اور ترکی کے درمیان...

امریکا سے مذاکرات ‘ترکی نے کردوں کیخلاف آپریشن روک دیا

کانگرس میں ایردوآن اور خاندان کے اثاثوں کی رپورٹ طلب وجود - جمعه 18 اکتوبر 2019

شام میں ترکی کی فوجی کارروائی کے بعد امریکا نے ترک حکومت اور صدر طیب ایردوآن کے خلاف مزید اقدامات پرعمل درآمد شروع کیا ہے۔ ری پبلیکن رکن کانگرس سینیٹر لنڈسی گراہم اور متعدد امریکی سینیٹرز نے کانگرس میں ایک نیا بل پیش کیا ہے جس میں ترک عہدیداروں اور اداروں پر عائد کی جانے والی پابندیوں کی تفصیلات کے ساتھ ساتھ حکومت سے کہا گیا ہے کہ وہ ترک صدر طیب ایردوآن اور ان کے خاندان کے اثاثوں کے بارے میں تفصیلی رپورٹ فراہم کرے۔ اس بل میں روس ، ایران اور ترکی کے لیے شام میں تیل پیدا کرن...

کانگرس میں ایردوآن اور خاندان کے اثاثوں کی رپورٹ طلب

شام پر حملہ ،امریکا کی ترکی پر پابندیاں وجود - منگل 15 اکتوبر 2019

شام پر ترک حملے کے بعد امریکا نے ایکشن لیتے ہوئے ترکی پر پابندیاں عائد کردیں جب کہ صدر ٹرمپ نے دھمکی دی ہے کہ وہ ترکی کی معیشت کو برباد کرنے کیلئے مکمل تیار ہیں۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکا کی جانب سے ترکی کی وزارت دفاع اور توانائی پر پابندیاں عائد کی گئی ہیں جب کہ ترکی کے دو وزرا اور تین سینئر عہدیداروں پر بھی پابندی لگادی گئی ۔میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے امریکی وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ ترکی پر عائد کی گئی پابندیاں بہت سخت ہیں جو اس کی معیشت پر بہت زیادہ اثر...

شام پر حملہ ،امریکا کی ترکی پر پابندیاں

تْرکی کا شام میں اہم تزویراتی شاہراہ پر کنٹرول کا دعویٰ وجود - منگل 15 اکتوبر 2019

شام میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے ادارے سیرین آبزر ویٹری فار ہیومن رائٹس کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شام کے شہر راس العین میں ترکی کے فضائی حملے میں شہریوں اور صحافیوں سمیت نو افراد ہلاک ہو گئے۔آبزرویٹری کے ڈائریکٹر رامی عبد الرحمن نے بتایا کہ یہ حملہ شمالی شام کے علاقے القاشملی سے راس العین میں یکجہتی کے لیے آنے والے ایک گروپ پر کیا گیا۔شام میں کردوں کی نمایندہ سیرین ڈیموکریٹک فورسز'ایس ڈی ایف' کے ایک اہلکار نے بتایا کہ ترکی کے جنگی طیاروں نے "سویلین قافلے" پر حمل...

تْرکی کا شام میں اہم تزویراتی شاہراہ پر کنٹرول کا دعویٰ

ٹرمپ نے اسرائیلی فوج کے طویل المیعاد منصوبے پر پانی پھیر دیا وجود - اتوار 13 اکتوبر 2019

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شام میں کردوں کی حمایت سے دست برداری کا اعلان کرکے اسرائیلی فوج کے طویل المیعاد منصوبے پرپانی پھیر دیا۔ غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اسرائیل کے موجودہ آرمی چیف نے کثیر سالہ منصوبہ تیارکیا تھا جس کی نگرانی آرمی چیف اویو کوحاوی خود کررہے تھے ۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شام میں کرد آبادی کی حمایت سے دست برداری کا اعلان کرکے اسرائیل کے منصوبے پر پانی پھیر دیا۔ رپورٹ کے مطابق اسرائیل کے لیے امریکی صدر کا ترکوں کی حمایت ترک کرنا حیران کن ہے ۔ اسرا...

ٹرمپ نے اسرائیلی فوج کے طویل المیعاد منصوبے پر پانی پھیر دیا

ترکی کو شام میں فوجی کارروائی کی اجازت نہیں دی،امریکی وزیر خارجہ وجود - جمعه 11 اکتوبر 2019

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ امریکا نے ترکی کو شام میں فوجی کارروائی کی اجازت نہیں دی۔امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ٹی وی چینل پی بی ایس کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ یہ اطلاعات بالکل غلط ہیں کہ امریکا نے ترکی کو اس آپریشن کی اجازت دی ہے، انہوں نے کہا کہ ہم نے ترکی کو کوئی گرین سگنل نہیں دیا۔اگر امریکا نے ترکی کو اجازت نہیں دی تو شام سے فوج کیوں نکالی، اس سوال کے جواب میں وزیر خارجہ نے شام سے امریکی فوجی نکالنے کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے ترکی کے حفاظتی خدشات...

ترکی کو شام میں فوجی کارروائی کی اجازت نہیں دی،امریکی وزیر خارجہ

اسرائیل کا القدس میں ترکی کی سرگرمیوں پر پابندی لگانے کا منصوبہ وجود - جمعرات 10 اکتوبر 2019

اسرائیلی وزارت خارجہ نے وزیر خارجہ یسرایل کاٹز کے ایما پر''مقبوضہ بیت المقدس''میں ترک حکومت کی سرگرمیوں اور ترکی کے تعاون سے چلنے والے منصوبوں پر پابندی لگانے کا منصوبہ تیار کر لیا۔اسرائیلی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس میں ترکی کی سماجی اور ترقیاتی سرگرمیوں کو اشتعال انگیز قرار دیتے ہوئے ان پر پابندی کا فیصلہ کیا ہے ۔ وزارت خارجہ نے القدس میں ترک حکومت کے تعاون سے شروع کی گئی کسی بھی قسم کی سرگرمی پرپابندی لگانے کا منصوبہ بنایا ہے ۔ رپورٹ میں بتایا ...

اسرائیل کا القدس میں ترکی کی سرگرمیوں پر پابندی لگانے کا منصوبہ

مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں، ترک اسپیکر وجود - جمعرات 03 اکتوبر 2019

ترک پارلیمنٹ کے اسپیکرمصطفی سینٹوپ نے کہا ہے کہ کشمیر کے مسئلے پر پاکستان کا ساتھ دینا ترکی کی ذمہ داری ہے ۔ ترک پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے اسپیکر مصطفی سینٹوپ نے کہا کہ ہم مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں اور ترکی اس مسئلے پر پاکستان کے ساتھ کھڑا ہونا اپنی ذمہ داری سمجھتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ترک قوم جنگ آزادی کے دوران ہندوستانی مسلمانوں کی مدد کو نہیں بھول سکی اور نہ ہم نے اس دوستی کو بھلایا ہے ۔ترک اسپیکر کا کہنا تھا کہ بھارت نے 5 اگست سے مقبوضہ کشمیر میں کرفی...

مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں، ترک اسپیکر

جنوبی ایشیا کی سلامتی کو مسئلہ کشمیر سے الگ نہیں کیا جاسکتا، طیب اردوان وجود - بدھ 25 ستمبر 2019

تر ک صدر رجب طیب اردوان نے کہا ہے کہ جنوبی ایشیا کی سلامتی کو مسئلہ کشمیر سے الگ نہیں کیا جاسکتا، عالمی برادری مسئلہ کشمیر پر توجہ دینے میں ناکام رہے جو 72 برسوں سے حل طلب ہے ، پاکستان اور بھارت کے درمیان موجود مسئلہ کشمیر کو مذاکرات کے ذریعے حل کر یں۔نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے طیب ادوان نے کہا کہ عالمی برادری مسئلہ کشمیر پر توجہ دینے میں ناکام رہے جو 72 برسوں سے حل طلب ہے ۔ترک صدر نے کہا کہ جنوبی ایشیا کی سلامتی و استحکام کو مسئلہ کشمی...

جنوبی ایشیا کی سلامتی کو مسئلہ کشمیر سے الگ نہیں کیا جاسکتا، طیب اردوان

ترکی میں ناکام فوجی بغاوت ، ایف 16 جنگی طیاروں کے 300 ماہر ہوا باز فارغ وجود - پیر 18 فروری 2019

جولائی 2016ء کو ترکی میں حکومت کا تختہ الٹنے کی ناکام کوشش کے بعد صدر طیب ایردوآن نے اقتدار پراپنی گرفت مضبوط بنانے کے لیے اپنی مسلح افواج بالخصوص فضائیہ کو کمزور کردیا۔امریکی جریدے نیشنل انٹرسٹ میں شائع کی گئی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ترکی میں ناکام فوجی بغاوت کے بعد حکومت نے ایف 16 جنگی طیاروں کے 300 ماہر ہوا باز ملازمت سے فارغ کردیے ہیں۔ اتنی بڑی تعداد میں ہوازوں کی ملازمت سے برطرفی نے ترک فضائیہ میں قحط الرجال پیدا کردیا ہے۔رپورٹ کے مطابق سولہ جولائی 2016ء کے بعد حکو...

ترکی میں ناکام فوجی بغاوت ، ایف 16 جنگی طیاروں کے 300 ماہر ہوا باز فارغ

اردوان کی دھمکی کے بعد ترک ٹی وی اینکر عہدے سے مستعفی وجود - جمعه 01 فروری 2019

ترکی کے ایک نجی ٹی وی چینل فاکس ٹی وی سے وابستہ ایک ترک سینئر صحافی اور ٹی وی شوکے میزبان فاتح بورتاکال نے صدر رجب طیب اردوان کی جانب سے دھمکی کے بعد عہدے استعفیٰ دے دیاہے۔عرب ٹی وی کے مطابق مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹرپر ایک ٹوئٹ میں مستعفی ہونے والے صحافی کا کہنا تھا کہ ایک ماہ قبل انہیں صدر طیب اردوان کی طرف سے سنگین نتائج کی دھمکی دی گئی تھی جس کے بعد اس نے عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔فاتح برتاکال کا پروگرام کے مقبول پروگرامات میں سے ایک تھا۔ فاتح کے استعفے کے بعد اس پروگ...

اردوان کی دھمکی کے بعد ترک ٹی وی اینکر عہدے سے مستعفی

سعودی مقتول صحافی کی منگیتر نے دورہ وائٹ ہاؤس کی دعوت ٹھکرادی محمد طاہر - اتوار 28 اکتوبر 2018

سعودی صحافی خاشقجی کی منگیتر ہاتف چنگیز نے وائٹ ہاؤس مدعو کیے جانے کے باوجود یہ کہہ کر انکار کر دیا ہے کہ صدر ٹرمپ اس قتل کی تحقیقات میں سنجیدہ نہیں ہیں۔ترک ٹی وی سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ان کے خیال میں اس دعوت نامے کا مقصد امریکا میں رائے عامہ پر اثر انداز ہونا تھا۔ٹی وی انٹرویو میں نم آنکھوں کے ساتھ انھوں نے اس دن کو یاد کیا جب ان کے منگیتر غائب ہوگئے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ان کے علم میں ہوتا کہ سعودی انھیں قتل کرنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں تو وہ انھیں کبھی بھی ق...

سعودی مقتول صحافی کی منگیتر نے دورہ وائٹ ہاؤس کی دعوت ٹھکرادی

صحافی جمال خاشقجی کی باقیات سعودی قونصل جنرل کے گھر کے لان سے مل گئیں وجود - منگل 23 اکتوبر 2018

برطانوی ٹی وی نے دعویٰ کیا ہے کہ ترکی میں سعودی قونصل خانے میں قتل ہونے والے صحافی جمال خاشقجی کی باقیات مل گئی ہیں۔برطانوی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ترکی کی روڈینا پارٹی کے رہنما داغو پیرینک نے دعویٰ کیا ہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کے جسمانی اعضاء ترکی کے شہر استنبول میں واقع سعودی قونصل جنرل محمد العتیبی کے گھر کے باغ میں واقع کنویں سے مل گئے ہیں۔ایک دوسری رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ جمال خاشقجی کے جسم کے اعضاء سعودی قونصلر جنرل کے گھر سے ملے ہیں۔برطانوی اخبار کی رپورٹ می...

صحافی جمال خاشقجی کی باقیات سعودی قونصل جنرل کے گھر کے لان سے مل گئیں

امریکا نے ترکی سے سعودی صحافی کے قتل کے شواہد مانگ لیے وجود - جمعرات 18 اکتوبر 2018

امریکا نے ترکی سے کہا ہے کہ وہ اسے وہ ریکارڈنگ فراہم کرے جس کے بارے میں کہا جا رہا کہ اس میں ٹھوس ثبوت ہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کو استنبول میں واقع سعودی قونصل خانے میں قتل کیا گیا۔امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہاکہ ہم نے ترکی سے وہ ریکارڈنگ مانگی ہے، اگر اس کا وجود ہے۔ڈونلڈ ٹرمپ نے اس بات کی تردید کی وہ سعودی عرب کو بچانے کی کوشش کر رہے ہیں۔خیال رہے کہ خاشقجی کو آخری مرتبہ استنبول میں سعودی قونصل خانے میں دو ہفتے قبل دیکھا گیا تھا۔ت...

امریکا نے ترکی سے سعودی صحافی کے قتل کے شواہد مانگ لیے

ترکی ، گولن سے تعلقات کا شبہ،مزید 110 حاضر سروس فوجی گرفتار وجود - هفته 22 ستمبر 2018

جلاوطن مبلغ فتح اللہ گولن سے تعلق کے شبے میں ترکی میں مزید 110 فوجیوں کو گرفتار کرنے کے احکامات جاری کر دیے گئے ۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق انقرہ کے چیف پراسیکیوٹر کی جانب سے جاری کردہ احکامات میں کہا گیا کہ ان فوجیوں میں تین کرنل، دو لفٹیننٹ کرنل، چھ میجر اور تین کپتان شامل ہیں۔ حکام کا کہنا تھا کہ حراست میں لیے گیے یہ تمام افراد حاضر سروس اہلکار تھے۔ واضح رہے کہ جولائی 2016ء میں ترکی میں ناکام فوجی بغاوت کے بعد سینکڑوں فوجیوں کو مقدمات اور ملازمتوں سے برطرفی کا سامنا کر...

ترکی ، گولن سے تعلقات کا شبہ،مزید 110 حاضر سروس فوجی گرفتار

جوہری توانائی کے پرامن استعمال کے لیے ترکی کا چین سے معاہدہ وجود - اتوار 04 ستمبر 2016

ترکی نے جوہری توانائی کے پرامن استعمال میں تعاون کے لیے چین کے ساتھ معاہدہ کرلیا ہے، جس کے بعد ترکی میں تیسرے نیوکلیئر پاور پلانٹ کی تعمیر کی راہ ہموار ہوگی۔ اس معاہدہ پر اصل میں 2012ء میں دستخط ہوئے تھے لیکن ایسے بین الاقوامی معاہدے اس وقت تک موثر نہیں ہوتے جب تک کہ سرکاری جریدہ میں اشاعت کے ساتھ ان کی باضابطہ تصدیق نہ ہو۔ ترکی کا پہلا نیوکلیئر پاور پلانٹ روس تعمیر کر رہا ہے جبکہ جاپان اور فرانس کا مشترکہ منصوبہ شمالی ترکی میں دوسرا پاور پلانٹ تعمیر کرے گا۔ چین تیسرے...

جوہری توانائی کے پرامن استعمال کے لیے ترکی کا چین سے معاہدہ

تاریخی فیصلہ، ترکی میں خواتین پولیس کو حجاب پہننے کی اجازت مل گئی وجود - پیر 29 اگست 2016

ترکی نے تاریخ میں پہلی بار پولیس کی خواتین اہلکاروں کو حجاب پہننے کی اجازت دی ہے کہ وہ اپنے یونیفارم سے ملتے رنگ کے اسکارف پہن سکتی ہیں۔ سرکاری جریدے سے اعلان کردہ اس فیصلےکا اطلاق فوری طور پر ہوگا۔ حکمران عدالت و ترقی پارٹی (اے کے پی) کی جڑیں اسلام پسند سیاست میں ہیں اور وہ طویل عرصے سے عورتوں کے حجاب پر عائد پابندیوں کے خاتمے کے لیے کام کر رہی تھی۔ انہی کے دور اقتدار میں ترکی نے 2010ء میں جامعات میں حجاب پر عائد پابندی ہٹانے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد 2013ء میں سرکاری ت...

تاریخی فیصلہ، ترکی میں خواتین پولیس کو حجاب پہننے کی اجازت مل گئی

ترکی کا "دہشت گردوں کے خلاف کھلی جنگ" کا اعلان وجود - پیر 29 اگست 2016

ترکی کے وزیر اعظم بن علی یلدرم نے اعلان کیا ہے کہ ترکی اب دہشت گردی کے خلاف کھلی جنگ کا سامنا کر رہا ہے۔ جمعے کو کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کی جانب سے حملے میں 11 افراد کی ہلاکت کے بعد اپنے بیان میں وزیر اعظم نے کہا کہ وہ ترکی میں دہشت گردی کے خلاف سخت کریک ڈاؤن کریں گے۔ "کوئی دہشت گرد تنظیم ترکی کو مجبور نہیں کر سکتی۔ ہم نے ان دہشت گردوں کے خلاف کھلی جنگ کا اعلان کیا ہے۔" روزنامہ حریت کے مطابق وزیر اعظم نے کہا کہ "جس طرح جنگ آزادی میں بابائے قوم نے کہا تھا "آزادی یا ...

ترکی کا

امریکا مجھے بے دخل نہیں کرے گا! فتح اللہ گولن کا امریکا پر اظہاراعتماد وجود - پیر 22 اگست 2016

ترکی میں فوج کی ناکام بغاوت کے بعد اب یہ بات ہرگزرتے دن پایہ ثبوت کو پہنچ رہی ہے کہ اس کی پشت پر فتح اللہ گولن اور امریکا کی مشترکہ منصوبہ بندی موجود تھی۔ اس تاثر کو مضبوط کرنے میں خود فتح اللہ گولن کے بیانات نے بھی خاصا کردار ادا کیا ہے۔ اب فتح اللہ گولن نے العربیہ نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے واضح الفاظ میں کہا ہے کہ امریکا اُنہیں ہرگز ترکی کے حوالے نہیں کرے گا۔اُن کے اپنے الفاظ اس ضمن میں یہ تھے کہ "امریکا ترکی کی جانب سے باضابطہ درخواست کے باوجود اُنہیں بے دخل نہیں کرے گ...

امریکا مجھے بے دخل نہیں کرے گا! فتح اللہ گولن کا امریکا پر اظہاراعتماد

ترکی: شادی کی تقریب میں دھماکے سے 51 افراد جاں بحق، 94 زخمی وجود - اتوار 21 اگست 2016

ترکی میں ناکام فوجی بغاوت سے پہلے دہشت گردی کی منظم وارداتوں کا جو سلسلہ دیکھا گیا تھا وہ بغاوت کے بعد پھر شروع کر دیا گیا ہے۔ اب دہشت گردی کی وارداتوں میں کچھ نئے رجحانات بھی دیکھنے میں آرہے ہیں۔ جس کا تازہ اظہار شام کی سرحد کے قریب ترکی کے شہر غازی عنتب میں ایک شادی کی تقریب میں ہونے والے دھماکے سے ہوا ۔ جس میں اب تک کی اطلاعات کے مطابق 51 افراد جاں بحق اور 94 زخمی ہو گئے ہیں۔ غازی عنتب کے گورنر علی یرلی کایا کے مطابق ہفتے کی شب شاہین بے ضلع میں ہونے والی ایک شادی کی ای...

ترکی: شادی کی تقریب میں دھماکے سے 51 افراد جاں بحق، 94 زخمی

ترکی امریکی ڈالر سے پیچھا چھڑانے اور نیٹو سے نکل جانے پر غور کرنے لگا وجود - هفته 13 اگست 2016

انقرہ اور مغرب کے درمیان تلخ کلامی کے بعد ترکی نے امریکی ڈالرز سے پیچھا چھڑانے اور نیٹو سے نکل جانے کے منصوبوں پر غور شروع کردیا ہے۔ نیٹو کی جانب سے ترکی کو یاددہانی کے صرف ایک روز بعد کہ وہ اب بھی نیٹو کا رکن ہے، ترک وزیر خارجہ مولود چاووش اوغلو نے کہا ہے کہ ملک دفاعی صنعت کے تعاون کے لیے نیٹو سے باہر دیگر آپشنز پر بھی غور کر سکتا ہے، البتہ اس کا پہلا انتخاب ہمیشہ نیٹو اتحادیوں کے ساتھ تعاون ہوگا۔ یہ بیان و فوری تردید اسی روز سامنے آئی ہے جب ترکی نے کہا کہ وہ شام میں...

ترکی امریکی ڈالر سے پیچھا چھڑانے اور نیٹو سے نکل جانے پر غور کرنے لگا

مغربی ممالک اپنے کام سے کام رکھیں، طیب اردوغان وجود - هفته 30 جولائی 2016

ترک صدر رجب طیب اردوغان نے ملک میں ناکام بغاوت کے بعد مغربی رہنماؤں کی جانب سے انقرہ کے ساتھ اظہار یکجہتی نہ کرنے پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ملک جنہیں ترکی میں جمہوریت کے بجائے باغیوں کی فکر کھائے جا رہی ہے، ہر گز ترکی کے دوست نہیں ہو سکتے۔ انقرہ کے صدارتی محل میں گفتگو کرتے ہوئے اردوغان نے کہا کہ 15 جولائی کو بغاوت کی کوشش پر ترک حکومت کے ردعمل کو تنقید کا نشانہ بنانے والے رہنماؤں کو "اپنے کام سے کام رکھنا چاہیے"۔ انہوں نے کہا کہ "جب پانچ سے دس لوگ کسی دہشت...

مغربی ممالک اپنے کام سے کام رکھیں، طیب اردوغان

فتح اللہ گولن سی آئی اے کے ایجنٹ ہیں: روس وجود - جمعه 29 جولائی 2016

ترکی میں ناکام بغاوت کے منصوبہ ساز فتح اللہ گولن امریکا کی سینٹرل انٹیلی جینس ایجنسی (سی آئی اے) کے لیے کام کرچکے ہیں، یہ بات روس کی دوما کےنمائندے اور اس کی تعلیمی کونسل کے سربراہ ویاکیسلاف نکونوف نے بتائی ہے۔ سرکاری ٹیلی وژن پر جاری ہونے والی ایک تقریر میں نکونوف نے کہا کہ "گولن سی آئی اے کے لیے کام کرتے ہیں، اس لیے امریکا کبھی انہیں ترکی کے سپرد نہیں کرے گا۔ نکونوف نے کہا کہ "سی آئی اے کے سابق کارکن جارج فیڈاس اور گراہم فلر نے انقرہ کے لیے ترکی کے سابق سفیر مورٹن ابرامو...

فتح اللہ گولن سی آئی اے کے ایجنٹ ہیں: روس

ترکی بغاوت، 10 ہزار افراد زیر حراست وجود - هفته 23 جولائی 2016

ترکی میں برسر اقتدار عدالت و ترقی پارٹی (اے کے پی) کے نائب چیئرمین یاسین آقتائی نے کہا ہے کہ بغاوت کی کوشش نے ملک کے عوام کو متحد کردیا ہے۔ انقرہ میں واقع پارٹی کے صدر دفاتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آقتائی نے کہا کہ ہمارے عوام نے ٹینکوں اور گولیوں کے سامنے خودکو ڈھال بنایا۔ لیکن بہت سارے لوگ شہید ہوئے۔ اب تک یہ تعداد 246 ہے جن میں 62 پولیس افسران اور پانچ فوجی بھی شامل ہے۔ باقی عام شہری تھے۔" آقتائی نے بتایا کہ 2185 افراد زخمی ہوئے؛ 461 ہسپتالوں میں زیر علاج...

ترکی بغاوت، 10 ہزار افراد زیر حراست

ترکی میں ہنگامی حالت کا اعلان کردیا گیا وجود - جمعرات 21 جولائی 2016

ترکی میں ناکام فوجی بغاوت کے بعد صدر رجب طیب اردوغان نے تین مہینے کے لیے ہنگامی حالت کے نفاذ کا اعلان کردیا ہے۔ جس کی وجہ ذمہ دار افراد کے خلاف فوری و موثر کارروائی کرنا ہے۔ یہ اعلان قومی سلامتی کونسل کے گھنٹوں جاری رہنے والے طویل اجلاس کے بعد براہ راست قومی ٹیلی وژن پر کیا گیا۔ طیب اردوغان نے کہا کہ ہنگامی حالت نافذ کرنے کا مقصد ملک میں جمہوریت، قانون کی حکمرانی اور شہریوں کے حقوق و آزادی کو درپیش خطرات کو کم کرنے کے لیے فوری اور موثر قدم اٹھانا ہے۔ اردوغان نے کہا کہ...

ترکی میں ہنگامی حالت کا اعلان کردیا گیا

ناکام بغاوت کے پیچھے امریکا کا ہاتھ ہے، ترکی وزیر وجود - پیر 18 جولائی 2016

جب ترکی کی جانب سے اپنی فضائی حدود بند کردی گئیں اور انجرلک کی بڑی ایئربیس سے امریکا کے تمام مشن رک گئے کہ جہاں پر امریکا کے 50 ایٹم بم بھی موجود ہیں، ایسا لگ رہا تھا کہ صدر طیب اردوغان کے سب سے بڑے دشمن فتح اللہ گولن کی حوالگی کے لیے اس ایئربیس کو "یرغمال" بنالے گا اور اسی روز صدر طیب اردوغان نے امریکا سے واقعی مطالبہ کر بھی دیا کہ وہ فتح اللہ گولن کو ترکی کے حوالے کرے جو اس وقت امریکی ریاست پنسلوینیا میں خود ساختہ جلاوطنی اختیار کیے ہوئے ہیں۔ عین اسی وقت ترک وزیر محنت سلیما...

ناکام بغاوت کے پیچھے امریکا کا ہاتھ ہے، ترکی وزیر

باغی ترک جرنیل اسرائیل میں اہم عہدے پر فائز تھے وجود - پیر 18 جولائی 2016

ترکی میں افواج کے چھ کمانڈروں کو ناکام بغاوت سے تعلق کی بنیاد پر گرفتار کرلیا گیا ہے جس میں جنرل آکن اوزترک بھی شامل ہیں کہ جو 90ء کی دہائی میں اسرائیل کے لیے ترکی کے ملٹری اتاشی تھے۔ اوزترک، جنہوں نے بعد میں ترک فضائیہ کے کمانڈر کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دیں، 1998ء سے 2000ء تک تل ابیب میں موجود ترک سفارت خانے میں کام کیا۔ 64 سالہ فوجی شخصیت نے گزشتہ سال فضائیہ کے عہدے سے استعفیٰ دیا تھا لیکن ترکی کی سپریم ملٹری کونسل میں بدستور کام کر رہے تھے۔ اب ترک حکومت بالخصوص ...

باغی ترک جرنیل اسرائیل میں اہم عہدے پر فائز تھے

ترکی میں فوج کے باغی ٹولے کی بغاوت مکمل ناکام! وجود - هفته 16 جولائی 2016

ترکی میں فوج کے باغی گروپ کی جانب سے رجب طیب اردوغان کی منتخب حکومت کا تختہ اُلٹنے کی کوشش مکمل طور پر ناکام بنا دی گئی ہے۔ صدر رجب طیب اردوغان کی اپیل پر عوام فوج کے باغی ٹولے کے خلاف مزاحمت کرنے کے لیے بڑی تعداد میں سڑکوں پر امڈ آئے۔ اس دوران میں ترک صدر رجب طیب اردوغان استنبول سے فوراً انقرہ پہنچے۔ اور صدارتی محل میں ایک پریس بریفنگ کا اہتمام کیا ۔ جس میں اُنہوں نے کہا کہ بغاوت میں ملوث فوجیوں کو اس کی بھاری قیمت چکانی پڑے گی۔ ترکی کے فوجی سربراہ جنرل ہلوسی آکار کو بغ...

ترکی میں فوج کے باغی ٹولے کی بغاوت مکمل ناکام!

ترکی میں فوجی بغاوت کے خلاف عوام کی مزاحمت کامیاب! وجود - هفته 16 جولائی 2016

ترکی میں فوج کے ایک ٹولے کی جانب سے اقتدارپر قبضے کی کوشش کے فوراً بعد ترکی کے مقبول ترین صدر رجب طیب اردوان نے فوراً ہی ایک موبائل فون کے ذریعے ٹیلی ویژن پر خطاب کرتے ہوئے عوام سے اس بغاوت کو ناکام بنانے کی اپیل کی اور اُنہیں گھروں سے باہر سڑکوں پرآنے کا کہا۔ ترک صدر نے اس اپیل کے ساتھ ہی یہ اعلان کیا کہ وہ استنبول سے دارالحکومت انقرہ کے لیے روانہ ہو رہے ہیں۔ ترک صدر کے اس اعلان کے فوراً ہی بعد عوام بڑی تعداد میں تقسیم اسکوائر پر جمع ہونا شروع ہوگئے۔ ایک طرف عوام بلاخوف...

ترکی میں فوجی بغاوت کے خلاف عوام کی مزاحمت کامیاب!

فوج کے باغی ٹولے کو متاثر کرنے والے فتح اللہ گولن کون ہیں؟ وجود - هفته 16 جولائی 2016

ترکی میں فوج کے ایک ٹولے کی ناکام بغاوت کے بعد یہ بات منکشف ہو رہی ہے کہ ترکی کے منتخب جمہوری نظام کو اُتھل پتھل کرنے والے فوجی دراصل فتح اللہ گولن سے متاثر تھے۔ فتح اللہ گولن ایک ترک مبلغ اور گولن تحریک کے بانی ہیں۔ جو ترکی میں تحریک خذمت (خدمت) کے نام سے معروف جماعت ہے۔ فتح اللہ گولن ترکی کی ایک انتہائی متنازع شخصیت کا روپ دھار رہے ہیں۔ وہ 1999 سے امریکی ریاست پنسلوینیا کے ایک شہر سیلرزبرگ میں خود ساختہ جلاوطنی کی زندگی گزار رہے ہیں۔ فتح اللہ گولن 27 اپریل 1941 میں اناطو...

فوج کے باغی ٹولے کو متاثر کرنے والے فتح اللہ گولن کون ہیں؟

ترکی میں فوجی بغاوتوں کا مستقبل: کب کیا ہوا؟ وجود - هفته 16 جولائی 2016

ترک آئین میں فوج کو ملکی سلامتی کا محافظ قرار دینے کے باعث ملک میں فوجی بغاوتوں کے محرکات جنم لیتے رہے۔ ترک فوج نے مختلف مواقع پر بغاوت کر کے جمہوریت کو تہس نہس کیا۔ گزشتہ دس برسوں میں ترکی کی اردوان حکومت کی معاشی کامیابیوں کے باعث مسلح افواج کا کردار رفتہ رفتہ پس منظر میں چلا گیا۔ مگر مسلح افواج کو ترکی میں روایتی طور پرایک مضبوط سیاسی قوت اور اتاترک کی جمہوریہ کے محافظ کے طور پر پیش کیا جاتا رہا۔ اس تناظر میں فوج نے اپنے تئیں خود کانصب العین جمہوریت، سیکولرازم اور اتاترک ک...

ترکی میں فوجی بغاوتوں کا مستقبل: کب کیا ہوا؟

ترکی میں ایک فوجی گروپ کی طرف سے اقتدار پر قبضہ ! مارشل لاء کے نفاذ اور کرفیو کااعلان وجود - هفته 16 جولائی 2016

ترکی میں فوج کے ایک گروپ نےاقتدار پر قبضے کی کوشش کی ہےاور ابتدائی اطلاعات کے مطابق ایوان صدر کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ جبکہ اپنے ہی چیف آف جنرل اسٹاف جنرل حلوثی اکرکو یرغمال بنا لیا ہے۔ مزید براں سرکاری ٹیلی ویژن پر قبضہ کرکے اُس کی نشریات کو کچھ دیر کے لیے بند کردیا گیا تھا۔ بعد ازاں اُس کی نشریات کو بحال کردیا گیا۔ اب سرکاری نشریات کو فوج کے باغی گروہ کی جانب سے کنٹرول کیا جارہا ہے۔ نجی چینلز کی نشریات تاحال جاری ہے۔ البتہ ترکی کے تمام ہوائی اڈے بند اور پروازیں منسوخ کردی گئ...

ترکی میں ایک فوجی گروپ کی طرف سے اقتدار پر قبضہ ! مارشل لاء کے نفاذ اور کرفیو کااعلان

ترکی: استنبول کے اتا ترک ہوائی اڈے پر خود کش حملہ ، اٹھائیس سے زائد افراد ہلاک ! وجود - بدھ 29 جون 2016

ترکی کے شہر استنبول کے اتاترک ہوائی اڈے پر ہونے والے خودکش بم دھماکوں اور فائرنگ کے نتیجے میں 28 افراد جاں بحق جبکہ ساٹھ سے زائد زخمی ہوگیے ہیں جن میں متعدد کی حالت نازک ہے۔ زخمیوں کو قریبی ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق دھماکے بین الاقوامی ٹرمینل کے داخلی دروازے کے سامنے پارکنگ ایریا کی فٹ پاتھ پر ہوئے۔ استنبول کے اتاترک بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ایشیا اور یورپ سے آنے والی پروازوں کے باعث ہمیشہ ہجوم رہتا ہے۔یہ یورپ کا تیسرا مصروف ترین ہوائی اڈہ ہے۔ صر...

ترکی: استنبول کے اتا ترک ہوائی اڈے پر خود کش حملہ ، اٹھائیس سے زائد افراد ہلاک !

طیب اردوغان نے معافی مانگ لی: روس کا دعویٰ وجود - منگل 28 جون 2016

روس نے کہا ہے کہ ترک صدر رجب طیب اردوغان نے اپنے روسی ہم منصب ولادیمر پوتن سے رابطہ کرکے اس واقعے پر معذرت طلب کرلی ہے جس میں ترک افواج نے شامی سرحد پر ایک روسی طیارہ مار گرایا تھا۔ اس حرکت کے بعد دونوں ملکوں کے تعلقات سخت کشیدہ ہوگئے تھے۔ واقعے کے بعد روس کے صدر ولادیمر پوتن نے بارہا ترکی سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ اس پر معافی مانگے اور اب یہ تازہ ترین قدم انقرہ کے ساتھ تعلقات کے خاتمے میں مددگار ہو سکتا ہے۔ کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف نے صحافیوں کو بتایا کہ "ترک سربر...

طیب اردوغان نے معافی مانگ لی: روس کا دعویٰ

پوپ کا بیان "صلیبی ذہنیت" کو ظاہر کرتا ہے: ترکی کا سخت ردعمل وجود - اتوار 26 جون 2016

ترکی نے کہا ہے کہ یہ بدقسمتی ہے کہ پوپ نے 1915ء میں سلطنت عثمانیہ کے ہاتھوں آرمینیائی باشندوں کے مبینہ قتل عام کو "نسل کشی" قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ یہ پاپائیت کی "صلیبی ذہنیت" کو ظاہر کرتا ہے۔ جمعے کو آرمینیا کے دارالحکومت یریوان روانگی سے قبل پوپ فرانسس نے اپنے بیان میں اس قتل عام کے بارے میں "نسل کشی" کے الفاظ استعمال کیے تھے جو پہلی جنگ عظیم کے دوران عثمانی افواج نے آرمینیا کے باشندوں کا کیا تھا۔ ترک نائب وزیر اعظم نور الدین چانکلی نے کہا ہے کہ پوپ کا بیان انتہائ...

پوپ کا بیان

یورپ دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہ بن چکا ہے: طیب اردوغان وجود - منگل 10 مئی 2016

ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے کہا ہے کہ یورپ دہشت گرد گروہوں کے سیاسی ونگز کی محفوظ جنت بن چکا ہے، اور انسداد دہشت گردی کے قوانین تبدیل کرنے پر یورپ کی جانب سے ترکی کو لیکچر دینا "مذاق" کے مترادف ہے۔ یورپی یونین نے گزشتہ ہفتے کہا تھا کہ تارکین وطن کا یورپ میں داخلہ روکنے میں مدد کرنے پر ترکوں کو بغیر ویزے کے سفر کی اجازت دی جائے گی لیکن ترکی کو اپنے انسداد دہشت گردی کے قوانین تبدیل کرنا ہوں گے تاکہ انہیں یورپی یونین کے معیار کے مطابق لایا جائے۔ انقرہ میں کیے گئے خطاب...

یورپ دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہ بن چکا ہے: طیب اردوغان

ترکی میں خودکش بم دھماکا، 34 افراد ہلاک، 125 زخمی وجود - پیر 14 مارچ 2016

ترکی کا دارالحکومت انقرہ ایک مرتبہ پھر دہشت گردوں کے حملے کی زد میں آ گیا ہے، جس میں ایک کار بم کے ذریعے کیے گئے خودکش حملے میں 34 افراد ہلاک اور 125 زخمی ہوئے ہیں۔ حکام کے مطابق ایک خاتون سمیت دو افراد اس کار میں سوار تھے جو ایک مصروف عوامی علاقے میں دھماکے سے پھٹ گئی اور بڑے پیمانے پر تباہی پھیلائی۔ گو کہ ابھی تک واقعے کی ذمہ داری کسی نے قبول نہیں کی لیکن خدشہ یہی ہے کہ یہ حملہ کرد باغیوں نے کیا ہے۔ یہ واقعہ انقرہ کے چوک قزل آئی کے قریب اتاترک بلواری کے بس اسٹاپ پر ہوا ...

ترکی میں خودکش بم دھماکا، 34 افراد ہلاک، 125 زخمی

ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں فوجی قافلے کے قریب دھماکا ، 28 افراد ہلاک وجود - جمعرات 18 فروری 2016

ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں ایک کار بم دھماکے کے نتیجے میں کم از کم 28 افراد ہلاک اور 61 زخمی ہوگئے۔تفصیلات کے مطابق دھماکا خیز مواد سے بھری ایک گاڑی اس وقت دھماکے سے پھٹ گئی جب ایک فوجی قافلہ اس کے قریب سے گزررہا تھا۔ یہ دھماکا پارلیمنٹ اور فوجی ہیڈکوارٹر کے قریبی علاقے میں ہوا۔ انقرہ کے گورنر مہمت کے مطابق حملے کا ہدف فوجی قافلہ ہی تھا۔ دھماکے کی آواز شہر بھر میں سنی گئی جس سے لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ترکی کی حکمران جماعت جسٹس اینڈ ڈیویلپمنٹ پارٹی کے ترجمان عمر نے حمل...

ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں فوجی قافلے کے قریب دھماکا ، 28 افراد ہلاک

طیب اردوغان اور نوم چومسکی میں ٹھن گئی وجود - هفته 16 جنوری 2016

امریکا میں بائیں بازو کے اہم دانشور نوم چومسکی نے ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان پر منافقت کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ وہ دہشت گردوں سے ہمدردی رکھتے ہیں۔ منگل کو استنبول کے مرکزی سیاحتی علاقے میں بم حملے کے بعد طیب اردوغان نے نوم چومسکی اور ان تمام "نام نہاد دانشوروں" پر سخت تنقید کی تھی جنہوں نے ایک کھلے خط پر دستخط کیے تھے، جس میں ترکی سے جنوب مشرق میں کردوں کا "باضابطہ قتل عام" روکنے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ اردوغان نے چومسکی کو علاقے کا دورہ کرنے کے لیے بھی مدعو کیا، جس...

طیب اردوغان اور نوم چومسکی میں ٹھن گئی

استنبول میں دھماکا، 9 جرمن سیاحوں سمیت دس افراد ہلاک، پندرہ زخمی وجود - منگل 12 جنوری 2016

ترکی کے شہر استنبول کے مرکزی سیاحتی مقام سلطان احمد اسکوائر پر ایک زبردست دھماکا ہوا ہے۔ جس کے نتیجے میں آخری اطلاعات کے مطابق 9 جرمن سیاحوں سمیت 10 افراد ہلاک اور 15 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔ عینی شاہدین کے مطابق یہ دھماکا اس قدر زوردار اور طاقتور تھا کہ اس کی آواز کئی کلومیٹر دور تک سنی گئی اور کئی سیاحوں پر سکتہ طاری ہوگیا۔ دھماکے کے نتیجے میں سڑک پر ایک میٹر گہرا گڑھا پڑ گیا۔ ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے کہا ہے کہ استنبول کے وسط میں واقع تاریخی چوک میں ایک شامی خودکش بمبار ...

استنبول میں دھماکا، 9 جرمن سیاحوں سمیت دس افراد ہلاک، پندرہ زخمی

ترک صدر کا جوابی وار، داعش کے ساتھ تیل کی تجارت میں روس ملوث ہے وجود - جمعه 04 دسمبر 2015

ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے کہا ہے کہ ان کے پاس مکمل ثبوت موجود ہیں کہ داعش کے ساتھ تیل کی غیر قانونی تجارت میں درحقیقت روس ملوث ہے۔ انہوں نے یہ جوابی وار اس وقت کیا ہے جب ایک روز قبل ہی رو‎س نے الزام لگایا تھا کہ ترکی داعش کے ساتھ تیل کی تجارت کر رہا ہے بلکہ طیب اردوغان کا خاندان اس سے ذاتی فائدہ اٹھا رہا ہے۔ اس الزام کو غیر اخلاقی قرار دیتے ہوئے ترک صدر نے کہا کہ وہ دنیا کے سامنے ان ثبوتوں کو لے کر آئیں گے۔ طیب اردوغان نے کہا کہ "حقیقت یہ ہے کہ روس کے اس الزام کو خو...

ترک صدر کا جوابی وار، داعش کے ساتھ تیل کی تجارت میں روس ملوث ہے

ترکی نے روس کا لڑاکا طیارہ مار گرایا وجود - منگل 24 نومبر 2015

شام میں مقامی و عالمی طاقتوں کے درمیان جاری جنگ ایک نیا موڑ لے لیا ہے کیونکہ ترکی نے بارہا خبردار کیے جانے کے بعد بالآخر انتہائی قدم اٹھاتے ہوئے ایک روسی لڑاکا طیارے کو مار گرایا ہے۔ ترک ذرائع ابلاغ کے مطابق روس کا ایک ایس یو-24 لڑاکا طیارہ صوبہ حطائے کے مقام پر ترکی کی سرحدی حدود میں گھس آیا۔ فوجی ذرائع کے مطابق صرف 5 منٹ میں 10 مرتبہ اس جہاز کو آگاہ کیا گیا کہ وہ سرحدی حدود کی خلاف ورزی کر رہا ہے لیکن اس کے باوجود باز نہ آنے پر ایک ترک ایف-16 طیارے نے جہاز کو مار گرایا۔...

ترکی نے روس کا لڑاکا طیارہ مار گرایا

ترکی میں عدالت پارٹی کی شاندار کامیابی وجود - پیر 02 نومبر 2015

یکم نومبر، ترکی کی تاریخ کا وہ دن ہے جب 1923ء میں مصطفیٰ کمال اتاترک نے سلطنت عثمانیہ کے 623 سالہ اقتدار کا خاتمہ کردیا تھا۔ آخری عثمانی سلطان وحید الدین ششم کو ناپسندیدہ شخصیت قرار دے کر جلاوطن کردیا گیا۔ لیکن اب یکم نومبر اس مایوس کن دن کے طور پر نہیں بلکہ مستقبل کے لیے ایک امید کی ایک نئی کرن کے طور پر ابھرا ہے۔ ترکی میں عثمانیوں کی وارث عدالت و ترقی پارٹی نے انتخابات میں زبردست کامیابی حاصل کرلی ہے اور تن تنہا حکومت بنانے کی پوزیشن میں آ گئی ہے۔ جون 2015ء ہونے والے ان...

ترکی میں عدالت پارٹی کی شاندار کامیابی

ترکی میں انتخابات: پس منظر، پیش منظر وجود - اتوار 01 نومبر 2015

ترکی میں آج انتخابات کا دن ہے۔ جون میں ہونے والے انتخابات کے بعد کسی بھی سیاسی جماعت کے غالب اکثریت حاصل نہ کرنے اور اتحادی حکومت کی تشکیل میں ناکامی کے چھ ماہ بعد یہ ترکی کے اہم ترین انتخابات ہیں۔ پس منظر جون میں صدر رجب طیب ایردوغان کی عدالت و ترقی پارٹی 2002ء کے بعد پہلی بار غالب اکثریت حاصل کرنے میں ناکام رہی تھی اور مخالف جماعتوں کے ساتھ اتحاد کی کوششیں بھی کامیاب نہ ہو سکی تھیں۔ موجودہ حالات جون سے اب تک صرف چھ ماہ میں ترکی میں بہت کچھ تبدیل ہوچکا ہے۔ اس عرصے میں تر...

ترکی میں انتخابات: پس منظر، پیش منظر

ترکی میں انتخابات کی مختصر تاریخ وجود - اتوار 01 نومبر 2015

ترکی چھ ماہ میں آج اپنے دوسرے اور اہم ترین انتخابات کے مرحلے سے گزر ے گا۔ ایک ایسے موقع پر جب ملک کئی بحرانوں کا سامنا کررہا ہے، یہ انتخابات ترکی کے مستقبل کا تعین کریں گے۔ملک میں انتخابات کی تاریخ بہت پرانی ہے بلکہ تمام مسلم اکثریتی ممالک میں سب سے پہلے جدید انتخابات ترکی ہی میں ہوئے۔ موجودہ ترکی میں پہلے جدید انتخابات 1840ء میں اس وقت ہوئے جب یہ سلطنت عثمانیہ کا حصہ تھے۔ گوکہ اس کی صورت جدید دور سے کچھ مختلف تھی کیونکہ اس میں مقامی اراکین پارلیمان کو دیہی علاقوں میں مقر...

ترکی میں انتخابات کی مختصر تاریخ

انتخابات سے قبل ترک لیرا آسمان پر وجود - اتوار 01 نومبر 2015

ترکی میں انتخابات سے محض ایک روز قبل کرنسی 'لیرا' چار سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے جس کے بارے میں ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ آئندہ حکومت کے قیام پر اعتماد کو ظاہر کرتا ہے۔ آج یعنی اتوار کو ہونے والے انتخابات ایک مرتبہ پھر غیر فیصلہ کن ہی کیوں نہ ہو، ایک اتحادی قومی کے قیام کو دیکھتے ہوئے معیشت میں تیزی نظر آ رہی ہے۔ انتخابات سے قبل آخری دن کرنسی نے ایک اور جست لگائی اور یوں اکتوبر کے مہینے میں کل 3.8 فیصد کا اضافہ پایا۔ ڈالر کے مقابلے میں لیرا0.7 فیصد مزيد بڑھتے ہوئے ...

انتخابات سے قبل  ترک لیرا آسمان پر

انتخابات سے تین ہفتے قبل ترکی میں دھماکے، 86 افراد ہلاک وجود - هفته 10 اکتوبر 2015

ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں دو بم دھماکوں کے نتیجے میں تازہ اطلاعات کے مطابق 86 افراد ہلاک جبکہ 186 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ مرکزی ریلوے اسٹیشن کے قریب یکے بعد دیگرے یہ دھماکے ایک ایسے وقت میں ہوئے جب حکومت مخالف بائیں بازو کی تنظیمیں اور کرد نواز گروہوں کی جانب سے ایک امن ریلی کا انعقاد کیا گیا تھا ۔ جس کا مقصد کرد علیحدگی پسند گروہ "پی کے کے " کے خلاف حکومتی کارروائیوں کے خاتمے کا مطالبہ کرنا تھا۔ امن اور جمہوریت کے نام پر نکالی گئی اس ریلی میں کرد نواز جماعت "ایچ ڈی پی " بھی...

انتخابات سے تین ہفتے قبل ترکی میں دھماکے، 86 افراد ہلاک